سب جماعتوں کا مؤقف

نوازشریف کے حق میں بڑی گواہی عدلیہ کے اندر سے آئی ہے، مریم نواز

Spread the love

نوازشریف کے حق میں

اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن نیوز) پاکستان مسلم لیگ ن کی رہنما مریم نواز نے کہا ہے کہ طاقت کا

غلط استعمال ہوا، وہی سازشی آج بھی موجود ہیں، نواز شریف کے حق میں بڑی گواہی عدلیہ کے اندر

سے آئی ہے، بھروسہ تھا ایک دن سچ ضرور سامنے آئے گا، ظالم بے نقاب ہونے پر خدا کے شکر

گزار ہیں، ارشد ملک نے اپنی زندگی میں نواز شریف کے حق میں گواہی دی، جج ارشد ملک کے

معاملے کو دبایا گیا، منصف کو ہی انصاف نہ ملے تو آپ اور مجھے انصاف کی فراہمی دور کی بات

ہے، پرویز مشرف کی سزائے موت ختم کر دی گئی، عمران خان نے اپنی نااہلی سے پاکستان کو تباہی

کے دہانے پر کھڑا کر دیا۔ مریم نواز نے کہا کہ نواز شریف اور مجھے پہلے دن سے اﷲ کی ذات پر

پورا بھروسہ تھا کہ ایک دن سچ قوم کے سامنے آئے گا،پورا بھروسہ تھا کہ دنیا کو سچ پتہ چلے گا

لیکن یہ اتنی جلدی سامنے آئے گا اس کا یقین نہیں تھا، یہ وہی جعلی حکومت نے جس نے طاقت کا

غلط استعمال کیا،وہی سازشی آج بھی موجود ہیں، انہی کی حکومت میں نواز شریف کے حق میں

تیسری بڑی گواہی عدالت کے اندر سے آئی،ہمیں یقین تھا کہ ظالم کے دن گنے ہوئے ہوتے ہیں اور

پکڑ بہت سخت ہوتی ہے،حکومت میں رہتے ہوئے بھی یہ شکنجے میں آ جائیں گے اسکا اندازہ ہمیں

نہیں تھا، اﷲ کا شکر ادا کرتے ہیں جس نے نواز شریف کو سزا دی جج ارشد ملک مرحوم نے اپنے

دور ملازمت میں ہی نواز شریف کے حق میں گواہی دی، جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے بھی

ملازمت کے دوران نواز شریف کے حق میں گواہی دی کہ نواز شریف کے خلاف دھونس کے ذریعے

فیصلے کرائے گئے، وہ شخص خود ان کے پاس چل کر آیا اور کہا کہ نواز شریف کیس کا فیصلہ

کرنے والے بینچ میں نہ بیٹھیں، نواز شریف کو ضمانت نہیں دینی اس کے بعد گلگت بلتستان کے

جسٹس کی بھی گواہی آ گئی،چیف جسٹس پاکستان نے ان کے سامنے فون پر کہا کہ نواز شریف اور

مریم نواز کو الیکشن سے پہلے ضمانت نہیں ملنی چاہیے، جسٹس(ر) رانا شمیم نے جب چیف جسٹس

پاکستان ثاقب نثار سے پوچھا کہ آپ ایسا کیوں کر رہے ہیں تو انہوں نے کہا کہ آپ ایسا سمجھیں کہ

آپ نے یہ بات سنی ہی نہیں،میں تاریخ کی سب سے بڑی ناانصافی کرنے جا رہا ہوں۔ مریم نواز نے

کہا کہ نواز شریف کو پہلے ہی گواہی پر انصاف مل جانا چاہیے تھا،شوکت صدیقی یا جنرل فیض حمید

کو عدالت بلا لیتے بلکہ آپ نے معزز جج کو ہی نوکری سے فارغ کر دیا، آج بھی وہ اپنے مقدمے

بھگت رہا ہے، جب عدالت کے منصف کو انصاف نہیں ملا تو مجھے اور عوام کو انصاف ملنا تو دور

کی بات ہے۔۔ انہوں نے کہا کہ جسٹس رانا شمیم کے حوالے سے خبر سامنے لانے پر انصار عباسی

سمیت میڈیا گروپ کو عدالت نے نوٹس بھجوایابلکہ سب سے پہلا نوٹس تو سابق چیف جسٹس ثاقب نثار

کو ملنا چاہیے تھا، یہ بات واضح ہے کہ ثاقب نثار نے ظلم کیا جب ہم پر الزام لگا تو ہم عدالتوں میں

پیش ہوئے کیونکہ ہم بے قصور تھے جبکہ ثاقب نثار کہتے ہیں مجھے کیا پڑی ہے کہ میں عدالتوں

کے چکر لگاؤں۔ انہوں نے کہا کہ میں جسٹس رانا شمیم کی گواہی پر بات نہیں کرتی کیونکہ اس کا

فیصلہ ہونا ابھی باقی ہے، جن چیزوں سے ثابت ہو چکا کہ ثاقب نثار قانون، آئین اور عوام کے مجرم

ہیں جو پھرتیاں انہوں نے اپنے چیف جسٹس ہوتے وقت دکھائی تھیں اس سے صاف ظاہر ہوتا تھا کہ

وہ کسی سازش کا حصہ ہیں، اس ایجنڈے کی تکمیل ان کی ذمہ داری تھی، انہوں نے چن چن کرمسلم

لیگ نون کے الیکٹیبل کے خلاف سوموٹو ایکشن لئے اور ان پر توہین عدالت لگائی۔ انہوں نے کہا کہ

نواز شریف نے ملک کی خدمت کی، پاکستانی عوام کے علاج کیلئے ادارہ بنایا، پہلے لوگ علاج

کیلئے بیرون ملک جاتے تھے، پاکستان میں عالمی سطح کا ادارہ بنایا لیکن ثاقب نثار نے عوام سے یہ

سہولت بھی چھین لی، ثاقب نثار کی چارج شیٹ یہاں ختم نہیں ہوتی، انہوں نے عمران نیازی کو صادق

اور امین کا لقب دلوایا۔ مریم نواز نے کہا کہ موجودہ صورتحال کا صرف ایک ہی حل ہے کہ شفاف و

آزادانہ انتخابات کرائے جائیں، عوام کی آواز کو بندباندھ کر نہ دبائیں، ان ہاؤس تبدیلی جن کی وجہ

سے ہوتی ہے ہم ان کی مدد نہیں لینا چاہتے ، اگلی حکومت کا فیصلہ پاکستان کی عوام کریں گے۔

نوازشریف کے حق میں

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply