مسلح افواج کے قوانین میں ترامیم کے تینوں بل قائمہ کمیٹی دفاع سے منظور،پارلیمنٹ آج فیصلہ کریگی

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)حکومت نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی

مدت ملازمت میں توسیع کا بل قومی اسمبلی میں پیش کردیا جبکہ سینیٹ و قومی

اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے دفاع نے آرمی ایکٹ کے ترمیمی بل کی منظوری

دیدی۔قومی اسمبلی کا اجلاس سپیکر اسد قیصر کی زیر صدارت ہوا جس کے 13

نکاتی ایجنڈے میں آرمی ترمیمی ایکٹ شامل نہیں تھا تاہم ایکٹ کو سپلیمنٹری

ایجنڈے کے طور پر پیش کیا گیا۔وزیرمملکت علی محمد خان کی وقفہ سوالات

معطل کرنے کیلئے رولزمعطلی کی تحریک منظور کی گئی جس کے بعد وزیر

دفاع پرویز خٹک نے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کیلئے آرمی ترمیمی

ایکٹ 2020 ء پیش کیا۔وزیر دفاع نے پاکستان ائیر فورس ترمیمی ایکٹ 2020

اورپاکستان بحریہ ترمیمی ایکٹ 2020 بھی پیش کیا جس کے بعد تینوں بلوں کو

قائمہ کمیٹی برائے دفاع کو بھیج دیا گیا ہے اور اسمبلی کا اجلاس آج صبح 11 بجے

تک ملتوی کردیا گیا۔تاہم حکومت اور اپوزیشن کے درمیان بلوں کی منظوری کیلئے

قائمہ کمیٹی برائے دفاع کا اجلاس جمعہ کو ہی طلب کرنے پر اتفاق کیا گیا جس پر

قائمہ کمیٹی برائے دفاع قومی اسمبلی اور سینیٹ کا مشترکہ اجلاس ہوا جس میں

آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع سے متعلق ترامیم کی منظوری دی گئی۔

سینیٹ اور قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے دفاع کے مشترکہ اجلاس میں وفاقی

وزیر دفاع پرویز خٹک، وزیر قانون فروغ نسیم، مشاہد حسین سید، شیری رحمان و

دیگر شریک ہوئے۔ سینیٹ اور قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی دفاع نے مسلح افواج

کے قوانین میں ترامیم سے متعلق تینوں بل منظور کرلئے۔ تینوں بلز کی قائمہ

کمیٹیوں کے مشترکہ اجلاس میں منظوری دی گئی۔جس کے بعد تینوں بل آج ہفتہ

کو پارلیمنٹ سے متفقہ طور پر منظور کرائے جائیں گے۔بلوں کے متن کے مطابق

ایک جرنیل کیلئے صراحت کو مقرر کردہ ریٹائرمنٹ کی عمر و حدود ملازمت

آرمی چیف پر لاگو نہیں ہو گی، آرمی چیف ،چیئرمین جوائنٹ چیفس آف

سٹاف،چیف آف ایئر سٹاف اور چیف آف نیول سٹاف کے قیود و شرائط کا تعین

صدر مملکت وزیراعظم کے مشورے سے کرے گا،آرمی چیف کی تقرری یا توسیع

زیادہ سے زیادہ64سال کی عمر تک مشروط ہو گی،آرمی چیف کی تقرری یا توسیع

کسی بھی عدالت میں چیلنج نہیں کی جا سکتی۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply