میانمار میں فوجی بغاوت کیخلاف احتجاج جاری، مظاہرین فورسز آمنے سامنے

میانمار میں فوجی بغاوت کیخلاف احتجاج جاری، مظاہرین فورسز آمنے سامنے

Spread the love

ینگون (جے ٹی این آن لائن انٹرنیشنل نیوز) میانمار فوجی بغاوت

میانمار میں فوجی بغاوت کیخلاف احتجاج جاری ہے، مظاہرین اور سکیورٹی

فورسز آمنے سامنے آ گئے ہیں، بدھ کے روز بھی میانمار کی سکیورٹی فورسز

نے ینگون، منڈالے اور دیگر شہروں میں مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو

گیس کے شیل برسائے اور اور ربڑ کی گولیوں سے فائرنگ کی۔ کئی مقامات پر

باقاعدہ گولیاں چلائے جانے کی بھی اطلاعات ہیں۔ اس فائرنگ سے مزید 18افراد

کی ہلاکت کی اطلاع ہے، سیاسی کارکنوں نے حفاطتی اقدامات سے خود کو بچایا،

مظاہرین نے جھنڈے اٹھا کر آمریت کیخلاف نعرے بازی بھی کی۔

==-== یہ بھی پڑھیں : Military coup, what is the problem of Myanmar

تفصیلات کے مطابق اب تک مظاہروں میں ملٹری فورسز کی فائرنگ سے 38

افراد ہلاک ہو چکے ہیں، گذشتہ ہفتے کے دوران سکیورٹی فورسز نے ایک ہزار

کے قریب مظاہرین کو گرفتار کر لیا جبکہ اتوار کو ہونیوالے مظاہروں میں 30

سے زائد افراد کو فائرنگ کرکے زخمی کر دیا گیا تھا، میانمار میں ریاستی تشدد

کے علاوہ آزادی اظہار رائے پر بھی پابندیاں عائد ہیں، فوجی حکمرانوں کے

احکامات پر عوامی مظٓاہروں کی کوریج کرنیوالے 8 صحافیوں کو حراست میں لیا

جا چکا ہے، امریکہ اور نیوزی لینڈ سمیت عالمی برادری کی جانب سے میانمار

میں جمہوری حکومت کے خاتمے کی شدید مذمت جاری ہے، جوبائیڈن انتظامیہ

نے گذشتہ روز اقتدار پر قابض میانمار کے فوجی حکمرانوں پر مزید پابندیاں عائد

کرنے کی وارننگ دی تھی۔ یکم فروری کو فوج کی طرف سے اقتدار پر قبضے

کے بعد سے میانمار میں جمہوریت کے حق میں مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے۔

= قارئین =-: خبر اچھی لگے تو شیئر کریں، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

میانمار فوجی بغاوت

Leave a Reply