نیوزی لینڈ نے جنوبی افریقہ کو سنسنی خیز مقابلے کے بعد شکست دیدی

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

برمنگھم(جے ٹی این آن لائن سپورٹس نیوز) نیوزی لینڈ جنوبی افریقہ

کرکٹ ورلڈ کپ 2019ء کے ایک میچ میں نیوزی لینڈ نے جنوبی افریقہ کو سنسنی خیز مقابلے کے بعد 4 وکٹوں سے شکست دیدی۔

مزید پڑھیں : نیوزی لینڈ نے افغانستان کو شکست دے دی

کیوی کپتان کین ولیمسن نے جنوبی افریقہ کے 242 رنز کے جواب میں ناقابل شکست اننگز کھیلتے ہوئے ٹیم کو فتح سے ہمکنار کروایا، ولیمسن نے شاندار سنچری سکور کی اور 103 رنز کیساتھ ناقابل شکست رہے، نیوزی لینڈ نے مطلوبہ ہدف 6 وکٹوں پر 4 گیندوں قبل حاصل کیا۔ آل راؤنڈر گرینڈ ہوم نے کپتان کا بھرپور ساتھ دیا، دونوں بلے بازوں کے درمیان چھٹی وکٹ پر 91 رنز کی قیمتی پارٹنر شپ قائم ہوئی، تاہم گرینڈ ہوم 60 رنز بنا کر کیچ آؤٹ ہوگئے،
گپٹل 35، منرو9، لیتھم اور ٹیلر1،1 جبکہ نیشام 23 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ جنوبی افریقہ کی جانب سے کرس مورس نے 3، رباڈا، نگڈی اور پھلکوایو نے 1،1 وکٹ حاصل کی۔

رہیں اپ ڈیٹ ہمارے ساتھ : فالو اور لائیک کرنے کیلئے کریں ( کلک )

اس سے قبل نیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیمسن نے ٹاس جیتا اوروقت ضائع ہونے پر فی اننگز میں ایک اوور کی کٹوتی کی گئی۔ کیوی کپتان کا فیصلہ بولرز نے درست ثابت کردکھایا، اور نپی تلی بولنگ سے بلے بازوں کو شروع سے ہی پریشان کیے رکھا، عمدہ بولنگ کی بدولت پروٹیز مقررہ 49 اوورز میں 6 وکٹوں پر 241 رنز ہی بنا سکے۔

جنوبی افریقی ٹیم کا آغاز اچھا نہ تھا

جنوبی افریقی ٹیم کا آغاز اچھا نہ تھا، ڈی کوک صرف 5 رنز بنا کر بولڈ ہوگئے، ابتدائی نقصان کے بعد کپتان ڈوپلیسی نے ہاشم آملہ سے ملکر دوسری وکٹ پر 50 رنز جوڑے، ڈوپلیسی 23 رنز بنا کر آوٹ ہوئے، جبکہ مارکرم اور آملہ نے محتاط انداز میں اننگز کو آگے بڑھایا، تاہم 111 کے مجموعی سکور پر آملہ مارکرم کا ساتھ چھوڑ گئے، انہوں نے 55 رنز بنائے۔ 136 پر مارکرم کے پویلین لوٹنے پر جارح مزاج ڈیوڈ ملر اور ڈوسن نے 72 رنز جوڑ کر مجموعے کو 208 تک پہنچایا-
ملر 36 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے، البتہ وینڈر ڈوسن نے 67 رنز بنا کر ٹیم کے اسکور کو 242 تک پہنچانے میں اہم کردار ادا کیا، نیوزی لینڈ کی جانب سے فرگوسن نے 3 وکٹیں حاصل کیں، بولٹ، گرینڈہوم اور سینٹنر نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

نیوزی لینڈ جنوبی افریقہ

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply