مفتی تقی عثمانی حملے

مفتی تقی عثمانی پر حملے کی مبینہ کوشش، مشتبہ شخص زیرحراست، چاقو برآمد

Spread the love

مفتی تقی عثمانی حملے

کراچی (جے ٹی این آن لائن نیوز) مفتی اعظم پاکستان تقی عثمانی پر حملے کی مبینہ کوشش پر پولیس

نے دارلعلوم کراچی سے مشتبہ شخص کو حراست میں لے لیا۔ گورنر سندھ نے ایڈیشنل آئی جی

کراچی کو تحقیقات کر کے رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کر دی۔بتایا گیا ہے کہ مشتبہ شخص مسجد

میں داخل ہوا اور مفتی تقی عثمانی سے علیحدہ بات کرنے کا کہا، مفتی اعظم پاکستان قریب آئے تو

ملزم عاصم لئیق نے جیب سے چاکو نکال لیا جسے فوری طور پر گارڈز نے پکڑ لیا۔ایس ایس پی

کورنگی کا کہنا ہے مشتبہ شخص کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔مفتی تقی عثمانی پر حملہ نہیں ہوا،

ابتدائی بیان میں ملزم کا کہنا ہے کہ وہ گھریلو پریشانیوں میں مبتلا ہے، مفتی صاحب سے مسائل کے

حل کیلئے دعا کرانے آیا تھا۔ ملزم نے کہا کہ چاقو میں نے نہیں نکالا بلکہ دوران تلاشی گارڈ نے

برآمد کیا۔ ملزم سے پولیس اور رینجرز کے افسران کی جانب سے مزید تفتیش جاری ہے۔)وفاقی

وزیر داخلہ شیخ رشید نے مفتی تقی عثمانی کو ٹیلیفون کر کے مبینہ چاقو سے حملے کے متعلق

پوچھا ۔وزیر داخلہ نے مفتی تقی عثمانی سے ان کی خیریت دریافت کی ۔ شیخ رشید احمد نے کہاکہ

آپ پر مبینہ حملے پر مجھے بڑی تشویش ہے، مفتی تقی عثمانی اعلی پائے کے عالم اور دین اسلام

کی شان ہیں۔ انہوںنے کہاکہ مفتی عثمانی تقی عثمان کی زندگی کے لیے دعا گوہیں۔دوسری طرف

مفتی تقی عثمانی نے کہا ہے کہ پکڑے گئے مشکوک شخص کی جیب میں چاقو تھا جو اس نے نکالا

تھا۔اپنے آڈیو بیان میں مفتی تقی عثمانی نے کہا فجر کے بعد ایک صاحب آئے تھے جنہوں نے

علیحدگی میں بات کرنے کا کہا تھا۔انہوں نے کہا کہ میں اس شخص سے بات کرنے کے لیے اٹھا ہی

تھا کہ اس شخص نے جیب میں موجود چاقو نکالا، جس پر میرے ساتھیوں نے اس شخص کو پکڑ

لیا۔مفتی تقی عثمانی نے کہا کہ اللہ تعالی کا شکر ہے کہ مجھے کوئی تکلیف نہیں پہنچی، میں خیریت

سے ہوں۔

مفتی تقی عثمانی حملے

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply