100

وفاقی حکومت کا جسٹس وقار سیٹھ کیخلاف جلد ریفرنس دائر کرنے کا اعلان

Spread the love

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)وفاقی حکومت نے پرویز مشرف کیخلاف سنگین غداری

کیس کی سماعت کرنے والی خصوصی عدالت کے سربراہ جسٹس وقار سیٹھ

کیخلاف جلد ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ کرلیا ۔نجی ٹی وی کو خصوصی انٹرویو

دیتے ہوئے وزیر قانون فروغ نسیم نے کہا ہے کہ خصوصی عدالت کے جج جسٹس

وقار سیٹھ کیخلاف ریفرنس تیاری کے مراحل میں ہے جلد دائر کردیں گے۔ایک

سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ نئے نیب آرڈیننس سے کسی کو کوئی فائدہ

حاصل نہیں ہوگا،کرپٹ افراد کے خلاف مزید شکنجہ سخت کیا جارہا ہے ،کسی

کرپٹ افراد کو معافی نہیں ملے گی،نیب آرڈیننس کے ذریعے نیب کے کام میں

مداخلت نہیں بلکہ خامیاں دور کرنے کی کوشش کی ہے ،نیب آرڈیننس کی تشریح

عدالت نے کرنی ہے۔انہوں نے کہا کہ میری ذاتی رائے کہ مطابق پہلے سے دائر

مقدمات میں 99 فیصد ملزموں کو ریلیف نہیں ملے گا،اگر کوئی سمجھتا کہ نئے

آرڈیننس سے ریلیف مل گیا تو ان کی مرضی ہے،ہر کوئی خواہش تو کر سکتا ہے

،نئے نیب آرڈیننس کے بعد درخواستیں دینے والوں کونہ میں روک سکتا نہ ہی

کوئی عدالت روک سکتی ہے۔ایک اور سوال کے جواب میں فروغ نسیم نے ایم کیو

ایم پاکستان کے مطالبات کو جائز قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایم کیو ایم پاکستان کے

دفاتر میں نئے لوگ ہوں گے پرانے نہیں۔انہوں نے کہا کہ میں ایم کیو ایم پاکستان

کے ٹکٹ پر سینیٹر منتخب ہوا ہوں اورمیری وزارت پارٹی ٹکٹ سے نہیں ہے ۔

خالد مقبول صدیقی عامر خان سمیت سب سے مسلسل رابطے ہیں،ایم کیو ایم

پاکستان کابینہ سے الگ ہوئی حکومت کی سپورٹ سے دستبردار نہیں ہوئی، ایم کیو

ایم پاکستان کے کسی رکن نے نہیں کہا حکومت کا ساتھ نہیں دینا۔ایک اور سوال

کے جواب میں وزیر قانون فروغ نسیم نے مسلم لیگ ن کے سینیٹر مشاہد اللہ خان

کو ذہی مریض قرار دیتے ہوئے کہا کہ اگر لیگی کسی اچھے ماہر نفسیات سے

علاج کرانا چاہتے ہیں تو سارا خرچہ برداشت کرنے کیلئے تیار ہوں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں