152

مسجد اقصی کی بار باربندش پرفلسطینی اوقاف کی اسرائیل کو وارننگ

Spread the love

مقبوضہ بیت المقدس (مانیٹرنگ ڈیسک) فلسطین کی وزارت اوقاف اور مذہبی امور

نے اسرائیل کو خبردار کیا ہے کہ مسجد اقصیٰ پر یہودی آباد کاروں کے دھاوے

اور مقدس مقام کی بار بار بندش ناقابل قبول اور اسرائیل کی کھلی مذہبی جارحیت

ہے جس کے سنگین نتائج سامنے آئیں گے۔وزارت اوقاف کی طرف سے جاری

ایک بیان میں متنبہ کیا ہے کہ مسجد اقصیٰ کی حیلوں اور جھوٹے بہانوں سے بار

بار بندش کا مقصد مقدس مقام پر اپنی اجارہ داری قائم کرنا مسلمان اہل ایمان کو

اس میں نماز پڑھنے سے روکنا یہ اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ صہیونی ریاست

مسجد اقصیٰ میں فلسطینیوں کو حق عبادت سے محروم کرنے کی منظم پالیسی

پرعمل پیرا ہے۔بیان میں مزید کہا گیا کہ قابض حکومت کے طرز عمل، اس کے

نام نہاد فوجی اور سکیورٹی اداروں کے اقدامات اور اس کی پالیسیوں سے اقصیٰ

اور اس سے ملحقہ مقدس مقامات کے خلاف مذموم عزائم کی کھلی عکاسی ہوتی

ہے۔وزارت اوقاف نے انسانی حقوق کے اداروں اور ان سے وابستہ افراد سے

مطالبہ کیا کہ وہ مسجد اقصیٰ کی بے حرمتی روکنے اور فلسطینیوں کے عبادت

کے حق پر اسرائیلی ریاست کا ڈاکہ ڈالنے کے جرائم کا نوٹس لیں۔خیال رہے کہ

اسرائیلی پولیس نے مسجد اقصیٰ کے تمام دروازے بند کردیئے تھے اور فلسطینی

نمازیوں کو دروازے کھولنے اور اندر داخل ہونے سے روک دیا تھا۔ 2003 کے

بعد سے اسرائیلی پولیس نے جمعہ اور ہفتہ کے علاوہ ہفتے کے تمام دنوں میں

آباد کاروں کو مسجد اقصی میں داخل ہونے کی اجازت دی رکھی ہے۔مقبوضہ بیت

المقدس اسلامی اوقاف جو اردن کی وزارت اوقاف سے وابستہ ہے مسجد اقصیٰ

کے انتظام وانصرام کو چلانے کا ذمہ دار ہے مگر اس ادارے کو اسرائیلی فوج اور

دیگر اداروں کی طرف سے مسلسل انتقامی حربوں کا سامنا رہتا ہے۔

Leave a Reply