نارووال سپورٹس سٹی پراجیکٹ میں بے ضابطگیوں کے الزام ،نیب نے احسن اقبال کو گرفتارکرلیا مفتاح اسماعیل کی ضمانت منظور

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اسلام آباد/راولپنڈی/لاہور(جنرل رپورٹر ) نیب راولپنڈی نے نارووال سپورٹس سٹی پراجیکٹ میں بے ضابطگیوں کے الزام میں مسلم لیگ(

ن) کے رہنما احسن اقبال کو گرفتار کر لیا ۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان مسلم لیگ(ن) کے سیکرٹری جنرل احسن اقبال کو قومی احتساب

بیورو راولپنڈی، اسلام آبادکی جانب سے نارووال سپورٹس سٹی ریفرنس میں گرفتار کرلیا گیا۔ نیب کے مطابق احسن اقبال کا آج منگل کو

میڈیکل کرنے کے بعد احتساب عدالت میں ریمانڈ کیلئے پیش کیا جائے گا۔قبل ازیں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ

فارن فنڈنگ کیس سے عوامی مینڈیٹ چھینا گیا، تحریک انصاف فارن فنڈنگ کیس کا جواب دے، نیب میرے خلاف نارووال سپورٹس سٹی

کیس کو عوام کے سامنے رکھے، اڑھائی ارب کے منصوبے میں6ارب کی کرپشن کہاں سے آ گئی۔انہوں نے کہا کہ نیب سے کہتا ہوں کہ

نارووال سپورٹس سٹی کا منصوبہ عوام کے سامنے لائیں جبکہ جھوٹ بول کر مسلم لیگ (ن) کی کامیابیوں کو دھندلا کیا گیا، نیب صرف

کردار کشی کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فارن فنڈنگ کیس کا شفاف ٹرائل کیوں نہیں ہو رہا ہے،15ماہ میں12لاکھ بے روزگار ہو چکے ہیں۔

احسن اقبال نے مزید کہا کہ حکومت کی ناکامی پر اٹھنے والی ہر ٓاواز کو خاموش کرایا جا رہا ہے۔احسن اقبال کی گرفتاری پر ردعمل دیتے

ہوئے پاکستان مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ احسن اقبال کی گرفتاری نیب نیازی گٹھ جوڑ کا شاہکار ہے، احسن

اقبال کو خاموش رہنے کاباربار پیغام دیا جاتا رہا۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن)گرفتاریوں سے ڈرنے اور جھکنے والی جماعت نہیں،مسلم

لیگ(ن ) مضبوطی کے ساتھ کھڑی ہے۔چیئرمین نیب کو بی آرٹی کا منصوبہ نظر نہیں آتا۔عمران خا ن پر آرٹیکل 6 لگنا چاہیے،کیونکہ یہ

فارن فنڈنگ میں ملوث ہے۔انہوں نے کہا کہ عمران خان کے مذہبی کارڈ کے استعمال پر احسن اقبال کو گولی لگی ۔سی پیک کو عالمی

گداگروں نے بند کرکے رکھ دیا ہے۔صنعتیں بند ہورہی ہیں، لوگ بے روزگار ہورہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ نارووال اسپورٹس سٹی کمپلیکس

کا منصوبہ پیپلزپارٹی کے دور میں منظور ہوا تھا،اس کو احسن اقبال نے منظور نہیں کیا تھا۔ یہ مرا ہوا پراجیکٹ تھا جس میں ن لیگ

اور احسن اقبال نے جان ڈالی۔علاوہ ازیں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال کے صاحبزادت احمد اقبال نے میڈیا سے گفتگو کرتے

ہوئتے کہا کہنیب پر دباؤ ڈالا جارہاتھاکہ احسن اقبال ،مریم اورنگزیب اور خواجہ آصف کو کیوں نہیں پکڑا جارہا،خان صاحب کمزورآدمی

ہیں وہ سب مخالف آوازوں کو پابند سلاسل کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ احسن اقبال کی ملک کیلئے خدمت کی تو ان کے سیاسی مخالفین

بھی تعریف کرتے ہیں ،ان کا دامن صاف ہے کیونکہ ہمارے خاندان کے اثاثوں میں کمی واقع ہوئی ۔ انہوں نے کہا کہ احسن اقبال نے پی ایس

ڈی پی پروگرام کی سربراہی کی ،60ارب ڈالر سی پیک منصوبوں کو چلایا لیکن ایک پائی کرپشن ثابت نہ ہو سکی ۔انہوں نے کہا کہ یہ

عجیب مذاق شروع ہو گیا کہ جو ملک کی خدمت کرے اسے گرفتار کرلیا جاتاہے ۔ اپوزیشن کے حوصلے پست کرنے کیلئے منفی ہتھکنڈے

استعمال کئے جارہے ہیں جو آوازیں خان صاحب کو تنگ کررہی ہیں اس میں اضافہ ہوگا۔انہوں نے کہاکہ نارووال سپورٹس سٹی پیپلزپارٹی

نے شروع کیا ،90فیصد منصوبہ مکمل ہے لیکن ایک سال سے بند ہے اچھے کام کو تباہ کیاجارہاہے۔احسن اقبال مدینہ انسٹی ٹیوٹ کے سینئر

ایڈوائزر تھے ،انہیں اعزازی اقامہ دیاگیا اور وزیر بنتے ہی انہوں نے اقامہ سے علیحدگی اختیار کرلی تھی۔اس موقع پرمسلم لیگ (ن) پنجاب

ڈپٹی جنرل سیکرٹری عطا اﷲ تارڑ نے کہا کہ احسن اقبال کی والدہ نے صاف ستھری اور اچھی سیاست کی ،نیک نامی سے خاندان جانا جاتا

ہے ،احسن اقبال کو کرپشن پر نہیں اختیارات کے ناجائز استعمال پر گرفتار کیاگیا۔ انہوں نے کہاکہ حکومت بدترین فسطائیت کی سیاست

کررہی ہے ،کسی کو بھی نیب نیازی گٹھ جوڑ پر شک نہیں رہا ۔ انہوں نے کہا کہ ایک دھیلے کی کرپشن ثابت ہو جائے تو احسن اقبال

اور ان کا خاندان سیاست چھوڑ دے گا ۔ انہوں نے کہاکہ احسن اقبال کی گرفتاری کی وجہ سے 25دسمبر کے پروگرام معطل نہیں کر رہے

اور یہ طے شدہ شیڈول کے مطابق ہوں گے ۔ انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ شہبازشریف لم بہ لمحہ رابطے میں ہیں اور وہ جلد

واپس آئیں گے ۔نوازشریف کی طبیعت ٹھیک نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ احسن اقبال کے مقدمے کا بھرپور مقابلہ کریں گے ۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے ایل این جی کیس میں مفتاح اسماعیل کی درخواست ضمانت منظور کر لی، ن لیگی رہنما کو ایک کروڑ روپے

کے مچلکے جمع کروانے کا حکم دیا گیا ہے۔ایل این جی کیس میں زیر حراست مفتاح اسماعیل کی درخواست ضمانت سے متعلق اسلام آباد

ہائیکورٹ میں سماعت ہوئی، نیب کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا کہ مفتاح اسماعیل کے بیرون ملک فرار ہونے کا خدشہ ہے، گواہوں کو

بھی دھمکی دی جا رہی ہے۔چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ نے ریمارکس دیئے کہ مفتاح اسماعیل کو پابند کرتے ہیں کہ رہائی کے بعد

روزانہ تفتیشی کو فون کریں گے، بعد ازاں عدالت نے مفتاح اسماعیل کی ضمانت منظور کرتے ہوئے رہا کرنے کا حکم دے دیا۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply