نور مقدم کیس

نورمقدم کیس ، ملزم ظاہر جعفر پاگل نہیں ، چیف ایگزیکٹو تھراپی ورکس

Spread the love

ملزم ظاہر جعفر پاگل

اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن نیوز) اسلام آباد میں قتل کی جانے والی نور مقدم کے کیس میں تھراپی

ورکس کے چیف ایگزیکٹو ڈاکٹر طاہر ظہور نے انکشاف ہے کہ پولیس کو دیکھتے ہی ملزم ظاہر

جعفر نے ڈرامہ شروع کر دیا تھا،اس سے قبل وہ بالکل نارمل تھا۔ڈاکٹر طاہر ظہور نے پریس کانفرنس

کرتے ہوئے کہا کہ ظاہرجعفر پاگل نہیں لیکن شراب کا عادی تھا، میں نے ظاہر جعفر کے والدین کو

کہا کہ اسے جلد از جلد ہسپتال داخل کرایا جائے، مگر ظاہر جعفر کے والدین نے میری بات نہیں سنی۔

ملزم ظاہر جعفر بطور شراب نوشی کا مریض مجھے ریفر کیا گیا تھا، وہ پاگل نہیں ہے۔انہوں نے کہا

کہ میں نے اسکے والد ذاکر جعفر سے پوچھا کہ ظاہر جعفر کے پاس کوئی اسلحہ تو نہیں تاہم انہوں

نے مجھے یقین دلایا کہ ظاہر جعفر کے پاس کوئی اسلحہ نہیں ہے۔ذاکر جعفر نے ہمیں کہا کہ تھراپی

ورکس کے ورکرز کو لیکر جائیں اور ظاہر جعفر کو دیکھیں، جب تھراپی ورکس کی ٹیم پہنچی تو

گھر کے نیچے مجمع لگا ہوا تھا جہاں موجود لوگوں نے بتایا کہ 2 دن سے دروازہ نہیں کھولا جا رہا۔

اس موقع پر ڈاکٹر وامق ریاض نے کہا کہ ہم جب گھر پر گئے تو دروازہ بند تھا، ذاکرجعفر نے ہمیں

کہا کہ دروازہ توڑ کر کمرے کے اندر چلے جائیں، ہم سیڑھی لگا کر کمرے کے اندر گئے، گھر کے

اندر نور مقدم کی لاش دیکھ کر بتایا کہ اندر قتل ہوا ہے۔ڈاکٹر طاہر ظہور نے کہا کہ تھراپی ورکس

کے پاس تمام کال ریکارڈ موجود ہے، میں نے ذاکر جعفر کو کال کر کے کہا کہ اندر تو لاش پڑی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ذاکر جعفر کا ردعمل تھا کہ شاید شراب پی لی ہوگی اس لیے قتل ہو گیا ہو گا، ایسی

خبر اگر کسی بھی والد کو بتائی جائے تو اس کی ٹانگیں کانپ جانی چاہئیں۔طاہر ظہور نے کہا کہ

پولیس کو دیکھتے ہی ظاہرجعفر نے ڈرامہ شروع کر دیا تھا لیکن اس سے قبل وہ بالکل نارمل تھا۔

انہوں نے بتایا کہ ہمارے 2 افراد زخمی ہوگئے اور 3 پیچھے رہ گئے تھے، یہ کوئی فلم نہیں کہ

ظاہرجعفر کو 2 منٹ میں پکڑ لیتے۔

نورمقدم کیس

ملزم ظاہر جعفر پاگل

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply