Iran-Vs-US

پہلے نیوکلیئر ڈیل کی پاسداری، امریکہ، نہیں پہلے پابندیوں کا خاتمہ، ایران

Spread the love

واشنگٹن، تہران (جے ٹی این آن لائن انٹرنیشنل نیوز) نیوکلیئر ڈیل امریکہ ایران

امریکا نے نیوکلیئر ڈیل کی پاسداری کیلئے ایران پر عائد متعدد پابندیاں اٹھانے کا

عندیہ دیدیا، امریکی دفتر خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ نیوکلیئر ڈیل کی پاسداری

کیلئے ضروری اقدامات اٹھانے کیلئے ہم تیار ہیں، ایران پر عائد ایسی پابندیاں بھی

اٹھالی جائیں گی جن کا نیوکلیئر ڈیل کیساتھ کوئی تعلق نہیں، جبکہ ایران نے واضح

کیا ہے امریکا کیساتھ 2015ء کے ایٹمی معاہدے پر دوبارہ تب ہی بات چیت بحال

ہو سکتی ہے جب واشنگٹن ایران پر عائد کردہ تمام پابندیاں واپس اٹھا لے-

=-= عالمی امور پر ایسی ہی مزید معلومات پر مبنی خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

میڈیا رپورٹس کے مطابق ایران اور عالمی طاقتوں نے ویانا میں منگل کو ہونیوالے

مذاکرات کے ابتدائی دور کو تعمیری قرار دیا تھا اور کہا تھا وہ تہران پر عائد

امریکی پابندیوں پر بات چیت کیلئے ورکنگ گروپ قائم کرنے پر رضامند ہو گئے

ہیں تاکہ تہران پر عائد پابندیوں کو ختم اور 2015ء کا جوہری معاہدہ بحال کیا جا

سکے، ویانا میں یورپی یونین کی صدارت میں منعقد ہونیوالی میٹنگ میں ایران،

چین، جرمنی، فرانس، روس اور برطانیہ کے نمائندے موجود تھے، امریکا شامل

نہیں تھا البتہ امریکی وفد ویانا میں موجود تھا اور یورپی یونین کے مذاکرات کار

انہیں میٹنگ کی تفصیلات سے مسلسل آگاہ کرتے رہے۔

=قارئین=ہماری کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

یرانی وزارت کے ترجمان سعید خطیب زادہ نے کہا کہ جب تک امریکا اپنے تمام

یک طرفہ اقدامات واپس نہیں کرتا ایران بھی کوئی اقدام واپس لینے کا پابند نہیں۔

ایرانی وزارت خارجہ کی اس وضاحت سے قبل ملک کے صدر حسن روحانی نے

آسٹریا کے دارالحکومت ویانا میں عالمی طاقتوں کیساتھ ایران کے ایٹمی پروگرام

رواں ہفتے ہونیوالی پر بات چیت کو ایک نیا باب قرار دیا، امریکا ابھی براہ راست

مذاکرات کا باضاطہ حصہ نہیں لیکن صدر جو بائیڈن کی حکومت نے کہا ہے انکی

حکومت مذاکرات میں واپسی کی خواہاں ہے۔

نیوکلیئر ڈیل امریکہ ایران

Leave a Reply