مسلمانوں سے اظہارنفرت ،کینیڈین ہندو شہری ملازمت سے فارغ

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

ٹورنٹو(جےٹی این آن لائن نیوز) مسلمانوں سے اظہارنفرت

کینیڈامیںبھارتی نژاد شہری کو اسلام مخالف ٹوئٹ کرنے پر ملازمت سے برطرف کرتے ہوئے اس کے خلاف تفتیش کا آغاز کردیا گیا ہے۔ کینیڈین نشریاتی ادارے کے مطابق ملزم روی ہودا نے 30 اپریل کو ایک ٹوئٹ پر جواب دیتے ہوئے مسلمانوں سے نفرت کا اظہار کیا

تیز روشنی کا دل کی صحت سے تعلق، نئی تحقیق میں حیرت انگیز انکشافات

اور انہوں نے اپنے جواب میں نفرت انگیز باتوں کا پرچار کیا۔رپورٹ کے مطابق روی ہودا نے کینیڈین حکومت کی جانب سے ماہ رمضان کے باعث مسلمانوں کو لاؤڈ اسپیکر پر اذانیں دینے کی اجازت دینے کے حوالے سے کی گئی ایک ٹوئٹ پر جواب دیتے ہوئے مسلمانوں کے خلاف نامناسب الفاظ استعمال کئے

اور کہا کہ اس اجازت کے بعد اب اگلا قدم مسلمانوں کو قربانی کے جانوروں کو گھر تک لانے کے لیے سڑکوں پر خصوصی لائنیں فراہم کی جائیں گی۔

ملزم کے خلاف تفتیش شروع کردی گئی ہے۔علاوہ ازیں روی ہودا کو ریئل اسٹیٹ فرم نے بھی ملازمت سے نکال دیا ہے ۔ لوگوں کی شدید تنقید کے بعد روی ہودا نے اپنا ٹوئٹر اکاؤنٹ بند کردیا ہے ۔

ملزم کے خلاف تفتیش شروع کردی گئی ہے۔علاوہ ازیں روی ہودا کو ریئل اسٹیٹ فرم نے بھی ملازمت سے نکال دیا ہے ۔ لوگوں کی شدید تنقید کے بعد روی ہودا نے اپنا ٹوئٹر اکاؤنٹ بند کردیا ہے ۔

مسلمانوں سے اظہارنفرت

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply