نئی دہلی کی اسلام آباد کے ہاتھوں سبکی جنگ کا پیش خیمہ ثابت ہو سکتی ہے ،امریکی ماہرین

Spread the love

واشنگٹن(انٹر نیشنل ڈیسک) امریکی ماہرین نے خبردار کیا ہے بھارت کی جانب

سے پاکستانی طیارہ مار گرانے اور بالاکوٹ میں دہشتگردوں کے ٹھکانوں کو

نشانہ بنانے کے ثبوت پیش کرنے میں ناکامی کے سنگین سیاسی اثرات مرتب ہو

سکتے ہیں، کچھ ٹھوس شواہد ہیں جو بھارت کے 2 بنیا دی دعوں کی نفی کرتے

ہیں جو بھارت نے پاکستان کیساتھ محاذ آرائی کے حوالے سے کیے تھے، ا مر

یکی بیورو کریسی میں پاکستان کے متعدد دشمن ہیں اور شاید(کیپیٹل ہل) میں اور

زیادہ ہیں اور میرے خیال میں اگر پاکستان ایف 16 سے محروم ہوتا تو امریکی

بخوشی اس خبر کو لیک کر دیتے۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق

امریکی ماہر مائیکل کوگلمین جوواشنگٹن کے وڈ رو ولسن سینٹر سے منسلک ہیں

جنہوںنے 2019کی پاک بھارت صورتحال پر ایک دستاویز جاری کی تھی نے اپنے

تعارفی نوٹ میں واشنگٹن اور دنیا کو خبردار کیا کہ جوہری صلاحیت کے حامل

دونوں ممالک نے بحران کے دوران کشیدگی بڑھانے کے حوالے سے اپنے عزائم

کا اظہار کردیا۔کوگلمین نے یہ بھی خبردار کیا کہ بھارت کی جانب سے اپنے

دعوے ثابت کرنے میں ناکامی کے سنگین اثرات مرتب ہو سکتے ہیں،امریکی ماہر

نے یہ انکشاف ایک ایسے مو قع پر کیا جب ایک دن قبل ہی وزیر خارجہ شاہ

محمود قریشی نے انکشاف کیا کہ بھارت دوبارہ پاکستان میں ایک اور جارحیت کی

منصوبہ بندی کر رہا ہے۔کوگلمین نے اس کے ساتھ ساتھ کرسٹوفر کیری کی ٹوئٹ

کی جانب بھی اشارہ کیا جو نیویارک کی اسٹیٹ یونیورسٹی میں پولیٹیکل سائنس

کے اسسٹنٹ پروفیسر ہیں انہوں نے لکھا کہ کچھ لوگ کہتے ہیں امریکہ جانتا ہے

وہ ایک ایف سولہ سے محروم ہو گیا ہے لیکن وہ اپنے تجارتی فا ئدے اور فخر کے

سبب یہ تسلیم کرنے سے انکاری ہے،لیکن ایسا نہیں اگر پاکستان ایف 16طیارے

سے محروم ہوتا تو امریکی خبر لیک کرنے میں زدہ برابر بھی دیر نہ کرتے ۔

کوگلمین نے اس پر ٹوئٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا میں اس سے اتفاق کرتا ہوں۔

Leave a Reply