نواز شریف کی درخواست ضمانت کی سماعت پرنئی میڈیکل رپورٹ طلب

Spread the love

اسلام آباد(جے ٹی این آن لائن) اسلام آباد ہائی کورٹ نے العزیزیہ سٹیل مل ریفرنس میں سابق وزیراعظم نوازشریف کی درخواست ضمانت پر جناح ہسپتال کی نئی میڈیکل رپورٹ طلب کر لی جبکہ سابق وزیر اعظم کی بریت کیخلاف نیب کی اپیل پرسماعت 2اپریل تک ملتوی کردی،

پیرکو اسلام آباد ہائیکورٹ میں سابق وزیراعظم نواز شریف کی طبی بنیادوں پر درخواست ضمانت کیس کی سماعت جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اخترکیانی نے کی ،

نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے عدالت میں دلائل دیتے ہوئے کہا اہم ایشو یہ ہے ابھی تک تشخیص کا عمل جاری ہے، باقاعدہ علاج شروع ہی نہیں ہوا، متعدد بیماریوں میں سے بڑی بیماری دل کا مرض ہے جس کا اس ہسپتال میں علاج ہی ممکن نہیں،جیل میں صحت بگڑ سکتی ہے،علاج کیلئے سزا معطلی کی استدعا ہے۔

جسٹس محسن اخترکیانی نے ریمارکس دیئے اسکا مطلب ہے آپ مشروط طور پر سزا معطلی چاہتے ہیں۔ اگر ہسپتال کی رپورٹ آنا باقی ہے تو یقینا آپ اس کی روشنی میں باقی دلائل دینا چاہیں گے۔

جسٹس عامر فاروق بولے چار مختلف بورڈز کی رپورٹ ریکارڈ پر آچکی ہیں۔ ایک میڈیکل رپورٹ میں کچھ اور لکھا گیا ہے ، دوسری میں کچھ اورمیڈیکل رپورٹس میں درج دو مختلف ٹرمینالوجیز پر عدالت کی معاونت کریں۔

۔سابق وزیراعظم کے وکیل کاکہن اتھا سزائے موت اور عمر قید کے ملزمان کو بھی ہارڈشپ کے تحت ضمانت ملی ۔ جسٹس محسن اخترکیانی نے ریمارکس۔دیئے نواز شریف کو جو بھی کنڈیشن ہوگی وہ ڈاکٹرز بہتر بتا سکتے ہیں۔

عدالت نے پنجاب حکومت کے نمائندے سے استفسارکیا جناح یسپتال میں جو ٹیسٹ جاری ہیں ان کی رپورٹ کب تک آجائیں گی؟ جس پر نمائندے نے جواب دیا ابھی حتمی طور پر کچھ نہیں کہہ سکتا رپورٹس کب آئیں گی۔

عدالت نے نواز شریف کی جناح ہسپتال کی نئی میڈیکل رپورٹ طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت 20فروری تک جبکہ سابق وزیر اعظم کی بریت کیخلاف نیب کی اپیل پر سماعت 2اپریل تک ملتوی کردی۔

Leave a Reply