نوشہرہ ،9سالہ مناہل کو بداخلاقی کے بعد قتل میں ملوث درندہ گرفتار

Spread the love

خیبرپختونخوا پولیس نے نوشہرہ میںبد اخلاقی کے بعد 9 سالہ بچی مناہل کو قتل کرنے والے ملزم کو گرفتار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملزم کا نام یاسر ہے اور وہ مقتول مناہل کے باپ کاقریبی دوست ہے،بچی ملزم یاسر کو پہچانتی تھی، اسی وجہ سے اس کے ساتھ گئی، ملزم یاسر کا فون 28 دسمبر سے بند تھا، ملزم کی نشاندہی پر آلہ قتل برآمد کیا، جس پر خون کے دھبے موجود تھے۔ منگل کو ڈی آئی جی مردان محمد علی گنڈا پور نے پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ بچی سے بد اخلاقی اور قتل کیس پر پولیس نے پوری تندہی سے کام کیا اور کیس کو حل کرنے کے لیے 4 ٹیمیں تشکیل دی گئیں، جس کے بعد مرکزی ملزم کو گرفتار کرلیا گیا۔انہوں نے مزید بتایا کہ ملزم کا نام یاسر ہے اور وہ مقتول بچی کے باپ کاقریبی دوست ہے۔ڈی آئی جی محمد علی گنڈاپور کے مطابق بچی ملزم یاسر کو پہچانتی تھی، اسی وجہ سے اس کے ساتھ گئی۔انہوں نے مزید بتایا کہ ملزم مناہل کو کپڑے خریدنے کے بہانے ساتھ لے کر گیا اور اس نے بچی کے جنازے میں بھی شرکت کی تھی۔ڈی آئی جی کے مطابق بچی مناہل کی سہیلی نے ملزم کا حلیہ بتایا، جس کے بعد موبائل فون ریکارڈ اور مقتولہ بچی کی سہیلی کی مدد سے ملزم تک پہنچے۔ڈی آئی جی کے مطابق ملزم کے خلاف انسداد دہشت گردی کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کیاجائے گا۔واضح رہے کہ مناہل گذشتہ ماہ 25 دسمبر کو مدرسے سے گھر جاتے ہوئے لاپتہ ہوئی تھی، جس کی گمشدگی کی رپورٹ بچی کے دادا نے 27دسمبر کی رات 10 بجے پولیس میں درج کرائی، تاہم اگلے ہی روز یعنی 28 دسمبر کو 10 بجے مناہل کی لاش مقامی قبرستان سے برآمد ہوئی۔

Leave a Reply