نئی قومی تعلیمی پالیسی کا مسودہ تیار، 23 مارچ کو جاری ہوگا

نئی قومی تعلیمی پالیسی کا مسودہ تیار، 23 مارچ کو جاری ہوگا

Spread the love

لاہور(جے ٹی این آن لائن ایجوکیشن نیوز) نئی قومی تعلیمی پالیسی

وفاقی وزارت تعلیم سکولوں، کالجوں، یونیورسٹیوں اور ٹیکنیکل اداروں کیلئے نئی

قومی تعلیمی پالیسی 23 مارچ کو جاری کرے گی، نئی قومی تعلیمی پالیسی کے

ابتدائی مسودے کی تیاری کیلئے ملک بھر سے ماہر ین تعلیم اور ماہرین مضامین

سے آراء لی گئی ہیں، وزارت تعلیم کے تحت نئی قومی تعلیمی پالیسی کا نفاذ رواں

سال سے ہی کیا جائےگا، نئی قومی تعلیمی پالیسی میں ارلی چائلڈ ہڈ ایجوکیشن سے

لے کر یونیورسٹی تک کی تعلیم کا احاطہ کیا گیا ہے، سکولز کی سطح پر ووکیشنل

اینڈ ٹیکنیکل ایجوکیشن پر بھی پالیسی گائیڈ لائنز شامل ہیں۔ کالجز اور یونیورسٹییز

میں بھی یکساں تعلیمی پالیسی کا نفاذ کیا جائےگا۔

=–= ملک فوری تعلیمی ایمرجنسی کا نفاذ ناگزیر، چوہدری مونس الہٰی

رہنما مسلم لیگ ق چوہدری مونس الہیٰ نے ملک میں فوری تعلیمی ایمرجنسی نافذ

کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ تعلیمی ادارے پھر بند ہو گئے ہیں جبکہ

بچوں کے تعلیمی حرج پر صرف سرکاری زبانی جمع خرچ کیا جارہا ہے۔ طلبہ

اور اساتذہ کیلئے فوری ویکسی نیشن پروگرام اور فری انٹرنیٹ کا بندوبست کیا

جائے، نہ صرف نیا نصاب بلکہ نیا تعلیمی نظام بھی دینا ہو گا۔

=–= تعلیمی اداروں میں شفافیت و میرٹ حکومتی ترجیح، چوہدری محمد سرور

گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا ہے بچیوں کی کم عمر میں شادی کے

جرائم میں ملوث افراد کسی معافی کے مستحق نہیں ہوسکتے ان کے خلاف آئین و

قانون کے مطابق سخت سے سخت ایکشن لیا جائے گا، حکومت تعلیمی اداروں میں

شفافیت اور میرٹ کو ہر صورت یقینی بنا رہی ہے۔ گورنر ہاﺅس لاہور میں پی ٹی

آئی کی خاتون ایم پی اے اعظمی کاردار کی قیادت میں وفد سے ملاقات میں ناوال

حیدر نے انہیں بچوں کے حقوق اور درپیش مسائل کے حوالے سے بر یفنگ دی۔

گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا اس میں کوئی شک نہیں تعلیم سمیت ہر

شعبے میں قومی کی بیٹیاں لڑکوں کے مقابلے میں آگے جا رہی ہے۔ تحر یک

انصاف کی حکومت نے تعلیم کے شعبے میں جدت لانے کے لیے مختلف پروگرام

شروع کیے ہیں اور یونیورسٹیز میں پہلی بار وائس چانسلرز سمیت تمام عہدوں پر

بغیر کسی سفارش کے میرٹ پر تقرریاں کی ہیں۔ کیونکہ حکومت کو اس بات کا

ادراک ہے کہ یونیورسٹیز میں سفارش پر لوگوں کو بھر تی کرنے سے تعلیم کا

نظام تباہ ہوتا ہے۔

=–= یہ بھی پڑھیں: شعبہ تعلیم میں تفریق ختم کرنا ناگزیر، صدر مملکت
=قارئین=کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

نئی قومی تعلیمی پالیسی

Leave a Reply