موجودہ ٹیکس نظام غیر منصفانہ،غریب آدمی پر اس کی برداشت سے زیادہ بوجھ ڈالا جاتا ہے،، عمران خان

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر ، مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعظم نے کہا ہے کہ ملک میں

ٹیکس کا موجودہ نظام غیر منصفانہ ہے جس میں غریب پر اسکی سکت سے زیادہ

ٹیکسوں کا بوجھ ڈالا جاتا ہے، ایف بی آر میں اصلاحات ناگزیر ہیں،ٹیکس نظام میں

اصلاحات اور ٹیکس بیس کو بڑھانا پی ٹی آئی منشور کا اہم جزو ہے۔ ٹیکس کا

موجودہ نظام اور اعداو شمار کسی صورت ملکی معیشت کو سپورٹ نہیں کرتے۔

منگل کو وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت ملک میں ریونیو جمع کرنے اور

ٹیکس بیس بڑھانے کے حوالے سے اعلیٰ سطحی اجلاس ہوا جس میں وزیرِ خزانہ

اسد عمر، وزیرِ مملکت برائے ریونیو حماد اظہر، معاون خصوصی نعیم الحق،

معاون خصوصی افتخار درانی، چئیرمین ایف بی آر، چئیرمین نادرا، سید جاوید،

عبداللہ یوسف، ڈاکٹر اکرام الحق، راشد خان، مسعود نقوی، عابد شعبان اور اشفاق

تولہ شریک ہوئے ۔ اجلاس میں ریونیو اور ٹیکس بیس بڑھانے، ٹیکس جمع کرنے

نظام کو جدید خطوط پر استوار کرنے، ٹیکنالوجی کو برؤے کار لانے اور ایف بی

آر میں اصلاحات کے ضمن میں مختلف تجاویز زیرِ غور کیا گیا وزیر اعظم نے

کہاکہ ملک میں ٹیکس کا موجودہ نظام غیر منصفانہ ہے جس میں غریب پر اسکی

سکت سے زیادہ ٹیکسز کا بوجھ ڈالا جاتا ہے۔ ٹیکس نظام میں اصلاحات اور ٹیکس

بیس کو بڑھانا پی ٹی آئی منشور کا اہم جزو ہے۔ ٹیکس کا موجودہ نظام اور اعداو

شمار کسی صورت ملکی معیشت کو سپورٹ نہیں کرتے۔ ملکی معیشت کی پائیدار

ترقی کے لئے ٹیکس کے نظام میں اصلاحات اور ٹیکس ادا نہ کرنے والوں کو

ٹیکس نیٹ میں لانا وقت کی اہم ضرورت ہے۔ضرورت اس امر کی ہے کہ ٹیکس

کے نظام پر ٹیکس گزاروں کا اعتماد بحال کیا جائے۔ اس ضمن میں ایف بی آر میں

اصلاحات ناگزیر ہیں۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply