ٹرمپ ، ڈیموکریٹس اپنے اپنے مطالبات ڈٹ گئے، شٹ ڈاﺅن برقرار

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے واضح کر دیاکہ جب تک میکسیکو کی سرحد پر دیوار تعمیر کرنے کےلئے فنڈ فراہم کرنے کا سمجھوتہ نہیں ہوجاتا اس وقت تک حکومت کا شٹ ڈاﺅن جاری رہے گا ۔ امریکی حکومت کے بیشتر محکموں کے موجودہ سال کےلئے اخراجات کا بل یا بجٹ پہلے منظور ہو چکا ہے چند محکموں کے بجٹ پر کانگریس ٹرمپ انتظامیہ کے موقف سے اتفاق نہیں کرسکی، ا سلئے موجودہ مالی کےلئے جو یکم اکتوبر 18ءتا30 ستمبر 19ءتک جاری رہے گا ان چند محکموں کا بجٹ منظور نہ ہونے سے حکومت کا شٹ ڈاﺅن ہوسکتا ہے اسلئے حکومت کو چلانے کےلئے دو مرتبہ عار ضی فنڈ فراہم کیا گیا۔ دوسری مرتبہ والے فنڈ کی مدت گزشتہ جمعہ کی رات کو ختم ہوگئی اوربجٹ منظور یا عارضی فنڈ فراہم کرنے کا کوئی سمجھوتہ نہ ہوسکا اور شٹ ڈاﺅن ہفتے سے شروع ہوگیا ۔ جزوی بجٹ ایوان نمائند گا ن نے منظور کرلیا ہے لیکن سینیٹ سے ڈیمو کریٹس اس بل میں دیوار کی تعمیر کےلئے فنڈ شامل کرنے کو تیار نہیں ہیں اور صدر ٹرمپ ایسے کسی بل پر دستخط نہیں کرنا چاہتے اسلئے تعطل جاری ہے۔ بحران کے باعث سٹا ک مارکیٹ منڈے اور معیشت کی رفتار سست روی کا شکار ہے جبکہ اس دو ر ا ن صدر ٹرمپ کی طرف سے مرکزی بنک یعنی فیڈرل ایزور کے سربراہ کو تبدیل کرنے کے عندے نے حکومتی بحران کو مالی بحران میں تبدیل کر دیا ہے۔ یہ بحران کرسمس کے موقع پر ہوا جس کے باعث حکومت کے ہزاروں ملازمین بغیر تنخواہ کے کام کررہے ہیں پھر ان کو عارضی طور پر گھر بھیج دیا گیاجبکہ صدر ٹرمپ نے کرسمس کے موقع پر ایک ویڈیو کانفرنس سے شٹ ڈاﺅن کے خا تمے کی واضح تاریخ بتانے سے بھی انکارکر دیا اور کہا وہ انہیں جانتے یہ سلسلہ کب تک جاری رہے گا۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply