واشنگٹن تہران ثالثی مذاکرات کا چوتھا راؤنڈ، جون میں ایٹمی معاہدہ متوقع

واشنگٹن تہران ثالثی مذاکرات کا چوتھا راؤنڈ، جون میں ایٹمی معاہدہ متوقع

Spread the love

واشنگٹن (جے ٹی این آن لائن خصوصی رپورٹ) واشنگٹن تہران ثالثی مذاکرات

امریکہ نے ان تمام رعایتوں کی تفصیلات ثالث ممالک کے ذریعے ویانا میں ایران

کے وفد کو پہنچا دیں، جو ایران کے معاہدے کی شرائط قبول کرنے کی صورت

میں اسے فراہم کی جائیں گی۔

=-= دنیا بھر کی مزید تازہ ترین خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

امریکی میڈیا نے واشنگٹن کے سکیورٹی ذرائع کے حوالے سے خبر نشر کی ہے

کہ جمعہ کے روز آسٹریا کے دارالحکومت میں ایران اور امریکہ کے درمیان

جوہری معاہدے کو بحال کرنے کیلئے ان کی ثالثوں کے ذریعے بات چیت کا چوتھا

راﺅنڈ ہوا ہے۔ سابق امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ نے چھ ممالک اور

یورپی یونین کے ہمراہ ایران سے کئے جانے والے معاہدے سے 2018ء میں

نکلنے کا اعلان کیا تھا۔

=–= فریقین کا موڈ بہت تعمیری، شرائط پر تہران کے جواب کا انتظار، امریکہ

مشترکہ جامع لائحہ عمل کہلانے والے اس معاہدے میں باقی شریک ممالک

برطانیہ، روس، فرانس، چین، جرمنی اور یورپی یونین کے نمائندوں اور ایران کے

وفد کے درمیان معمول کا سالانہ اجلاس ہو رہا ہے، تاہم اس موقع پر امریکی حکام

کی ایران سے بالواسطہ بات چیت کیلئے آتے جاتے رہے ہیں۔ امریکی نمائندے

دوبارہ جمعرات کو ویانا آئے ہیں جہاں انہوں نے ایران کے ساتھ بالواسطہ بات

چیت کا ایک اور دور مکمل کرلیا ہے۔ اس دوران امریکی وزارت خارجہ کے اعلیٰ

حکام نے بالواسطہ مذاکرات کے اس چوتھے راﺅنڈ کو سنجیدہ قرار دیتے ہوئے کہا

ہے کہ ” دونوں اطراف کا موڈ بہت تعمیری ہے“۔

=قارئین=کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

واشنگٹن کے سکیورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ اگراس موقع پر ایران امریکہ سے

مزید مطالبات نہیں کرتا تو سمجھوتہ طے پا سکتا ہے۔ ان کے خیال میں ایران کو

بھی اس کی ضرورت ہے اور وہ جون میں ہونے والے صدارتی انتخابات میں اس

معاہدے کا سیاسی فائدہ اٹھانے کا خواہاں ہے۔

واشنگٹن تہران ثالثی مذاکرات

Leave a Reply