ishfaq ahmad

معروف افسانہ نگار، نثر نگار و مصنف اشفاق احمد کی آج 16 ویں برسی

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

لاہور( جے ٹی این آن لائن شوبز نیوز) نثر نگار مصنف اشفاق احمد

معروف افسانہ نگار، نثر نگار و مصنف اشفاق احمد کی 16ویں برسی آج پیر کے

روز منائی جارہی ہے۔ اس مناسبت سے ملک بھر میں ادبی حلقوں کی جانب سے

تعزیتی ریفرنسز، سیمینارز اور دیگر تقریبات کا اہتمام کرکے اشفاق احمد کی ادبی

خدمات کو خراج عقیدت پیش کیا جارہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : جابر پٹھان کا انگریزی میں اردو پڑھنے والا شفیق و نفیس فرزند
————————————————————————————————–

اپنے میٹھے الفاظ سے عوام کی اصلاح کرنیوالی نابغہ روزگار شخصیت اشفاق

احمد ایک دانشور، ادیب، ڈرامہ نویس، تجزیہ نگار، سفر نامہ نگار، براڈ کاسٹر

ہونے کیساتھ ساتھ صوفی منش انسان بھی تھے۔

” گڈریا “ لکھا تو افسانے کو دوام دیا خود شہرت کی بلندیوں پر پہنچ گئے

آپ 22 اگست 1925ء کو بھارت کے شہر فیروز پور کے ایک پٹھان گھرانے میں پیدا ہوئے۔ اشفاق احمد نے گورنمنٹ کالج لاہور سے ایم اے اردو کیا پھر اٹلی کی روم یونیورسٹی سے اطالوی اور فرانس کی نوبلے گرے یونیورسٹی سے فرانسیسی زبان کا ڈپلومہ حاصل کیا اور نیویارک یونیورسٹی سے براڈ کاسٹنگ کی خصوصی تربیت حاصل کی۔ اردو ادب میں اشفاق احمد جیسی کہانی لکھنے کا اسلوب کسی اور کے پاس دکھائی نہیں دیتا۔یہی وجہ سے کہ جب 1953ء میں انہوں نے افسانہ ” گڈریا “ لکھا تو افسانے کو دوام دینے کیساتھ ساتھ خود بھی شہرت کی بلندیوں پر پہنچ گئے۔

عوام کو انکا تلقین شاہ کا مخصوص لہجہ و دھیما پن آج بھی یاد ہے

” ایک محبت سو افسانے “ اور ” اجلے پھول “ ان کے ابتدائی افسانوں میں شامل ہیں۔ علاوہ ازیں ان کی مشہور تصانیف میں ” من چلے کا سودا “، ”سفر در سفر“، ” کھیل کہانی“ اور دیگر شامل ہیں۔ عوام میں ریڈیو پاکستان میں ان تلقین شاہ کا مخصوص لہجہ اور دھیما پن آج بھی یاد کیا جاتا ہے۔ اشفاق احمد کا شمار سعادت حسن منٹو اور کرشن چندر کے بعد ادبی افق پر نمایاں رہنے والے افسانہ نگاروں میں ہوتا ہے، قدرت اللہ شہاب اور ممتاز مفتی کے ادبی قبیلے سے تعلق رکھنے والے اشفاق احمد کو پرائیڈ آف پرفارمنس اور ستارہ امتیاز سے بھی نوازا گیا۔

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

نثر نگار مصنف اشفاق احمد

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply