modi indian prime minister

مودی آر ایس ایف کی ’’پریس فریڈم پریڈیٹرز‘‘فہرست میں شامل

Spread the love

مودی آر ایس ایف

نیویارک (جے ٹی این آن لائن نیوز) عالمی میڈیا پر نگاہ رکھنے والی تنظیم رپورٹرز سینز فرنٹیئرز

نے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کو اپنی 37ممالک کے سربراہوں کی اس فہرست میں ایک بار

پھر شامل کیا ہے جس میں ان پر پریس کی آزادی پر بڑے پیمانے پر کریک ڈاون کرنے کا الزام عائد

کیا گیا۔ واچ ڈاگ نے انہیں ‘پریس فریڈم پریڈیٹرز’ لسٹ میں رکھا ہے۔ مود ی کے علاوہ اس سال کی

فہرست میں شمالی کوریا کے کم جونگ ان، برازیل کے صدر جیر بولسنارواور روسی صدر ولادیمیر

پوتن شامل ہیں۔ سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان اور ہنگری کے وزیر اعظم وکٹر

اوربن اس فہرست میں شامل ہونیوالے نئے شامل تھے۔مودی 2014 میں اقتدار سنبھالنے کے بعد سے

ہی رپورٹرز سینز فرنٹیئرز کی ‘پریس فریڈم پریڈیٹرز’ گیلری میں شامل ہیں۔بھارت آر ایس ایف کے

2021 ورلڈ پریس فریڈم انڈیکس میں 180 ممالک میں سے 142 ویں نمبر پر ہے۔ آر ایس ایف دنیا کی

سب سے بڑی این جی او ہے جو میڈیا کی آزادی کے دفاع میں مہارت رکھتی ہے۔رپورٹرز سینز

فرنٹیئزز نے نشاندہی کی کہ اگر مودی کی زیرقیادت بھارتیہ جنتا پارٹی حکومت پر تنقید کی گئی تو

بھارت میں صحافی اپنی ملازمت سے محروم ہونے کا خطرہ مول لیتے ہیں۔ اس میں یہ بھی کہا گیا کہ

کس طرح کچھ میڈیا اداروں نے مودی کی ‘انتہائی تفرقہ انگیز، غلط اور توہین آمیز تقاریر’ کو نمایاں

کوریج دی۔ میڈیا واچ ڈاگ نے یہ بھی کہا کہ بھارت میں صحافیوں کو ملک سے غداری کے قانون

کے تحت قید کا خطرہ لاحق ہے اور ان کو آن لائن ٹرول کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔ جس سے صحافی ذہنی

تنا وکا شکار ہو سکتے ہیں۔رپورٹرز سینز فرنٹیئرز نے صحافی گوری لنکیش کے قتل اور رانا ایوب

اور برکھا دت کو بھی حکومت نواز ٹرولرز کی جانب سے سنگین نشانہ بنانے کے بارے میں بات

کی۔ بنگلہ دیش کی شیخ حسینہ اور ہانگ کانگ کی کیری لام وہ دو خواتین ہیں جن کی شناخت

‘پریڈیٹرز’ کے طور پر کی گئی ہے۔آر ایس ایف نے ‘پریس پریڈیٹرس’ کے لئے ایک طریقہ کار وضع

کیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ کس لائحہ عمل کے ذریعے یہ لوگ پریس کو نشانہ بناتے ہیں۔

مودی آر ایس ایف

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply