0

معطل ملازمین بحال،،حکومت ، پمز ہسپتال ملازمین میں کامیاب مذاکرات ،احتجاج ختم

Spread the love

وفاقی وزیر صحت عامر محمود کیانی کا کہنا ہے پمزہسپتال کو بورڈ آف گورنر کے ماتحت کرانے سے متعلق تاحال کوئی قانون پاس نہیں ہوا، مسودے کو حتمی شکل ملازمین کی مشاورت اور موجودگی میں دی جائیگی ، ملازمین کے تحفظا ت کو دور کیا جائے گا۔پمز ہسپتال میں احتجاجی مظاہرین سے خطاب میں وفاقی وزیر کا کہنا تھا صحت کا شعبہ حکومت کی اولین ترجیح ہے، حکومت اس شعبے میں گزشتہ ستر برسوں کی محرومیوں کا خاتمہ کریگی، حکومت چاہتی ہے پمز ہسپتال کو عالمی معیار کا ہسپتال بنانے کیلئے ا قد امات کئے جارہے ہیں ۔ پمز کو بورڈ آف گورنرز کے ماتحت کرانے سے متعلق ڈرافٹ کو حتمی شکل دینے کیلئے پانچ ر کنی ٹیم بیٹھے گی اور ان کی مرضی سے معاملات طے کریں گے۔ میری ذمہ داری ہے ورکرز کا حق انہیں ملے، یقین دلاتاہوںملازمین کے حقوق کا تحفظ کریں گے،وفاقی وزیر کی یقین دہانی پر ملازمین نے احتجاج ختم کردیاجبکہ وفاقی وزیر صحت نے پمز میں معطل ملازمین کو فوری طور پر بحال کرنے کا حکم جاری کیا ۔ تاہم ایگزیکٹیو ڈا ئر یکٹرپمز ڈاکٹر امجد چوہدری کا کہنا تھا میرے خلاف استعمال ہونیوالے ملازمین کو بحال کرنا ادارے کی انتظامیہ کے اختیارات کو روندنے کے مترادف ہے ۔ وزیر صحت نے کہا کسی کو اختیار نہیں وہ کسی عام ملازم کیخلاف بغیر ثبوت کے کوئی ایکشن لے کسی کو جانا ہے تو چلا جائے میں نے جو احکامات جاری کئے ہیں ان پر من وعن عمل ہو۔

Leave a Reply