مقبوضہ کشمیرمیں ہڑتال، شہید طاہر ڈار سبز ہلالی پر چم میں سپرد خاک

Spread the love

سرینگر(نیوزایجنسیاں)مقبوضہ کشمیر میں بھارتی حکومت کی طرف سے جموں و

کشمیر لبریشن فرنٹ پر پابندی عائد کئے جانے کے خلاف اتوار کو مکمل ہڑتال

کی گئی۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق ہڑتال کی کال سید علی گیلانی ،میرواعظ

عمرفاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے دی تھی۔

ہڑتال کے باعث علاقے میں تمام دکانیں اور کاروباری مراکز بند جبکہ سڑکوں پر

گاڑیوں کی آمدورفت معطل رہی۔ قابض انتظامیہ نے علاقے میں انٹرنیٹ موبائل

سروس معطل کئے رکھی۔ بھارتی حکومت کی طرف سے آزادی پسند سرگرمیوں

کی وجہ سے محمد یاسین ملک کی زیر قیادت جموںوکشمیر لبریشن فرنٹ پرعائد

پابندی اوریسین ملک کو قید کرنےکخلاف کوٹلی میں بھی زبردست احتجاج ہوا۔

جس میں مودی کا پتلا نذر آتش کیا گیا۔ یاسین ملک اس وقت کالے قانون پبلک

سیفٹی ایکٹ کے تحت جموں کی کوٹ بھلوال جیل میں نظربند ہیں۔ دریں اثناء

مشترکہ حریت قیادت نے جماعت اسلامی اور جموںوکشمیر لبریشن فرنٹ پر

پابندی عائد کرنے کو سیاسی انتقام اور کشمیریوں کی جائز جدوجہد کو دبانے

کے ایک ظالمانہ ہتھکنڈا قرار دیا اور کہا تنازعہ کشمیر کے حل کے لیے پرامن

جدوجہد کرنے والی تنظیموں کو بھارت ایسے بھونڈے اقدامات سے کسی طور

دستبردار نہیں کر سکتا .دوسری طرف بارہمولہ کے علاقے سوپور میں ہزاروں

لوگوں نے شہید نوجوان طاہر احمد ڈار کی نماز جنازہ میں شرکت کی ۔ طاہر احمد

ڈار کو بھارتی فوجیوں نے ایک اورنوجوان کے ہمراہ ہفتے کو سوپور کے

علاقے وارہ پورہ میں محاصرے اور تلاشی کی ایک کارروائی کے دوران شہید

کیا تھا۔ جلوس جنازہ میں خواتین سمیت لوگوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی شہید

کے جسد خاکی کو قبرستان تک پہنچایا اورآزادی کے حق وبھا رت مخالف فلک

شگاف نعروں کی گونج میںسپردخاک کیا ۔

Leave a Reply