برطانیہ، آسٹریلیا اور امارات میں پاکستانیوں کا ڈنکا، وطن کیلئے اعزاز

برطانیہ، آسٹریلیا اور امارات میں پاکستانیوں کا ڈنکا، وطن کیلئے اعزاز

Spread the love

لندن، برسبین، دبئی (جے ٹی این آن لائن نیوز پاکستان نیوز) پاکستانیوں کا ڈنکا

خیبر پختونخوا کے ضلع نوشہرہ کے علاقے صالح خانہ سے تعلق رکھنے والے

برطانیہ میں مقیم شہری راج ولی خٹک نے کمیونٹی کی خدمات کے صلے میں

پاکستان اور پاکستانیوں کا نام روشن کردیا۔ ملکہ برطانیہ نے پاکستانی نژاد

برطانوی شہری راج ولی خٹک کو کمیونٹی خدمات کے صلے میں برٹش ایمپائر

میڈل کے لئے نامزد کردیا۔ راج ولی خٹک کو ملکہ برطانیہ سرکاری تقریب میں

اس ایوارڈ سے نوازیں گی۔ برٹش ایمپائر میڈل برطانوی اور دولت مشترکہ کا

ایوارڈ ہے جو برطانیہ کی ملکہ، ولی عہد کے ذریعے قابل، لائق سول یا فوجی

خدمات کے اعتراف میں ہر سال دیا جایا تا ہے۔ یہ اعزاز پانا پاکستان اور خاص کر

صوبہ خیبر پختونخوا کے لئے ایک فخر کا لمحہ ہے۔

=یہ بھی پڑھیں= دیار غیر میں ایک اور پاکستانی نوجوان کا انوکھا کارنامہ

تفصیلات کے مطابق پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع نوشہرہ کے

علاقے صالح خانہ سے تعلق رکھنے والے پاکستانی نژاد برطانوی شہری راج ولی

خٹک گذشتہ کئی سالوں سے برطانیہ کے شہر السبری (Aylasbury) میں رہائش

پذیر ہیں، جہاں وہ مقامی سیاست اور کمیونٹی کی خدمت میں سرگرم کردار ادا کر

رہے ہے۔ راج ولی خٹک کا تعلق خیبر پختونخو اکے علاقے چراٹ صالح خانہ سے

ہے۔ خٹک نامہ کے 80 فیصد سے زائد افراد برطانیہ اور دیگر یورپی ممالک میں

تجارت، پرائیویٹ ملازمتوں، سیاست مختلف شعبہ ہائے زندگی میں اپنا فعال کردار

ادا کر کے زرمبادلہ اپنے ملک بھجواتے ہیں اور ملکی ترقی میں اپنا بہترین کردار

ادا کر رہے ہیں۔ راج ولی خٹک کا تعلق بھی انہی محنت کش پاکستانیوں سے ہے

جنہوں نے 1975ء میں برطانیہ جا کر کاروبار اور ملازمت سمیت کمیونٹی کی

خدمت شروع کی۔

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

1995ء میں بیس سالہ خدمات کے بعد ان کا انتخاب بطور لوکل کونسلر ہوا۔ 2001ء

سے 2005ء تک وہ اس علاقے کے مئیر بھی رہ چکے ہیں۔ جبکہ اس کے بعد وہ

پروفشنل رکن بھی منتخب ہوئے۔ وہ ابھی بھی بکنگھم شہر کے کونسلر کے طور پر

کام کر رہے ہیں۔ راج ولی خٹک کے بکنگھم پیلس سے بھی خصوصی مراسم ہیں۔

ان کی دعوت پر ملکہ برطانیہ ان کی کمیونٹی کا دورہ بھی کرچکی ہیں۔ راج ولی

خٹک چیریٹی کے کاموں میں بھی بھرپور حصہ لیتے ہیں اور معذور خصوصی

افراد کے لئے ایک ادارہ چلا رہے، اس حوالے سے بھی وہ متعدد اعزازات حاصل

کر چکے ہیں۔ برٹش ایمپائر میڈل کے لئے نامزد ہونے والے راج ولی خٹک نے

اعزاز پر اللہ تعالی کا شکر ادا کرتے ہوئے کہا کہ وہ دنیا بھر میں پاکستانی کمیونٹی

کے لئے اپنی خدمات جاری رکھیں گے۔ پاکستان اور پاکستانیوں کا نام روشن کرنے

کے لئے اپنی تمام تر توانائیاں استعمال کریں گے۔

=-.-= آسٹریلیا میں کمیونٹی کی غیر معمولی خدمت پر 2 پاکستانیوں کیلئے ایوارڈ

آسٹریلیا میں کمیونٹی کی غیر معمولی خدمت کے اعتراف میں 2 پاکستانیوں کو

ایوارڈز سے نواز دیا گیا۔ میڈیارپورٹس مطابق آسٹریلیا کی ریاست کوئنزلینڈ میں ہر

سال ایک تقریب منعقد کی جاتی ہے جس میں ایسے لوگوں کو ایوارڈ دئیے جاتے

ہیں جنہوں نے کمیونٹی کی غیر معمولی خدمت کی ہوتی ہے ، اسی سلسلے میں

گزشتہ روز کوئنزلینڈ ڈے کے موقع پر ہونیوالی اس بڑی تقریب میں دنیا کے دیگر

ممالک کیساتھ ساتھ 2 پاکستانیوں کو بھی ایوارڈز سے نوازا گیا ، ان میں پاکستان

آسٹریلین کلچرل ایسوسی ایشن کے پریذیڈنٹ سید اصغر نقوی، سابقہ پاکا جنرل

سیکرٹری اور ڈائریکٹر پنیشیا ہیلتھ محمد عامر چوہدری شامل ہیں، جنہیں ٹرئیر اور

منسٹر فار انویسٹمنٹ کیمرون ڈک نے ایوارڈز دئیے۔

=-.-= عامر اور ریاض علی گریٹ والنٹئرز

اس موقع پر ایم سی نے کہا کہ عامر ایک گریٹ والنٹئر ہیں اور لیکیمیا فاﺅنڈیشن

اور ریڈ کراس بلڈ ڈونیشن کو سپورٹ کرتے ہیں اور پاکستانی کمیونٹی کے علاوہ

ڈائریکٹر آئی ایس سی کیو ریاض علی کو بھی ایوارڈ ملا اور ان کی سالانہ ریڈ

کراس بلڈ ڈونیشن ڈرائیو کے متعلق خدمات کو زبردست خراج تحسین پیش کیا گیا۔

تقریب میں سید اصغر نقوی کی پاکستانی کمیونٹی اور دیگر کمیونٹیز کو آپس میں

جوڑنے، مختلف کمیونٹی ایوینٹس کروانے اور کمیونٹی کے لئے فلاح و بہبود کے

دیگر کام کرنے پر تعریف کی گئی، اس موقع پر اصغر نقوی کا کہنا تھا کہ یہ

ایوارڈ میں پاکا کی ایگزیکٹو کمیٹی اور والنٹیرز کیساتھ ساتھ آسٹریلیا میں موجود

تمام پاکستانیوں کے نام کرتا ہوں اور پاکستانی کمیونٹی کی مدد سے پاکستان کا نام

روشن کرنے اور کمیونٹی کی خدمت کرنے میں ہمیشہ پیش پیش رہیں گے۔

=-.-= دبئی میں دو پاکستانیوں کو 50، 50 ہزار درہم کا بونس

متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کے شہر دبئی میں مقیم 2 پاکستانیوں کو ان کے

آجر نے 50، 50 ہزار درہم بطور بونس دینے کا اعلان کر دیا۔ عرب میڈیا کی

رپورٹ کے مطابق یہ دونوں پاکستانی دبئی میں بطور ڈلیوری بوائے کام کر رہے

ہیں اوردونوں پاکستانی گزشتہ 5 سال سے کمپنی کیساتھ منسلک ہیں اور تقریباً 2

ہزار آرڈر کامیابی کیساتھ ڈلیور کر چکے ہیں جبکہ انھیں دیا جانیوالا بونس ان کی

ان ہی خدمات کا اعتراف ہے۔ ان میں سے ایک 35 سالہ ڈلیوری مین محمد خرم نے

عرب نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جب انھیں اپنے بونس سے متعلق کال

موصول ہوئی تو اس وقت وہ ڈلیوری پر تھے اور انھیں لگا کہ کوئی ان کیساتھ

مذاق کر رہا ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اب ہم اپنے خوابوں کو حقیقت کا روپ

دے سکیں گے۔

پاکستانیوں کا ڈنکا ، پاکستانیوں کا ڈنکا ، پاکستانیوں کا ڈنکا

Leave a Reply