ممتا کا علم ماں بننے پر ہوتا ہے، والدہ جہیز نہیں تعلیم کیلئے فکر مند رہتیں اور دین و دنیا

ممتا کا علم ماں بننے پر ہوتا ہے، والدہ جہیز نہیں تعلیم کیلئے فکر مند رہتیں اور دین و دنیا

Spread the love

لاہور، کراچی (جے ٹی این آن لائن شوبز نیوز) ممتا کا علم ماں

اداکارہ صوبیہ خا ن نے کہا ہے جب اولاد ہوتی ہے تو باپ ہو یا ماں ترجیحات بدل

جاتی ہیں، میری بیٹی میری کل کائنات ہے، پہلے مجھے ملبوسات کی فکر ہوا

کرتی تھی لیکن اب سب کچھ اپنی بیٹی کیلئے کرتی ہوں۔ ایک انٹر ویو میں اداکارہ

صوبیہ خان نے کہا کہ ممتا کس چیز کا نام ہے یہ ماں بننے کے بعد ہی پتہ چلتا

ہے، ماں خود دکھ برداشت کر لیتی ہے لیکن اولاد کو کوئی تکلیف نہیں پہنچنے

دیتی۔ اولاد کی نعمت کیا ہوتی ہے اسکی اہمیت کا اندازہ صرف ان لوگوں کو ہو

سکتا ہے جن کے پاس اولاد جیسی نعمت نہیں۔ میری خدا کی بارگاہ میں دعا ہے

تمام بے اولاد جوڑوں کو اپنی رحمت سے اولاد سے نوازے تاکہ انکی زندگی بھی

خوشیوں سے بھر جائے۔

=–= یاسر پہلی نظر میں ہی گرویدہ ہو گیا، مجھے تھوڑا وقت لگا، اقرا عزیز

پاکستان کی معروف اداکارہ اقراء عزیز نے کہا ہے وہ برنس روڈ پر ایک فلیٹ میں

رہتی تھی جہاں کا کچن چھوٹا سا تھا اور ہر کمرے میں باتھ روم بھی نہیں تھا لیکن

مڈل کلاس فیملی سے ہونے کے باوجود میری والدہ ایک شکر گزار خاتون ہیں۔

ایک انٹرویو میں اقراءعزیز نے کہا میری والدہ چاہتی تھیں انکی اولاد کو سب بہتر

سے بہتر ملے، وہ ہمیشہ یہ کہتی تھیں میں لڑکیوں کا جہیز جمع نہیں کرونگی بلکہ

میں انہیں پڑھاﺅں گی، میں یہ نہیں دیکھوں گی کہ انہوں نے اپنے سسرال کیا لے

کر جانا ہے۔ اپنی شادی سے متعلق اداکارہ نے بتایا یاسر کو مجھ سے پہلی نظر میں

ہی پیار ہو گیا تھا لیکن مجھے یاسر سے محبت کرنے میں تھوڑا وقت لگا۔ میری

یاسر سے پہلی ملاقات ٹورنٹو میں ہوئی جس کے بعد ہم دونوں نے ایک دوسرے

کیساتھ وقت گزارنا شروع کردیا۔

=–= دین و دنیا کے امتزاج سے ہم دنیا و آخرت سنوار سکتے ہیں، روبی انعم

سینئر اداکارہ روبی انعم نے کہا ہے ہم لوگوں نے موت کو فراموش کردیا ہے اور

اس بات سے بے خبرہیں کہ ہم نے قبرمیں جانا ہے، شوبز کی دنیا ایسی ہے کہ

لوگ ایک دوسرے کی غیبت کرتے ہیں اور یہ بھول جاتے ہیں یہ بڑے گناہوں میں

سے ایک ہے۔ ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ دین اسلام اچھا انسان بننے کا

درس دیتا ہے اوردین کے راستے پر چل کر ہی ہم فلاح پا سکتے ہیں۔ آج نفسا نفسی

کا عالم یہ ہے کہ ہمیں اپنے پڑوس کے لوگوں کے حالات کا علم نہیں ہوتا بلکہ

ہمارے پاس اتنی بھی فرصت نہیں کہ پڑوسیوں کے نام کا بھی علم ہو۔ ہمیں دنیا

داری کیساتھ ساتھ اپنی زندگی میں دین کو بھی شامل کرنا چاہیے، اس امتزاج سے

ہماری دنیا اور آخرت سنور جائے گی۔ رمضان المبارک نیکیاں سمیٹنے کا مہینہ

ہے لیکن تاجروں نے اس ماہ کو کمائی کا ذریعہ بنا لیا جس پر بہت دکھ ہوتا ہے۔

ممتا کا علم ماں

=قارئین=کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں
=–= شوبز دنیا کی ایسی ہی مزید دلچسپ خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

Leave a Reply