Donald Trump

ٹرمپ نے عالمی ادارہ صحت کی امداد روک دی

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

واشنگٹن (جتن آن لائن نیوز)امریکی صد ر ڈونلڈ ٹرمپ نے دنیا بھر میں کرونا وائرس سے ہونے والی ہلاکتوں پر عالمی ادارہ صحت(ڈبلیو ایچ او)کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے اس کو دی جانے والی امداد روکنے کا اعلان کردیا ہے۔ادھراقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انٹونیو گوٹیریس نے ڈبلیو ایچ او کو مالی امداد روکنے کے امریکی فیصلے کو نامناسب قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ یہ ایسے اقدامات کرنے کا وقت نہیں ہے۔

گزشتہ روزصدر ٹرمپ نے کرونا وائرس کے حوالے سے معمول کی بریفنگ کے دوران ڈبلیو ایچ او کیلئے مالی امداد روکنے کا اعلان کرتے ہوئے کہاکہ میں اپنی انتظامیہ کو ہدایت کر رہا ہوں کہ وہ عالمی ادارہ صحت کی فنڈنگ روک دیں اور ڈبلیو ایچ او کے کردار کا جائزہ لیں جس نے انتہائی بد انتظامی کی اور کرونا وائرس کے پھیلائو کو چھپایا ۔ ڈبلیو ایچ او اپنا بنیادی فرض ادا کرنے میں ناکام رہا ہے اور اس کا احتساب ہونا چاہئے۔ ڈبلیو ایچ او کی نا اہلی کی وجہ سے دنیا میں کرونا وائرس کے کیسیز بیس گنا بڑھ گئے۔ چین پر سفری پابندیاں لگانے کے ان کے مطالبے پر ڈبلیو ایچ او نے نکتہ چینی کی تھی۔

انہوں نے کہا کہ دنیا میں غلط معلومات پہنچائیں گئیں اور ہلاکتوں کے بارے میں غلط اعدادوشمار دئیے گئے ۔ اگر ڈبلیو ایچ او چین میں جا کر اس وبا کا جائزہ لیتا تو زیادہ زندگیاں بچائی جا سکتی تھیں۔امریکی صدر نے عالمی ادارہ صحت پر الزام لگایا کہ اس نے زندگیاں بچانے سے زیادہ سیاسی بنیادوں پر فیصلے کئے اور وبا کے بارے میں چین کے دعوئوں کو ہی تسلیم کیا۔

ادھراقو ام متحدہ کے سکریٹری جنرل انٹونیو گوٹیرس نے صدر ٹرمپ کے بیان پر اپنے ردعمل میں کہا کہ عالمی ادارہ صحت یا دیگر کسی ایسی انسانی تنظیم کو دی جانے والی مالی امداد اور دیگر وسائل کو روکنے کا یہ وقت نہیں ہے جو کرونا وائرس کی عالمی وبا کے خلاف جنگ لڑرہی ہیں۔میرا یہ یقین ہے کہ عالمی ادارہ صحت کی ہر طرح سے مدد کی جانی چاہئے کیوں کہ ایسا کرنا کرونا کے خلاف جنگ میں کامیابی حاصل کرنے کیلئے انتہائی ناگزیر ہے۔

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان ژا لی جیان نے کہا ہے کہ امریکہ کی جانب سے عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کی فنڈنگ روکنے کے فیصلے سے نوول کروناوائرس کے خلاف جنگ میں بین الاقوامی تعاون کو نقصان پہنچے گا اور یہ کہ چین کو اس حوالے سے سخت تشویش لاحق ہے۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اعلان کردہ فیصلے پر بدھ کو پریس بریفنگ میں ایک سوال پر چینی ردعمل دیتے ہوئے ترجمان ژا لی جیان نے کہا کہ عالمی صحت پبلک کے تحفظ کے شعبوں میں سب سے مستند اور پیشہ ور بین الاقوامی ادارے کی حیثیت سے عالمی ادارہ صحت نے عوامی صحت کے اس عالمی بحران سے نمٹنے میں بے بدل کردار ادا کیا ہے۔

اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ عالمی ادارہ صحت کی کوششوں کا بین الاقوامی برادری کی طرف سے بڑے پیمانے پر اعتراف اور انتہائی سراہا گیاہے ژا نے کہا کہ خاص طورسے نوول کروناوائرس کے پھیلنے کے بعد سیعالمی ادارہ صحت نے ڈائریکٹر جنرل ٹیڈروس ا کی سربراہی میں فعال طور پر اپنے فرائض کو بخوبی نبھایا ہے اور بین الاقوامی تعاون کو مربوط اور فروغ دینے میں مرکزی کردار ادا کیا ہے۔

ترجمان نے کہا کہ اس عالمگیر وبا کی دنیا بھر میں صورتحال کی شدت اور سرعت کو دیکھتے ہوئے امریکی امداد کی فراہمی روکنے کے فیصلے سے ڈبلیو ایچ او کی استعداد کمزور ہوگی اور نوول کرونا وائرس کے خلاف جنگ میں بین الاقوامی تعاون کو نقصان پہنچے گا۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply