83

وہی ہوا جس کا ڈر تھا، پاکستان میں کرونا نے پنجے پھیلانا شروع کر دئیے.2 مریض جاں بحق

Spread the love

گلگت /چلاس (جنرل رپورٹر ،مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان میں کورونا وائرس سے پہلی دو ہلاکتوں

کی ، تصدیق کر دی گئی،کورونا وائرس کے مزید 67 کیسز سامنے آنے کے بعد ملک بھر میں متاثرہ

افراد کی مجموعی تعداد 304 ہو گئی ہے جبکہ ملک میں پہلی ہلاکت خیبرپختونخوا کے شہر مردان

سے سامنے آئی۔سندھ میں 36، گلگت بلتستان میں 10، پنجاب اوربلوچستان میں 7، 7 جبکہ اسلام آباد

اور خیبرپختونخوا میںمزید 3، 3 اور آزاد کشمیر میں ایک کورونا وائرس کے کیس کی تصدیق ہوئی۔

خیبرپختونخوا کے وزیرصحت تیمور خان جھگڑا نے ٹوئٹ میں تصدیق کی کہ مردان سے تعلق

رکھنے والا ایک مریض انتقال کرگیا ہے مشیر صحت ڈاکٹر طفر مرزا نے بھی تصدیق کردی ہے کہ

مرادان مین کرونا کے مریض کی ہلاکت ہوئی ہے اس سے قبل گلگت بلتستان میں کورونا وائرس سے

متاثر مریض کی ہلاکت کی خبریں سامنے آئی تھیں تاہم وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی

برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے تردید کردی ہے گلگت میں ہلاک ہونے والے شخص کی رپورٹ

اآگئی ہے اس کی موت کرونا سے نہیں ہوئی جبکہ بتایا گیا ہے کہ پشاور کے لیڈی ریڈنگ ہسپتال

مین بھی کرونا کے ایک مریض کی ہلاکت ہو گئی ہے جاں بحق ہونے والے کا تعلق ہنگو سے بتایا گیا

ہے مردان میں جاںبحق ہونے والا شخص چند روز قبل سعودی عرب سے واپس آیا تھا درین اثنا وفاقی

حکومت نے سرکاری دفاتر میں ملازمین کی حاضری 50 فیصد کم کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے،

روٹیشن کی بنیاد پر ملازمین باری باری ڈیوٹی دیں گے تمام وزارتوں اور محکموں کو مراسلہ جاری

کر دیا گیا ہے، بدھ کے روز جاری مراسلے کے مطابق وفاق کے زیر انتظام سرکاری دفاتر

میںملازمین کی حاضری پچاس فیصد کم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے وفاقی سرکاری دفاترمیں روٹیشن

کی بنیاد پر ملازمین کی حاضری میں کمی کی جائے گی، ملازمین باری باری ڈیوٹی پر آئیں گے ،

آدھے ملازمین ایک دن حاضری دیں گے جبکہ بقیہ رخصت پر ہوں گے اسی ترتیب سے بقیہ اگلے

روز ڈیوٹی پر حاضر ہوں گے تو پہلے روز کام کرنے والے چھٹی پر رہیں گیترجمان سندھ حکومت

کے مطابق سکھر میں موجود زائرین میں سے 50 فیصد میں وائرس کی تصدیق ہوئی ہے اور وہاں

کورونا سے متاثرہ 151 افراد موجود ہیں۔سکھر کے قرنطینہ مرکز کے علاوہ کراچی سمیت سندھ میں

کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد 57 ہوگئی ہے جن میں سے 2 افراد صحت یاب بھی ہوچکے ہیں۔

Leave a Reply