ملک و قوم کا دیوالیہ نکالنے والا کرپٹ ٹولہ اکھٹا ہو رہا ہے، عمران خان

Spread the love

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک)

وزیر اعظم عمران خان نے پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی جانب

سے اپوزیشن جماعتوں کے افطار ڈنر کو تنقید کا نشانہ بنایا اورکہا ہے اب پھر

سارے جمہوریت بچانے کے نام پر جمع ہوئے ہیں، بدقسمتی سے ان ہی لوگوں کی

وجہ سے ملک آگے نہیں بڑھا، یہ کہتے تھے دو پارٹی سسٹم کی وجہ سے اقتدار

میں نہیں آسکتا، تاریخ کے سب سے بڑے قرضے اور سب سے مشکل حالات میں

پاکستان ہمیں ملا لیکن ثابت کرکے دکھا ئوں گا خطے میں سب سے اوپر پاکستان

جائے گا، اتوار کو اسلام آباد میں شوکت خانم ہسپتال فنڈ ریزنگ تقریب سے خطاب

کرتے ہوئے کہا میں فنڈ ریزنگ تقریب کے شرکاء کا خیرمقدم کرتا ہوں، شوکت

خانم 70 کروڑ کا منصوبہ تھا ایک کروڑ روپے سے شروع کیا،اب یہاں 75 فیصد

مریضوں کا مفت اور عالمی معیارکے مطابق علاج ہوتا ہے ۔ شوکت خانم ہسپتال

لاہور کو انٹرنیشنل سرٹیفکیشن ملی ہے جو اگلے ماہ شوکت خانم پشاور کو بھی مل

جائے گی۔ ملک اس وقت معاشی طور پر مشکل دور سے گزر رہا ہے۔ ہماری سوچ

کی سب سے بڑی طاقت دل کھول کر فلاحی کاموں میں حصہ لینا ہے،عظیم چینی

رہنماء مائوزے تنگ نے بھی پاکستان کو عظیم مملکت قرار دیا تھا ۔ شوکت خانم

ہسپتال پاکستان کی عظیم قوم نے بنایا اور وہی اسے چلا رہی ہے ۔ دنیا میں شوکت

خانم ہسپتال جیسی علاج گاہ کی مثال نہیں ملتی ۔ آج کچھ لوگ جمہوریت بچانے

کے لئے جمع ہوئے ہیں۔ مشکل وقت میں قوم کو حوصلہ دینے کی ضرورت ہوتی

ہے ان سارے لوگوں کی وجہ سے پاکستان آگے نہ بڑھ سکا۔ عوام اس ملک کی

ترقی کی امید ہیں۔ بلاول بھٹو اور مریم نواز کے ملنے پر حیرت نہیں، یہ کرپٹ

ٹولہ اکھٹا ہو رہا ہے،سارے چور اکٹھے ہونا چاہتے ہیں تاہم عوام کبھی ان کا ساتھ

نہیں دیں گے۔ عوام کو حیرت نہیں ان دونوں نے ایک دوسرے کو کرپٹ کرپٹ کہا

اور اب یہ اکھٹے ہورہے ہیں‌، کچھ عناصر غیریقینی کی صورتحال پیدا کرنے کی

کوشش کررہے ہیں، قبل ملک کی معاشی صورتحال کا جائزہ لینے سے متعلق اپنی

زیر صدارت اجلاس میں وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا معیشت کو درپیش

چیلنجز سے نمٹنے کی بھرپور کوشش کررہے ہیں، کاروباری برادری اقتصادی

استحکام کے لیے کردار ادا کرے، چیلنجز سے نمٹنے کے لیے مشترکہ کوشش

کرنا ہوگی۔ اجلاس میں مشیر خزانہ حفیظ شیخ، مشیر تجارت رزاق داؤد اور ملک

کے تمام چیمبرز کے نمائندگان نے شرکت کی۔ مشیر خزانہ اور مشیر تجارت نے

ملکی مالیاتی معاملات پر وزیراعظم کو بریفنگ دی، اجلاس میں آئی ایم ایف سے

مذاکرات سے متعلق معاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ روپے کی قدر میں کمی کی

وجوہات پر غور کیا گیا، کاروباری افراد سے مارکیٹ کی تازہ صورتحال پر

مشاورت کی گئی، وفد نے معاشی استحکام، معیشت کے فروغ کے لیے تجاویز

پیش کیں۔ وزیراعظم نے کہا کاروباری برادری اقتصادی استحکام کے لیے کردار

ادا کرے، چیلنجز سے نمٹنے کے لیے مشترکہ کوشش کرنا ہوگی۔ کاروباری

برادری سے ملاقاتوں کا سلسلہ تواتر سے جاری رکھیں گے، معاشی بہتری کے

لیے کاروباری افراد کی تجاویز پر مشاورت ضروری ہے۔

سب چور اکٹھے ہوجائیں تو مطلب ہے تھانیدار ایماندار آ گیا، فردوس عاشق اعوان

سیالکوٹ اور بعد ازاں اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو میں وزیراعظم کی معاون

خصوصی اطلاعات ونشریات فردوس عاشق اعوان نے کہا سیاسی مردے خود کو

زندہ رکھنے کیلئے نئے دائوپیچ لڑانے جارہے ہیں ،عوام ابو بچاؤافطاری کو مسترد

کرینگے، گینگ کی شکل میں سیاسی جماعتیں اپنی ترجیحات کا تعین کریں گی،

حمزہ شہباز شریف کے بیانیے کو خاندان بھی نہیں مان رہا۔ مریم نواز کو بلاول

بھٹو کی طرف سے افطاری دی ہے، دو لیڈر ایک دوسرے کے ساتھ تجدید عہد

کرنے جارہے ہیں، افطاری کی آڑمیں سیاسی مفادات کا تحفظ اورمک مکائو کیلئے

چور دروازہ ڈھونڈا جارہا ہے۔ مگرعوام ان لوگوں کی چالوں کو سمجھتے ہیں اور

عمران خان اور حکومت کے ساتھ ہیں۔ سب چور اکٹھے ہوجائیں تو اس کا مطلب

ہے تھانیدار ایماندار آ گیا ہے، عمران خان ملکی استحکام کیلئے پرعزم ہیں،ان کی

قیادت میں منزل کی جانب گامزن ہیں، ایک دوسرے کا پیٹ پھاڑنے والی نورا

کشتی کا اختتام ہوگیا ہے۔ آج صرف بیرون ملک دولت کو ٹھکانے لگانے اور اومنی

گروپ کے باب کو تحفظ دینے کی ترکیبیں سوچی گئیں۔ سیاسی بہروپیے معصوم

عوام کو کئی سالوں سے ورغلاء کر اپنے کاروباری مفادات کیلئے استعمال کر نے

کے ایجنڈے پر کاربند ہیں ۔ ملکی اور عوامی مفادات کیلئے کوشاں عمران خان کی

زیر قیادت 22 کروڑ عوام ان سیاسی بہروپیوں کے دیئے زخموں سے آزاد ہو

چکے ہیں اوران کے جھانسے میں اب نہیں آئیں گے۔

عمران خان سے استعفیٰ لینا کوئی خالہ جی کا گھر نہیں، صمصام بخاری

لاہور میں وزیراطلاعات و ثقافت پنجاب پیر سید صمصام علی بخاری کا کہنا تھا

عمران خان سے استعفیٰ لینا کوئی خالہ جی کا گھر نہیں ملک میں کوئی معاشی

بحران نہیں کرپشن کا دیمک لگا ہوا تھا اب اسکا علاج ہو رہا ہے، پچھلے تین سال

کے بلاول اور مریم بی بی کے ایک دوسرے کے بارے بیانات سامنے رکھیں ،

شہباز شریف شعلہ بیاں کے بیانات نکال کر دیکھیں وہ کس طرح پیٹ پھاڑکر

سڑکوں پر گھسیٹ کر کرپشن کا پیسہ نکالنے کی بات کرتے تھے۔ عوام با شعور

ہیں بہکاوے میں نہیں آئیں گے، اب مسلم لیگ (ن) والے عوام سے معافی تو مانگ

لیں کہ وہ پیٹ پھاڑنے نہیں آئے بلکہ سجدہ ریز ہونے آئے ہیں،گزشتہ روز ضلع

اوکاڑہ میں رینالہ خورد اور اوکاڑہ کے سستے رمضان بازاروں کا دورہ کرنے

کے بعد صحافیوں سے بات چیت میں انکا مزید کہنا تھا بلاول بھٹو کے افطار ڈنر

میں یہ سب لوگ عوام کے لیے نہیں گئے بلکہ نیب میں جاری کیسز کے لیے گئے،

اپوزیشن احتجاجی تحریک کہاں سے شروع کرے گی یہ معلوم نہیں تاہم انکا اتحاد

چوری بچانے کا اتحا د ہے، الحمد اللہ پی ٹی آئی کا یہ بیانیہ سچ ثابت ہوا ہے کہ یہ

دونوں اندر سے ایک ہیں یہ اپنے لئے اتحاد بنا رہے ہیں اس کا عوام سے کوئی

تعلق نہیں جبکہ ان کےخلاف نیب کے کیسسز کا حکومت سے کوئی تعلق نہیں یہ

ان کا اپنے کرتوتوں کا پھل ہے اپوزیشن احتجاجی تحریک شوق سے چلائیں اسے

عوام میں پذیرائی نہیں ملے گی عوام حقائق جانتے ہیں ایون فیلڈ اپارٹمنٹس فراری

کیمپ بنے ہوئے ہیں اور وہاں پانچ ،چھ مفرور رہ رہے ہیں۔ ہمیں سستے رمضان

بازاروں پر اعتراض نہیں تھا ان کی نمودو نمائش، بڑے بڑے پوسٹر ز پراعتراض

تھا اب اس بازار میں دیکھ لیں وزیر اعظم، وزیر اعلی کی کوئی تصویریں نہیں

ہیں، ماضی میں سبزیاں اور فروٹ کم، شہباز شریف زیادہ نظر آتا تھا.

تحریک چلانا کسی بھی جماعت کا حق، لیکن یہ دو نمبر لوگ ہیں، شیخ رشید

وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا چوروں کا اتوار بازار لگ گیا ہے اور

چور اپنا مال بیچنا چاہتے ہیں،مگریہ بازو آز مائے ہوئے ہیں اور چوروں کی امداد

ستائش باہمی کچھ نہیں کر پائے گی، یہ بازو پھیلا کر چلیں یا وکٹری کا نشان بنائیں

شریف اور زرداری خاندان کی سیاست کا خاتمہ ہوگیا ہے ۔ اس اکٹھ سے (ن) لیگ

کی سیاست کا بھی جنازہ نکل گیا ہے اور اسے پہلے جو پیپلزپارٹی کی نفرت کی

سوچ کا ووٹ ملتا تھا وہ بھی سوچنے پر مجبور ہو گئے ہیں کیا آصف زرداری ان

کا لیڈر ہے اور اس سے ن لیگ کے بیانیہ کی نفی نہیں ہو رہی ہے۔ یہ مہینہ ڈیڑھ

مہینہ ایسا راگ چھیڑیں گے لیکن حقیقت میں ملک کی تباہی، غریب کی مشکلات

انہی چوروں او رڈاکوئوں کی وجہ سے ہے۔ عمران خان نے ان کا مقابلہ کیا اور

اچھا ہوا سارے گندے انڈے ایک ہی ٹوکری میں اکٹھے ہو گئے ہیں۔ تحریک چلانا

کسی بھی جماعت کا حق ہے لیکن یہ دو نمبر لوگ ہیں،

ن لیگ،پیپلز پارٹی اکٹھ کرپٹ نسل کا اتحاد ہے، ملیکہ بخاری

وفاقی پارلیمانی سیکرٹری برائے قانون ملیکہ بخاری نے کہا نون لیگ اور پیپلز

پارٹی کا اتحاد ایک کرپٹ نسل کا اتحاد ہے۔ جمہوریت اور عوام کے نام پر ان کی

ملاقات اپنی کرپشن کو تحفظ دینے کے لیے ہے۔ جب بھی ان کے گرد احتساب کا

گھیرا تنگ ہوتا ہے انہیں جمہوریت یاد آجاتی ہے۔ 30 سال پاکستان پر حکومت کر

کے انہوں نے پاکستان کو ریکارڈ خسارے اور قرضے میں دھکیل دیا،

ن لیگ شریفوں کی ذاتی جائیداد تک محدود ہو گئی، حماد اظہر

وزیر مملکت برائے ریونیو حماد اظہر کا کہنا تھا ن لیگ شریفوں کی ذاتی جائیداد

تک محدود ہو گئی ہے، مریم نواز نے حمزہ کو سائیڈ لائن کر دیا،۔ شریف خاندان

میں میرٹ کا تصور تک موجود نہیں، حمزہ شہباز کی 20 سالہ سیاسی جدوجہد

ضائع ہو گئی ہے۔

بلاول مریم ملاقات کے باعث ٹویٹر بھی سیاسی بیانات سے بھرگیا، عمر چیمہ

تحریک انصاف کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات عمر چیمہ نے کہا بلاول مریم

ملاقات، ٹویٹر بھی سیاسی بیانات سے بھرگیا ،ابو بچاؤ افطار پارٹی سرفہرست آگیا

۔ احتجاج کے نام پر مکْ مکا کے لئے دباؤ ڈالنے کی کوشش ناکام ہوگی۔ زرداری

نواز پارٹنرشپ نے ملک میں تاریخی کرپشن اور لوٹ مار کی، ‘‘ کرپشن بچاؤ ابا

بچاؤ ‘‘ مریم اور زرداری جونئر کا مشترکہ ایجنڈا ہے۔ عوام کے مسائل کا ان کے

پاس کوئی حل نہیں، مگرمچھ کے آنسو عوام کے دکھوں کا مداوا نہیں کر سکتے۔

علی بابا چالیس چوروں کا گٹھ جوڑ ہے، مراد سعید

تحریک انصاف کے مرکزی رہنما اور وفاقی وزیر مراد سعید کا بلاول بھٹو کے

افطار ڈنر اور اس میں شریک اپوزیشن جماعتوں سے متعلق کہنا تھا علی بابا

چالیس چوروں کا گٹھ جوڑ ہے مگر اس سے ہونا ہوانا کچھ نہیں ان کی سیاست ،

جمہوریت صرف ذاتی مفادات تک محدود ہے ، عوام کے نام پر یہ ایک مرتبہ پھر

ایک ہو کر عوام کو دھوکہ دینے کی کوشش کر رہے ہیں لیکن ناکامی انکا کا مقدر

بن چکی ہے.

Leave a Reply