منظور وسان اور چوہدری شوگر ملز چینی کی ذخیرہ اندوزی میں ملوث نکلے

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اسلام آ باد ( سٹاف رپورٹر ،آ ئی این پی ) قومی اسمبلی کو آ گاہ کیا گیا ہے کہ

جہانگیر ترین نے 20ہزار ٹن چینی67روپے فی کلو مہیا کرنے کا کہا جبکہ یو ٹیلٹی

سٹور نے جو ٹینڈر دیا اس کے مطابق چینی فی کلو81روپے میں مل رہی تھی،

ایک لاکھ ٹن چینی منظور وسان کے گودام سے نکلی اور 25ہزار ٹن چینی چوہدری

شوگر ملز کے گودام سے نکلی، ان کی شوگر ملیں ہیں،یہ مہنگی چینی دے رہے

ہیں ہیں اور زخیرہ اندوزی بھی کرتے ہیں اور الزام پی ٹی آئیحکومت کو دیتے ہیں،

اسلام آباد میں غیر قانونی کلینکس اور عطائیوں کی گرفتاری کے لئے قانون دستیا ب

نہیں ہے، ہیلتھ کئیر اتھارٹی کے قیام سے ان غیر قانونی کلینکس کو سیل کرنے

اورغیر قانونی پریکٹشنرز کے خلاف مزید کاروائی ہو گی، لوگوں نے 42کلومیٹر

کراچی سرکلر ریلوے کی زمین پر قبضہ کیا ہے،4کلومیٹر پر ساری جماعتیں بشمول

پاکستان تحریک انصاف اکٹھی ہو چکی ہیں،اس کو خالی نہ کرایا جائے، سند ھ

حکومت سے ملکر 6ماہ میں کراچی سرکلر ریلوے کو مکمل کریں گے اور ریلوے

چلائیں گے، اگست 2018سے دسمبر2019تک ریلوے کے 5بڑے حادثات ہوئے ان

میں 110 افراد ہلاک ہوئے اور 123زخمی ہوئے، گزشتہ حکومت میں آٹو مابائلز کا

صرف ایک پلانٹ لگایا گیا جبکہ ان 15ماہ میں1ارب ڈالر کی سرمایہ کاری آئی

ہے، گزشتہ سال2لاکھ 97ہزار سے زائد گاڑیاں فروخت ہوئیں، کراچی کے ساحل پر

ماہی گیروں اور نجی کشتی کے مالکان سے کوئی ٹیکس نہیں لیا جاتا ، لوگوں کی شکایت پر چھاپے کے دوران گودام سے کچھ ادویات ضبط کی گئی تھیں ان میں

55 غیر رجسٹرڈ ادویات تھیں،یہ کیس ایف آئی اے کو ریفر کردیا ہے، ایک کیس کی

ایف آئی آر درج ہو گئی ہے ، دوسرے کیس کی تحقیقات ہو رہی ہے، پولیس کی

کاروائی کے بعد لائنسس کی منسوخی کی کاورائی کی جائے گی ، حجاج کے پیسے
بلاسود بینکاری کے کھاتوں میں رکھے ہیں، ان کے فنڈز سے کوئی سود نہیں کمایا

گیا ۔ان خیالات کا اظہار وزیر ریلوے شیخ رشید، وزیر برائے بحری امور علی زیدی

، پارلیمانی سیکرٹری صنعت و پیداور عالیہ حمزہ ملک، پارلیمانی سیکرٹری صحت

ڈاکٹر نوشین حامد و دیگر نے وقفہ سوالات میں ارکان کے سوالوں کے جوابات دیتے

ہوئے کیا۔بدھ کو قومی اسمبلی کا اجلاس سپیکر اسد قیصر کی صدارت میں ہوا، وقفہ

سوالات کے دوران وزارت صحت نے آگاہ کیاکہ عطائیت کی عفریت کی بہتات ہے،

جس میں آبادی بڑھنے کی وجہ سے اضافہ ہو رہا ہے، دیہی علاقوں میں عطائیوں

کی کثیر تعداد موجود ہے، ہیلتھ کئیر کمیشن پنجاب اور خیبر پختونخوا میں مکمل فعال

ہے جس کی وجہ سے عطائی اسلام آباد منتقل ہو گئے ہیںاور غیر قانونی کلینکس

کھول لئے ہیں، ڈسٹرک ہیلتھ آفس میں دستیاب سپروائزری سٹاف کے ذریعے اس پر

قابو پانا اور کسی دستیاب قانون کے بغیر ان غیر قانونی کلینکس چلانے والوں کو

گرفتار کرنا مشکل ہے، اسلام آباد میں قائم کی جانے والی ہیلتھ کئیر اتھارٹی ان غیر

قانونی کلینکس کو سر بمہر کرنے نیز غیر قانونی پریکٹشنرز کے خلاف مزید کاروائی

کی پوزیشن میں ہو گی، پارلیمانی سیکرٹری ریلوے فرخ حبیب نے کہاکہ انگریز

کے دور کا بنا ہوا ریلوے کا نظام چل رہا ہے ، اس کو بہتر کرنے کی کوشش کر

رہے ہیں،سی پیک کے تحت ریلوے کا نیانظام آنے والا ہے، کراچی سے پشاور تک

ریلوے کی لائن ڈبل کی جائے گی اور اور اس پر باڑ لگائی جائے گی،انڈرپاسز اور

پل بنائے جائیں گے ، تاکہ پھاٹکوں پر حادثات کم کئے جائیں،ریلوے کا جو حادثہ ہوا

تھا ، تما م زمہ داران کے خلاف کاروائی کی جاچکی ہے،جن لوگوں کا جانی ضیاع

ہوا تھا ، ان کو معاوضہ دیا گیا ہے، سپریم کورٹ کا حکم ہے ہر صورت میں کے

سی آر چلائی جائے ، 2ارب ڈالر کا منصوبہ یہ سند ھ حکومت کا ہے، پی سی ون

اور فیزیبلٹی بھی انھوں نے بنائی ہے، کے یو ٹی سی میں 60فیصد حصہ ہمارا ہے

اور 40فیصد صوبہ سندھ کا حصہ ہے، وزیر اعلی سندھ سے کہا کہ آپ ہم سے

ہمارا حصہ بھی لے لیں اور چلائیں، وہ اس میں دلچسپی لے رہے ہیں، سپریم کورٹ

نے ہماری تجویز رد کردی، اس میں 24ریلوے کے کے کراس ہیں، سپریم کورٹ نے

کہا ہے کہ 6ماہ میں یہ اپنا کام مکمل کریں اور ریلوے چلائیں،

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •