نیپال میں کرونا انڈیا سے بھی آگے، متاثرین کی تعداد میں 1200 فیصد اضافہ

ملتان میں 3 بہن بھائی موت کا شکار، سبب کھانسی کی دوا یا کچھ اور…؟

Spread the love

ملتان (جے ٹی این آن لائن او مائی گاڈ) ملتان بہن بھائی موت

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے معروف شہر اور اولیا اللہ کی سرزمین ملتان میں دو

روز کے دوران تین بہن بھائی بچوں کے والد کے بقول جعلی ڈاکٹر کی دوا سے

چل بسے، جبکہ محکمہ صحت کے حکام نے تین معصوم بچوں کی اچانک موت

کو مشکوک قرار دیتے ہوئے معاملہ مزید تفتیش کیلئے پولیس کے حوالے کر دیا،

جس نے فوری کارروائی کر کے ملزم ڈاکٹر کو حراست میں لے لیا۔

=-.-= او مائی گاڈ عنوان کے تحت مزید معلوماتی نیوز ( == پڑھیں == )

تفصیلات کے مطابق ملتان کے علاقہ حامد پور کنورہ کا رہائشی خادم حسین اپنے

بچوں کی کھانسی کی دوا لینے ہومیو پیتھک ڈاکٹر کے پاس گیا اور بچوں کو دوا

کھلائی، دوا کھاتے ہی تینوں بچوں کی حالت بگڑ گئی، چند منٹوں میں ہی 7 سالہ

طاہرہ دم توڑ گئی، 9 سالہ دانش نشتر ہسپتال کے راستے میں اور 5 سالہ منیب

ہسپتال میں دم توڑ گیا۔ تینوں بچوں کی موت سے بچوں کی ماں سمیرا کی گود اجڑ

گئی۔ چیف ایگزیکٹیو ہیلتھ ڈاکٹر شعیب الرحمان کے مطابق ہومیو پیتھک ڈاکٹر کو

گرفتار کر لیا گیا ہے، کلینک سیل اور دوائیاں قبضہ میں لے کر پی۔ ایم۔ ڈی۔ سی

ایکٹ 28 ون اے، دفعہ 419 اور 420 کے تحت کارروائی شروع کر دی گئی ہے

جبکہ تینوں بچوں کا نشتر ہسپتال میں پوسٹ مارٹم مکمل کر کے معدے کے اجزاء

پنجاب فورنزک لیب بھجوا دیے گئے ہیں۔

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

محکمہ صحت کی ٹیموں کے مطابق ملزم ڈاکٹر کا کلینک پنجاب ہیلتھ کئیر کمیشن

سے 2018ء سے لائسنس یافتہ ہے، کلینک کے ریکارڈ کے مطابق متوفی بچوں

کے باپ خادم حسین نے ہومیو ڈاکٹر سے دوا نہیں لی اور نہ ہی محکمہ صحت کی

ٹیموں کو تفتیش کے دوران خادم حسین کے گھر سے کوئی ایسی دوا یا ڈاکٹر کا

نسخہ ملا۔ بچوں کی موت کے حقائق پوسٹمارٹم رپورٹ اور پولیس تفتیش میں

سامنے آئیں گے۔ دوسری طرف وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے واقعے کا نوٹس

لینے اور غیر معیاری دوائی دینے والے جعلی کو گرفتار کرنے کی ہدایت پر فوری

کارروائی کرتے ہوئے ڈاکٹر کو گرفتار، کلینک کو سیل کرکے مزید قانونی

کارروائی کا آغاز کر دیا گیا ہے۔

ملتان بہن بھائی موت

Leave a Reply