imran khan 132

نیب آرڈیننس لانے کی وجہ بیوروکریسی کا ڈر ختم کرنا تھا، عمران خان

Spread the love

اسلام آباد(جتن آن لائن سٹاف رپورٹر) وزیر اعظم عمران خان

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ہم نے پچاس لاکھ گھر بنانے ہیں، اس میں

بیورویسی کا بھی اہم کردار ہے لیکن بیورو کریٹ نیب سے ڈرے ہوئے تھے- نیب

آرڈیننس میں ترمیم مشکل فیصلہ تھا لیکن بیوروکریسی کو طریقہ کار کی غلطیوں

پر نیب کے شکنجے سے بچانا چاہتے تھے۔ (مزید پڑھیں)

اسلام آباد میں سول سرونٹس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے

کہا کہ جمہوریت میں سیاسی مشاورت اور اتفاق رائے سے چلنا ہوتا ہے۔ شور

مچانے والوں کو پہلے ترامیم پڑھ لینی چاہیں۔ وزیراعظم نے پاکستان کی معاشی

صورتحال کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ملک قرضوں کی دلدل میں پھنسا ہوا ہے۔

گزشتہ 10 برسوں کے دوران ملکی قرضوں میں 24 ہزار ارب روپے کا اضافہ

ہوا۔ پاکستان پر 2018 تک 30 ٹریلین قرضوں کا بوجھ تھا۔ ہماری حکومت کا پہلا

سال قرضوں کا سود ادا کرنے میں چلا گیا۔

انہوں نے کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ ہمارے گورننس سسٹم کا نظام ٹھیک ہو اور

فیصلے جلدی ہوں اور فیصلے جلدی اس لئے نہیں ہورہے تھے کہ بیورو کریٹ

نیب سے ڈرے ہوئے تھے کہ پروسیجر پر توکوئی بھی پکڑا جاسکتا ہے۔ انہوں

نے کہا کہ جب بیورو کریسی پر نیب کا خوف آگیا تو کوئی بڑا فیصلہ ہونا ہی نہیں

تھا۔ انہوںنے کہا کہ تاجر تو نیب کے دائرہ کار میں نہیں آتے اور جہاں تک ٹیکسز

کا تعلق ہے تو یہ ویسے ہی ایف بی آر کا کام ہے- یہ بات میں نے چیئرمین نیب کو

بھی سمجھائی ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ ملک میں پیسہ اس وقت آئے گا جب

صنعتیں چلیں گی جبکہ بہت جلد ملک کو قرضوںسے نکال لیا جائے گا-

وزیراعظم عمران خان نے کراچی میں وفاقی ترقیاتی منصوبوں میں تیزی لانے

کی ہدایت کردی۔ وزیراعظم نے کراچی سے پی ٹی آئی ایم این ایز ( ارکان قومی

اسمبلی ) کے تجویز کردہ منصوبوں کو شامل کرنے کی منظوری بھی دیدی۔ وفاق

کی جانب سے کراچی میں 10 موبائل میڈیکل یونٹس بنائے جائیں گے اور 100

نئے آر او پلانٹس کے منصوبوں پر کام مکمل کیا جائے گا۔ مزید برآں میڈیا

سٹریٹیجی کمیٹی کے اجلاس میں گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے

کہا کہ مسلسل محنت سے معیشت کو آئی سی یو سے نکال دیا، وزیراعظم عمران

خان نے میڈیا سٹریٹیجی کمیٹی کے اجلاس کے دوران عوامی مفاد کے منصوبوں

میں تیزی لانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی وزرا اورحکومتی ٹیم عوامی

ریلیف کے لیے اقدامات تیز کریں۔

انہوں نے کہا کہ حکومتی ٹیم قوم تک ثمرات پہنچانے کے لیے اقدامات کرے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ احساس پروگرام کے تحت پناہ گاہ، لنگرخانوں

جیسے منصوبے شروع کیے،غریب طبقے کے ریلیف کے لیے ایسے مزید

اقدامات شروع کریں، وفاقی وزرا اور حکومتی شخصیات عوام کے پاس جائیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے وزرا کو شیلٹر ہومز کے دورے

کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ نظر رکھیں سردی میں لوگ سڑکوں پر نہ

سوئیں۔ وزیراعظم پاکستان نے کہا کہ صحت انصاف کارڈ کا دائرہ کار پورے

پاکستان میں پھیلایا جائے، دال، آٹا، چینی، گھی اشیائے ضروریہ کی سستے داموں

فراہمی یقینی بنائیں۔

وزیر اعظم عمران خان

Leave a Reply