دو سال اور پانچواں آئی جی بھی تبدیل ،انعام غنی نئے انسپکٹر جنرل پولیس تعینات

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

پانچواں آئی جی تبدیل

لاہور ( جے ٹی این آن لائن نیوز)انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب شعیب دستگیر کو

تبدیل کر دیا گیا ان کی جگہ انعام غنی کو پنجاب کا نیا انسپکٹر جنرل آف پولیس

تعینات کر دیا گیا ہے۔وزیراعظم عمران خان نے آئی جی پنجاب شعیب دستگیر کی

تبدیلی کی منظوری دیتے ہوئے صوبے کے نئے انسپکٹر جنرل آف پولیس کیلئے

نام طلب کئے تھے۔اسٹیبلشمنٹ ڈویڑن نے انعام غنی کی بطور انسپکٹر جنرل آف

پولیس پنجاب تعیناتی کا نوٹیفیکیشن جاری کر دیا ہے۔ خیال رہے کہ انعام غنی گریڈ

اکیس کے آفیسر ہیں جو جنوبی پنجاب میں ایڈیشنل آئی جی پنجاب تعینات رہ چکے

ہیں۔ تحریک انصاف کی پنجاب اور مرکز میں حکومت کے دو سالہ دور میں پنجاب

کے پانچ آئی جیز کو تبدیل کیا جا چکا ہے دوسری طرف ایڈیشنل آئی جی پنجاب

طارق مسعود یاسین نے نئے آئی جی پنجاب کے ماتحت کام کرنے سے انکار کر

دیا۔منگل کو طارق مسعود یاسین نے آئی جی پنجاب کے سیکرٹریٹ کو خط ارسال

کر دیا۔طارق مسعود یاسین نے خط میں کہاکہ نئے آئی جی انعام غنی مجھ سے

جونئیر ہیں،جونئیر افسر کے ماتحت کام نہیں کر سکتا۔خط میں کہاگیاکہ میری

خدمات پنجاب سے واپس لے لی جائیں ،انہوں نے کہاکہ جب تک میرا تبادلہ نہیں

ہوتا مجھے رخصت دے دی جائیتحریک انصاف کی حکومت آنے کے بعد سب سے

پہلے کلیم امام کو عہدے سے ہٹایا گیا جو کہ اس عہدے پر 3 ماہ بھی پورے نہ

بچوں کیلئے میٹھا زہر، نوجوانوں کو اندر سے کھوکھلا کرنیوالے مشروبات

کرسکے۔کلیم امام کے بعد محمد طاہر کو عہدہ دیا گیا اور انہیں بھی ایک ماہ بعد

عہدے سے ہٹادیا گیا۔ان کے بعد امجد جاوید سلیمی کو نیا آئی جی پنجاب تعینات کیا

گیا جو کہ اس عہدے پر بمشکل 6 ماہ رہ سکے اور انہیں بھی تبدیل کردیا گیا۔ان

کے بعد آنے والے آئی جی کیپٹن ریٹائرڈ عارف نواز تھے جو کہ دوسری بار اس

عہدے پر تعینات ہوئے تھے تاہم انہیں بھی ہٹادیا گیا، وہ اس عہدے پر تقریباً 7 ماہ

رہے۔ عارف نواز کے بعد قرعہ فال شعیب دستگیر کے نام نکلا تاہم وہ بھی 9 ماہ

بعد گزشتہ روز عہدے سے ہٹادیے گئے اور ان کی جگہ انعام غنی کو نیا آئی جی

پنجاب تعینات کیا گیا ہے ڈاکٹر کلیم امام 13 جون 2018ء سے 11 ستمبر 2018،

محمد طاہر 11 ستمبر 2018ء سے 15 اکتوبر 2018ء امجد جاوید سلیمی 15 اکتوبر

2018ء سے 17 اپریل 2019ء ، کیپٹن (ر) عارف نواز خان 17 اپریل 2019ء سے

28 نومبر 2019ء آئی جی پنجاب رہے۔ شعیب دستگیر پانچویں آئی جی پنجاب تھے

جو 28 نومبر 2019ء کو تعینات ہوئے۔ سابق آئی جی پنجاب شعیب دستگیر کا بیان

بھی سامنے آ گیا ہے جس میں انہوں نے کہا کہ سی سی پی او لاہور عمر شیخ کے

بیان پر وزیراعلیٰ پنجاب کو آگاہ کیا تھا۔ انہوں نے کمانڈر کے خلاف بات کرکے

رولز کی خلاف ورزی کی۔ قانون کے مطابق کارروائی ہوتی تو کوئی مسئلہ نہیں

تھا۔سٹیبلشمنٹ ڈویڑن نے شعیب دستگیر کو سیکرٹری نارکوٹکس کنٹرول ڈویڑن

تعینات کر دیا گیا، اس سلسلے میں نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا ہے۔

پانچواں آئی جی تبدیل

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply