naeem ul haq PTI Leader 98

عمران خان کے دیرینہ ساتھی، مشیرسیاسی امور نعیم الحق انتقال کر گئے

کراچی (جتن آن لائن سٹاف رپورٹر) نعیم الحق انتقال

وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے سیاسی امور، دیرینہ ساتھی اور تحریک انصاف کے بانی رہنما نعیم الحق طویل علالت کے بعد کراچی کے نجی ہسپتال میں انتقال کر گئے۔ مزید پڑھیں

ہفتہ کے روز آغا خان ہسپتال میں خالق حقیقی سے جا ملے

تفصیلات کے مطابق کینسر کے مرض میں مبتلاء تحریک انصاف کے سینئر رہنماء اور وزیر اعظم کے معا ون خصوصی برائے سیاسی امور نعیم الحق ہفتہ کے روز 70 برس کی عمر میں کراچی کے نجی ہسپتال میں انتقال کر گئے۔ نعیم الحق کی طبیعت جمعہ کے روزاچانک بگڑ گئی تھی جس کے بعد انہیں اسلام آباد سے کراچی کے آغا خان ہسپتال منتقل کیا گیا تھا۔ ہفتہ کے روز طبیعت مزید خراب ہونے پر نعیم الحق کو آئی سی یو میں شفٹ کیا گیا تھا لیکن وہ جان کی بازی ہار گئے۔ نعیم الحق کا شمار عمران خان کے قریبی ساتھیوں میں ہوتا تھا، انہوں نے عمران خان کیساتھ مل کر تحریک انصاف کیلئے بھی بہت خدمات سر انجام دی تھیں جبکہ وہ پاکستان تحریک انصاف کے بانی اراکین میں تھے اور پی ٹی آئی میں مختلف عہدوں پر بھی کام کر چکے تھے۔ وزیراعظم عمران خان نے رواں ماہ 9 فروری کو کراچی کے دورے کے دوران نعیم الحق کی عیادت بھی کی تھی۔

کینسر کیساتھ شیروں کی طرح لڑے، ہمیشہ یاد رکھوں گا، فواد چوہدری

نعیم الحق کی وفات کی تصدیق کرتے ہوئے وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر بتایا عزیز دوست، بڑے بھائی اور ساتھی کینسر سے شیروں کی طرح لڑے، انہیں ہمیشہ یاد رکھوں گا، اللہ انہیں جنت میں گھر دے۔ ان کے انتقال کی تصدیق گورنر سندھ نے بھی کی اور گہرے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اہلخانہ سے تعزیت کی اور دعا کی کہ اللہ تعالیٰ مرحوم کو جوار رحمت میں جگہ اور لواحقین کو صبر جمیل عطا فرمائے۔

نعیم الحق کے انتقال سے پیدا ہونیوالا خلاء آسانی سے پُر نہیں ہوگا، فردوس عاشق

وزیراعظم عمران خان کی معاون خصوصی اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا نعیم الحق عمران خان کے دکھ، سکھ کے ساتھی رہے، نعیم الحق کینسر جیسے موذی مرض کے ہاتھوں شکست کھا گئے۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا نعیم الحق کے انتقال پرگہرے دکھ ہوا۔ وہ وزیراعظم عمران خان کے دیرینہ ساتھی اور پارٹی کا عظیم اثاثہ تھے،ان کے انتقال سے پیدا ہونیوالا خلا آسانی سے پر نہیں ہو گا، انہوں نے بیماری کا استقامت اور حوصلے سے مقابلہ کیا۔ اللہ تعالیٰ ان کو جوار رحمت میں جگہ عطا فرمائے، لواحقین کوصبر جمیل دے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں