نیوزی لینڈ میں عوام کے پاس پولیس سے زیادہ اسلحہ کا انکشاف

Spread the love

ولگنٹن (جے ٹی این آن لائن خصوصی رپورٹ) نیوزی لینڈ اسلحہ انکشاف

نیوزی لینڈ میں عوام پولیس سے زیادہ آتشیں اسلحہ سے لیس ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔ ملک میں رائج قوانین کے مطابق 16 سال کی عمر میں لڑکا یا لڑکی اسلحہ لائسنس رکھنے کا اہل قرار ہے، مگر وہ اپنا اسلحہ رجسٹرڈ کروانے کا پابند نہیں۔

مزید پڑھیں : نیم خود کار اسلحے پر پابندی اور واپسی کیلئے سکیم کا اعلان

کرائسٹ چرچ کی مساجد پر دہشتگرد حملوں کے بعد اسلحہ پالیسی پر نظرثانی کے لئے نیوزلینڈ پارلیمنٹ سرجوڑ کر بیٹھ گئی۔ ایک رپورٹ کے مطابق نومبر 1990ء میں ایک ڈیوڈ گرے نامی شخص نے ذاتی عناد پر 13 افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا، اس کے بعد کوئی بڑا واقعہ رونما نہیں ہوا۔ 2017ء میں صرف 35 افراد قتل ہوئے جو وہاں کے امن و امان کی بہتری کا ثبوت تھا۔ مگر قوم پرست تنظیمیں اسلحہ کا انبار اکٹھا کر رہی تھیں، اور اب انہوں نے 50 سے زائد افراد کو شہید کر دیا۔

فالو کریں : جے ٹی این آن لائن ٹوئٹر

نیوزی لینڈ کے حکمران یہ سمجھتے پر مجبور ہو چکے ہیں کہ ملک میں نو عمر میں اسلحہ لائسنس کا اجراء انتہائی خطرناک ہے۔ جسے اس بات کا علم نہیں کہ ایک لائسنس پر کتنے آتشیں ہتھیار رکھے گئے ہیں۔ نیوزی لینڈ حکومت نے فیصلہ کر لیا ہے، کہ تمام تر اسلحہ کو رجسٹرڈ کروانا ضروری کیا جائے، تاکہ اندازہ لگایا جا سکے ملک میں عوام کے پاس کتنا اسلحہ موجود ہے، دوسری جانب پولیس کو بھی جدید اسلحہ سے لیس کرنے کا منصوبہ تیار کیا جا رہا ہے۔

نیوزی لینڈ اسلحہ انکشاف

Leave a Reply