ٹرمپ کےخلاف روس سے تعلقات کی تحقیقات شروع، شٹ داﺅن پر مقدمہ بھی درج

Spread the love

ایف بی آئی نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے روس سے تعلقات کی تحقیقات شروع کر د یں،تفتیش میں اس بات کو بھی مدنظر رکھا جائےگاکہ کہیں ٹرمپ جانتے بوجھتے روس کےلئے کام تو نہیں کررہے ہیں جبکہ تفتیش میں مجرمانہ پہلو کو بھی سامنے رکھا گیا ہے۔امریکی خفیہ ایجنسی (ایف بی آئی)نے سابق ڈائریکٹر جیمز کومی کو عہدے سے برطرف کیے جانے کے بعد ا مریکی صدر کےخلاف تحقیقات شروع کر دیں، سکیورٹی اداروں کو امریکی صدر کے رویے پر تشویش تھی۔غیر ملکی اخبار کے مطابق تفتیشی اہلکاروں نے امریکی صدر ٹرمپ کے اقدامات کو قومی سلامتی کےلئے ممکنہ خطرے کے حوالے سے تفتیش شروع کیں۔دریں اثناامریکی تاریخ کا طویل ترین شٹ ڈاﺅن جاری ہے جس کی وجہ سے امریکی ائیر ٹریفک کنٹرول ایسوسی ایشن نے صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور دیگر حکام کیخلاف مقدمہ درج کرا دیا ہے۔امریکی ڈسٹرکٹ کورٹ میں دائر مقدمے میں موقف اپنایا گیا ہے کہ شٹ ڈاﺅن کے سبب تنخواہیں نہیں دی جارہیں اور تنخواہ کے بغیر کوئی ملازم کام کر نے کوتیارنہیں جبکہ کمپنی کے ملازمین کا کہنا ہے مطلوبہ معاوضے دیے بغیر سخت محنت کروائی جارہی ہے۔امریکہ میں جاری جزوی شٹ ڈاﺅن چوتھے ہفتے میں داخل ہو گیا ہے اور8 لاکھ سے زائد لوگوں کو تنخواہیں نہیں مل سکیں،لاکھوں افراد کو جزوی طور پر گھر بھیج دیا گیا ہے اور ہزاروں افراد بلامعاوضہ کام کرنے پر مجبور ہیں۔امریکی صدر کی جانب سے میکسیکو کےساتھ سرحدی دیوار کی تعمیر کیلئے رقم پر باربار اصرار کیا جارہا ہے اور ٹرمپ کہہ چکے ہیں رقوم کی منظوری نہ ہونے تک وہ شٹ ڈاﺅن کو مہینوں بلکہ سالوں تک بھی جاری رکھ سکتے ہیں۔امریکی صدر اور کانگریس کے اپنے اپنے موقف پر ڈٹ جانے سے سرکاری ملازمین رل گئے ۔قبل ازیں1996میں بل کلنٹن کے دور صدارات میں21روز کا شٹ ڈاﺅن ہوا تھا۔(رپورٹ، جے ٹی این آن لائن )

Leave a Reply