مریم کیساتھ جائینگے

نیب پیشی ،PDM کارکن ، رہنما مریم کیساتھ جائینگے ،فضل الرحمان

Spread the love

مریم کیساتھ جائینگے

لاہور(جے ٹی این آن لائن نیوز)پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ کے صدرمولانافضل الرحمان نے کہا

ہے کہ مریم نوازکی 26مارچ کونیب میں پیشی کے موقع پر پی ڈی ایم میں شامل جماعتوں کے رہنما

اورکارکنان بھی اظہاریکجہتی کیلئے ان کے ہمراہ جائیں گے ،پی ڈی ایم متحد ہے اورباہمی رابطوں

کے ذریعے معاملات کومکمل کنٹرول کرلیا جائے گا ،پیپلزپارٹی کو چاہیے کہ اتحاد میں شامل

جماعتوں کی رائے کااحترام کرے،ہم پیپلز پارٹی کی سنٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے فیصلے کاانتظار

کررہے ہیں اوران کے دلائل پر غورکرنے کرنے کیلئے تیار ہوں گے،لانگ مارچ

ضرورہوگااورسربراہی اجلاس میں اس کی تاریخ کا فیصلہ ہوگا جبکہ مسلم لیگ (ن) کی نائب

صدرمریم نواز نے کہا ہے کہ ہم نے تنہا بڑے بڑے جلسے اورریلیاں کی ہیں اورہمیں کسی اور کی

ضرورت نہیں ، حکومت کوپتلی گلی سے نکلنے نہیں دیں گے، چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے

امیدواروں کا حتمی فیصلہ کرتے ہوئے طے پایا تھاکہ سینیٹ میں قائد حزب اختلاف مسلم لیگ (ن)

سے ہوگااوراس اصول پر عمل ہونا چاہیے ۔ پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ کے صدر اورجے یو

آئی(ف) کے سربراہ مولانافضل الرحمان کی سربراہی میں وفد نے جاتی امراء رائے ونڈمیں مسلم

لیگ(ن) کی نائب صدر مریم نوازاور پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز سے ملاقات

کی ۔ اس موقع پر شاہدخاقان عباسی، احسن اقبال، پرویز رشید، رانا ثنا اﷲ خان اوردیگر بھی

موجودتھے۔ ملاقات میں ملک کی مجموعی سیاسی صورتحال ،پی ڈی ایم اتحاد

کوبرقراررکھنے،استعفوں اور لانگ مارچ کے حوالے سے آئندہ کی حکمت عملی پر مشاورت کی گئی

،اجلاس میں پیپلزپارٹی کے ممکنہ فیصلوں کے حوالے سے بھی غور و خوض کیا گیا اور طے کیا گیا

کہ پیپلزپارٹی سے رابطے جاری رہیں گے اور سی ای سی کے فیصلے کاانتظار کیا جائے گا ،ملاقات

میں طے پایا کہ مقاصدکے حصول کیلئے متحد ہو کر آگے بڑھاجائے گا ۔میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے

مولانا فضل الرحمان نے کہاکہ ملاقات میں ملک کو درپیش صورتحال پر تفصیلی گفتگوہوئی ہے

،حکومت بجلی مزید چھ روپے یونٹ مہنگی کررہی ہے ،حکومت نے مہنگائی کیلئے چھوڑاکیا ہے اور

عوام کی کمرپر پہاڑگرادیاگیا ہے اور ان کی کمرتوڑ کررکھ دی گئی ہے،یہ ملک کواورکہاں

پہنچاناچاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا سٹیٹ بینک کی خودمختاری کے نام پر یہ ادارہ بین الاقوامی اداروں

کو توجوابدہ ہوگا لیکن ملک کے وزیر اعظم اوروزیر خزانہ کو جوابدہ نہیں ہوگا ،اسے آئی ایم ایف کا

ذیلی ادارہ بنانے کی کوشش کی گئی ہے جو پاکستان کی خود مختاری کے منافی ہے اورہم ایسے

اقدامات کوتسلیم نہیں کرتے ،ہم عوا م کے ساتھ ہیں اور پاکستان کی خودمختاری اور آزادی کے ساتھ

کھڑے ہوں گے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے وزیر خارجہ نے یہ کہا ہے کہ ہم کشمیر کے سقوط

کوایک طرف رکھتے ہوئے بھارت سے بات چیت کرنے کے لئے تیار ہیں ،اس وقت مودی کو دنیا میں

قبول نہیں کیا جارہااور اس پر دباؤ کی صورتحال ہے اوراس طرح کاکوئی بھی اقدام اسے دباؤ سے

نکالنے کا سبب بنے گا۔ مولانا فضل الرحمان نے کہاکہ نیب نے جس بنیاد پر مریم نواز کو26مارچ

کودوبارہ طلب کیا ہے اس سے یہ بے نقاب ہو گیا ہے ،ہم پہلے ہی کہتے تھے کہ نیب کٹھ پتلی ادارہ

ہے ، مریم نوازکی ضمانت کی منسوخی کیلئے عدالت سے رجو ع کرتے ہوئے موقف اپنایا گیا ہے کہ

یہ اداروں کے خلاف بولتے ہیں ِبتایا جائے یہ کرپشن ختم کرنے کاادارہ ہے یا اداروں کی خدمت

کاادارہ ہے ،کیا یہ اداروں کی ترجمانی کیلئے بناہے ۔ 26مارچ کومریم نواز کی نیب میں پیشی کے

موقع پر پی ڈی ایم کے ہزاروں کارکنان بھی اظہار یکجہتی کیلئے موجود ہوں گے اوریہ تعداد لاکھوں

میں بھی ہو سکتی ہے ،شخصیات کی شرکت کے حوالے سے تعین بعد میں کریں گے لیکن پی ڈی ایم

ان کے شانہ بشانہ ہوگی ۔ انہوں نے پی ڈی ایم میں نا اتفاقی کے حوالے سے کہا کہ میڈیا کا زور ہے

وہ جو مرضی رنگ دے سکتے ہیں،پی ڈی ایم متحد ہے اورباہمی رابطوں کے ذریعے معاملات پر

مکمل کنٹرول کرلیا جائے گا ہم نے مل کرسفر کرناہے،پی ڈی ایم میں نو جماعتیں ایک طرف ہے پیپلز

پارٹی ان کی رائے کا احترام کرے،ہم پیپلزپارٹی کی سنٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے فیصلوں کے منتظر

ہیں اور ان کے دلائل پر غور کرنے کیلئے تیار ہوں گے اورمجھے امید ہے کہ خوشگوار ماحول میں

معاملات ٹھیک کریں گے اور پی ڈی ایم متحد ہے اور یہ موثر بھی ہو گی ۔

پی ڈی ایم

مریم کیساتھ جائینگے

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply