استعفیٰ نہیں دونگا، وزیراعظم عمران خان، چلتا کرکے رہیں گے، بلاول بھٹو

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اسلام آباد،تھر(جتن آن لائن رپورٹر،ویب مانیٹرنگ) وزیراعظم ، بلاول بھٹو

وزیراعظم عمران خان نے واضح کیا ہے کہ پاکستانی عوام نے پانچ سال کیلئے

منتخب کیا، اپوزیشن کے مطالبے پر استعفیٰ نہیں دونگا، آزادی مارچ کے پیچھے

اندرونی اور بیرونی ایجنڈا ہے، تفصیلات نہیں بتا سکتا، حکومتی مذاکراتی کمیٹی

آج مولانا فضل الرحمان سے ملاقات کرے گی، آزاد مارچ کی اجازت دیں گے-

مولانا فضل الرحمن کی تقریر نشر کر نے پر کوئی پابندی نہیں،

آج این آر او دوں، زندگی آسان ہوجائیگی، عمران خان

اپوزیشن کا ایک ہی مسئلہ ہے، این آر او، گرفتار رہنماؤں کو آج باہر جانے کی

اجازت دوں تو زندگی آسان ہو جائیگی، نوازشریف کی طبیعت کے حوالے سے

وزیراعظم نے کہا کہ شہبازشریف کہتے ہیں نوازشریف کو کچھ ہوا تو ذمہ دار

عمران خان ہوں گے، نوازشریف کی صحت کا معاملہ میرے ہاتھ میں نہیں اور نہ

ہی میں کوئی عدالت یا ڈاکٹر ہوں، نوازشریف کے بیرون ملک علاج کا فیصلہ

عدالت نے کرنا ہے اور اگر مریم نواز نے ملاقات کرنی ہے تو وہ فیصلہ بھی

عدالت کرے گی، میں نے وزیراعلیٰ پنجاب کو ہدایت کردی ہے نوازشریف کو

بہترین سہولیات فراہم کریں۔

بھارت بے اعتبار، پاک فوج کو تیار کر رکھا ہے

بھارت پلوامہ جیسا ایک اورڈرامہ رچا سکتا ہے، آرمی چیف کو کہا ہے فوج کو

مکمل طور پر تیار رکھیں،کچھ قوتیں چاہتی ہیں سعودی عرب اورایران میں جنگ

ہوجائے لیکن دونوں برادر اسلامی ممالک میں لڑائی ہمارے لیے بھی خطرناک

ہوسکتی ہے۔ ایران اور سعودی وزرائے خارجہ کی اسلام آباد میں ملاقات کی

کوشش کر رہے ہیں، دونوں ممالک میں تنائو کم کریں گے۔

آزادی مارچ اندرونی و بیرونی سازش

سینئر صحافیوں اور اینکرز سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا

ہمارے دھرنے اور مولانا فضل الرحمان کے مارچ میں بڑا فرق ہے، ہم چار حلقوں

کے ثبوت لیکر پھرتے رہے، ہر دروازہ کھٹکھٹایا ناکامی پر احتجاج کا فیصلہ کیا۔

مولانا فضل الرحمان کا تو چارٹر آف ڈیمانڈ واضح ہی نہیں پھر بھی ہم آزادی مارچ

کی اجازت دیں گے لیکن لگتا ہے آزادی مارچ کے پیچھے اندرونی اور بیرونی

ایجنڈا ہے، کیونکہ مولانا فضل الرحمان کے مارچ پر بھارت میں جشن منایا جارہا

ہے، فضل الرحمان کو سنجیدہ ہو کر مذاکرات کرنا ہوں گے۔

یہ بھی پڑھیں: عمران خان کا مولانا کیساتھ مذاکرات کا عندیہ

اپوزیشن کے دھرنے سے پاکستان دشمن ممالک کو فائدہ پہنچے گا، آئین اور

جمہوری اصولوں کے مطابق ہر شخص کو احتجاج کا مکمل حق ہے، گرفتار

رہنماؤں کو آج باہر جانے کی اجازت دوں تو زندگی آسان ہو جائے گی، آرمی

چیف مجھ سے پوچھ کر بزنس مینوں سے ملے۔ پہلی دفعہ منتخب حکومت اور

فوجی قیادت ایک پیج پر ہیں۔ مولانا فضل الرحمان کے مارچ سے کشمیر کاز کو

نقصان ہورہا ہے،

بھارت کشمیر معاملے میں پھنس چکا

کشمیر کے حوالے سے صورتحال ابھی کشیدہ ہے تاہم بھارتی جارحیت کا منہ توڑ

جواب دیا جائے گا۔ مسئلہ کشمیر پر دنیا کی طرف سے تاریخی ردعمل آرہا ہے،

بھارت اب کشمیر میں بری طرح پھنس چکا ہے، شروع میں ہمیں کشمیر کے

معاملے پر عالمی سپورٹ نہیں ملی لیکن آج کشمیر کا مسئلہ انٹرنیشلائز ہوچکا

ہے، یہ معاملہ مغربی میڈیا میں آنے کے بعد زیادہ نمایاں ہوا، ہم کشمیر کے حوالے

سے میڈیا سنٹر بنا رہے ہیں۔

مہنگائی بیروزگاری ختم کرنے کیلئے کوشاں

وزیراعظم نے کہا معیشت بہتری کی جانب گامزن ہے، روپے کی قدر مستحکم

ہوگی۔ نئے بلدیاتی نظام کے تحت اختیارات نچلی سطح منتقل کریں گے۔ مہنگائی

اور بیروزگاری سنجیدہ مسئلہ،اس پر کام کر رہے ہیں۔ وزیراعظم ، بلاول بھٹو

عمران ظالم اور سندھ دشمن، چیئرمین پیپلز پارٹی

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے وزیر اعظم عمران خان

پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے عمران خان ظالم اور سندھ دشمن ہیں، ہم اس کٹھ پتلی

حکومت کو گرا کر رہیں گے، عوام کے معاشی حقوق سلب، صوبے کے حقوق

چھینے جارہے ہیں جبکہ شہر قائد کراچی پر بھی قبضے کی کوشش کی جا رہی

ہے،عمران خان کی حکومت گرانے نکلا ہوں، کچھ لوگ وزارتیں لے کر سندھ کے

حقوق پر سودے بازی کررہے ہیں،

عوام حکومت گرانے میں ساتھ دیں

آج جمہوریت شدید خطرے میں ہے، سب کے سب ریموٹ سے چل رہے ہیں،

مجھے عوام کا ساتھ چاہیے، وفاق سے حقوق چھین کرعوام کی خدمت کریں گے،

ہمارا اگلا احتجاج سندھ اور پنجاب کی سرحد پر کندھ کوٹ میں ہوگا اور اسلام آباد

تک اپنی آواز پہنچائیں گے۔ یہاں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو کا

مزید کہنا تھا مجھے بہت خوشی محسوس ہورہی ہے کہ میں تھر کے عوام سے

مخاطب ہوں، اس دھرتی کو دنیا صحرائے تھر کے نام سے جانتی ہے، تھر امن و

مہمان نوازی کے لیے مشہور ہے۔

مزید پڑھیں: ملک چلانے کیلئے بھٹو کا آئین ماننا پڑیگا، بلاول بھٹو

تھر میں انگریز کیخلاف بغاوت کا علم بلند کرنیوالے رہتے ہیں۔ آج ہر طرف مسائل

ہی مسائل ہیں، تھر کے لوگ قحط کی وجہ سے مشکلات کا شکار ہیں جبکہ پیپلز

پارٹی نے غریبوں کو حقوق دلوائے۔ 6 ماہ قبل آپ سے یونیورسٹی کا وعدہ کیا تھا

جسے پورا کردیا آج میں یہاں این ای ڈی یونیورسٹی کے کیمپس کا افتتاح کر رہا

ہوں

عوام کو طاقت کا سرچشمہ شہید بھٹو نے بنایا

بلاول بھٹو زرداری نے کہا ملک میں کوئی آئین نہیں تھا، عوام کے پاس حقوق نہیں

تھے، شہید ذوالفقارعلی بھٹو نے طاقت کا سر چشمہ عوام کو بنایا، جب ظالم ضیاء

نے آمریت قائم کرکے قائد عوام کا عدالتی قتل کیا تو شہید بی بی عوام کی آواز بنیں۔

حکومت نے معیشت کا ستیاناس کر دیا

کٹھ پتلی سیاستدان ہمارے مقابلے میں لڑتے ہیں، ہم مل کر کٹھ پتلی کو بھگائیں گے

اور عوامی حکومت بنائیں گے۔ معاشرے میں آج ہر طبقے کا معاشی قتل کیا جارہا

ہے، غریب دشمن حکومت عوام کا خون چوس رہی ہے۔ یہ ملک اور اس کے عوام

ان کا ظلم زیادہ برداشت نہیں کریں گے، انہوں نے معیشت کا ستیاناس کردیا،

مک گیا تیرا شو، عمران گو عمران گو

حکومت تو چلا ہی نہیں سکتے، کٹھ پتلی حکومت نے کشمیر کا سودا کردیا، کوئی

غیرت مند پاکستانی ان کو معاف نہیں کرسکتا، عوام کی ایک ہی آواز ہے “مک گیا

تیرا شو،،، عمران گو عمران گو”۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ جلد ہی یہ حکومت گرے

گی، عوامی حکومت بنے گی اور عوام کے مسائل حل کریگی۔

وزیراعظم ، بلاول بھٹو

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply