Ex Prime-minister Nawaz Sharif Medical Checkup at services hospital Lahore

نواز شریف کا مریم کے لندن آنے تک آپریشن نہ کرانے کا اعلان،حکومت اجازت دے،شہباز شریف

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

لندن ،لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک ،جنرل رپورٹر) سابق وزیراعظم نواز شریف نے اپنی

سرجری مریم نواز کی لندن آمد سے مشروط کر دی، ان کے ذاتی معالج ڈاکٹر

عدنان کا کہنا ہے کہ کارڈیک انٹروینشن نوازشریف کی زندگی موت کا مسئلہ ہے،

مریم نواز کا لندن موجود ہونا انتہائی ضروری ہے۔ نوازشریف نے کارنری

انٹروینشن کی اپائنٹمنٹ موخر کر دی، ڈاکٹر عدنان کہتے ہیں کہ ڈاکٹرز کی ہدایت

کے باوجود میاں نوازشریف نے آپریشن سے انکار کیا، نوازشریف کا موقف ہے کہ

مریم لندن آ جائیں تو آپریشن کراؤں گا۔ڈاکٹر عدنان نے مزید کہا کہ کارڈیک

انٹروینشن میں تاخیر نوازشریف کی صحت کیلئے نقصان دہ ہو سکتی ہے، ان کی

سرجری 30 جنوری کو ہونا تھی تاہم نواز شریف کی خواہش تھی مریم نواز ہسپتال

میں ان کے پاس ہوں۔ دوسری طرف شہباز شریف نے مریم نواز کو والد کے پاس

جانے کی اجازت دینے کا مطالبہ کر دیا۔ انہوں نے کہا زندگی کے مشکل ترین وقت

میں مریم نواز سابق وزیراعظم نوازشریف کیلئے غم بانٹنے کا باعث بنیں، انہیں

والد کی دیکھ بھال کیلئے آنے کی اجازت نہ دینا افسوسناک ہے۔مسلم لیگ ن کے

صدر شہباز شریف نے کہا ہے کہ نواز شریف ابھی تندرست نہیں اور ان کی صحت

غیر مستحکم ہے، مریم نواز کے پاس نہ ہونے پر ماہر امراض قلب کو دوبار

کارڈیک کیتھی ٹرائزیشن کا طے شدہ عمل موخر کرنا پڑا۔اپوزیشن لیڈر شہباز

شریف کا مزید کہنا تھا کہ عارضہ قلب کی صورتحال سے متعلق جامع عمل لندن

کے رائل برومپٹن ہسپتال میں مرتب ہوا، معالجین نے دل کی شریانوں، خون کے

بہاؤ میں رکاوٹیں، دل کے بڑے حصے کے شدید متاثر ہونے کا انکشاف کیا۔شہباز

شریف نے کہا کہ جتنا وقت گزر رہا ہے، اتنے ہی طبی عمل کے لئے گنجائش کم

ہو رہی ہے، متعدد جان لیوا بیماریوں کے لاحق ہونے سے نواز شریف کی صحت

کی صورتحال نازک ہے، ایسے وقت میں مریم نواز کو والد کے پاس ہونا چاہیے،

انہیں لندن آنے کی اجازت دی جائے۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply