پشاور، کوہاٹ، ہنگو، اورکزئی و کرم میں محرم الحرام سکیورٹی پلانز تیار

پشاور، کوہاٹ، ہنگو، اورکزئی و کرم میں محرم الحرام سکیورٹی پلانز تیار

Spread the love

پشاور(بیورو چیف، عمران رشید) محرم الحرام سکیورٹی پلانز

Journalist Imran Rasheed

خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور، کوہاٹ ڈویژن کے چاروں اضلاع کوہاٹ،

ہنگو، اورکزئی اور کرم میں پُر امن محرم الحرام کیلئے فول پروف سکیورٹی پلانز

تیار کرنے سمیت تمام اضلاع میں حفاظتی انتظامات سخت کر کے خصوصی

سکیورٹی پلان کو حتمی شکل دیدی گئی ہے-

=-،-= خیبر پختونخوا سے متعلق مزید خبریں (=-= پڑھیں =-=)

تفصیلات کے مطابق کیپٹل سٹی پولیس پشاور عباس احسن کے دفتر سے جاری

ہونیوالے پلان کے مطابق 10 ہزار سے زائد پولیس افسران و اہلکار محرم کے

دوران سکیورٹی کے فرائض سرانجام دینگے، تمام روٹس سمیت مجالس عزاداری،

امام بارگاہوں کی بم ڈسپوزل یونٹ اور سنیفر ڈاگز کے ذریعے سویپنگ کی جائے

گی جبکہ تمام امام بارگاہوں، اہم اور حساس راستوں و مقامات کی سی سی ٹی وی

کیمروں کے ذریعے نگرانی کی جائے گی، امام بارگاہوں کو جانے والی گزرگاہوں

میں موجود اونچی عمارتوں پر ماہر نشانہ باز تعینات کئے جائیں گے، جبکہ تمام

داخلی و خارجی راستوں پر چیکنگ کا عمل مزید سخت کرکے شہر میں داخل

ہونیوالے افراد کی کڑی نگرانی شروع کر دی گئی ہے، اسی طرح پشاور پولیس

نے محرم الحرام کے دوران امن وامان کے قیام اور کرونا ایس او پیز پر عملدرآمد

کو یقینی بنانے کی خاطر تمام مسالک سے تعلق رکھنے والے علماء کرام، تاجر

رہنماؤں، ضلعی انتظامیہ اور دیگر اداروں کے حکام کیساتھ خصوصی میٹنگز کیں،

جبکہ سماج دشمن سرگرمیوں میں ملوث عناصر کیخلاف انٹیلی جنس بیسڈ سرچ اینڈ

سٹرائیک آپریشنز کئے گئے ہیں، اسی طرح شہر میں واقع سرائیوں، گیسٹ ہاؤسز

اور ہوٹلز میں قیام پذیر افراد کا ڈیٹا چیک کر کے ان کی بھی کڑی نگرانی کا عمل

جاری ہے-

=-،-= پشاور میں حساس مقامات پر بکتر بند گاڑیاں موجود رہیں گی

محرم کے دوران شہر کی سکیورٹی کو فول پروف بنانے کیلئے بکتر بند گاڑیاں

بھی حساس مقامات پر موجود رہیں گی، جبکہ محرم کے دوران ٹریفک کو رواں

دواں رکھنے کیلئے خصوصی ٹریفک پلان بھی تشکیل دیا گیا ہے جس کے تحت

ایک ہزار سے زائد ٹریفک پولیس کے اہلکار تعینات کئے جائیں گے، اسی طرح

افغان مہاجرین کے شہر میں داخلہ پر بھی پابندی لگانے کا فیصلہ کیا گیا ہے،

اندرون شہر کی سکیورٹی کو مزید موثر بنانے کیلئے محرم کے آخری ایام میں تمام

گاڑیوں کے داخلہ پر مکمل پابندی ہو گی، محرم الحرام کے دوران امام بارگاہوں

اور حساس مقامات سمیت شہر بھر کی مانیٹرنگ کیلئے جدید سہولیات سے آراستہ

خصوصی کنٹرول روم تھانہ شرقی میں قائم کیا گیا ہے جہاں سے سی سی ٹی

کیمروں کے ذریعے تمام حساس مقامات، امام بارگاہوں، روٹس اور دیگر اہم

جگہوں کی نگرانی کی جائیگی جبکہ اسی طرح کوہاٹی میں سپریم کمانڈ پوسٹ قائم

کی جائے گی جہاں ریزرو پولیس، بی ڈی یو، لیڈیز پولیس، ڈی ایس بی، ایمبولینس،

ریسکیو 1122، فائر بریگیڈ، واپڈا، سوئی گیس، ضلعی انتظامیہ کے اہلکار اور

دیگر اداروں سے تعلق رکھنے والے افسران و اہلکار ہمہ وقت موجود رہیں گے-

=-،-= کوہاٹ ڈویژن کے چاروں اضلاع میں حفاظتی انتظامات مزید سخت

کوہاٹ ڈویژن کے چاروں اضلاع کوہاٹ، ہنگو، اورکزئی اور کرم میں محرم الحرام

کے پرامن انعقاد کیلئے تیار کردہ فول پروف سیکیورٹی پلان کے تحت تمام اضلاع

میں حفاظتی انتظامات سخت کر کے مساجد و امام بارگاہوں اور حساس مقامات کی

نگرانی مزید تیز کر دی گئی ہے۔ ممکنہ ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے

پولیس، ایف سی اور قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کو پوری طرح چوکس کر

دیا گیا ہے جبکہ سیکڑوں کی تعداد میں سیکیورٹی اہلکاروں کی ڈیوٹیاں لگا دی

گئی ہیں۔ کوہاٹ میں 2500 جبکہ کرم میں 1300 پولیس اہلکاروں کی ڈیوٹیاں لگا

دی گئی ہیں۔ اس ضمن میں پولیس نے بتایا تمام اضلاع کے ضلعی ہیڈ کوارٹرز میں

ڈپٹی کمشنرز کے دفاتر میں کنٹرول روم قائم کر دیئے گئے ہیں، جہاں 24 گھنٹے

تمام محکموں کے افسر و اہلکار موجود رہیں گے جو کسی بھی ہنگامی صورتحال

کی صورت میں اپنا موثر کردار ادا کریں گے۔

=-،-= ہنگامی صورتحال سے بچنے کیلئے اسلحہ نمائش، ڈبل سواری پر پابندی

محرم الحرام میں امن و امان برقرار رکھنے اور کسی بھی غیر یقینی صورتحال

سے بچنے کیلئے چاروں اضلاع میں اسلحہ کی نمائش، موٹر سائیکل کی ڈبل

سواری، وال چاکنگ، سیاہ شیشوں والی گاڑیوں، شرانگیز مواد کی تقسیم اور لاﺅڈ

سپیکر کے بے جا استعمال پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔ مساجد و امام بارگاہوں،

اقلیتوں کی عبادت گاہوں، ٹرانسپورٹ اڈوں، بازاروں، فروٹ و سبزی منڈیوں اور

ہسپتالوں کی سیکیورٹی کیلئے تمام تر حفاظتی اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔ قبائلی

اضلاع اور مختلف شہروں کے داخلی و خارجی راستوں پر خصوصی ناکہ بندیاں

قائم کر کے چیکنگ کا سلسلہ بڑھا دیا گیا ہے۔ کسی بھی ناخوشگوار صورتحال کے

پیش نظر اضافی انٹی رائیٹ پلاٹونز سٹینڈ بائی کردئیے گئے ہیں۔ ضلع کی سطح پر

قانون نافذ کرنیوالے و دیگر انتظامی اداروں کے مابین مربوط کوآرڈینیشن کو فروغ

دینے کی غرص سے خصوصی کنٹرول رومز قائم کردئیے گئے ہیں، اور اتحاد بین

المسلمین کے مطلوبہ مقاصد کے حصول اور دوطرفہ تعاون بڑھانے کیلئے امن

کمیٹی، شیعہ سنی اکابرین اور تاجر رہنماﺅں کیساتھ موثر اور نتیجہ خیز اجلاسوں

کے انعقاد کا سلسلہ شروع کر دیا گیا ہے۔

=-،-= امن و امان کیلئے محرم الحرام کانفرنس، اہل سُنت و تشیع کی شرکت

قبائلی اضلاع کرم، اور کزئی اور ہنگو میں یکم محرم سے 13 محرم تک چھٹیوں

پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔ ادھر اتوار کے روز کوہاٹ کے نواحی علاقہ

اُسترزئی میں سابق چیف جسٹس ابن علی کی رہائشگاہ پر محرم الحرام کانفرنس کا

انعقاد کیا گیا جس میں اہل سُنت و تشیع کے عمائدین و مشران نے شرکت کی۔

کانفرنس میں کوہاٹ میں امن کو برقرار رکھنے اور محرم الحرام کے پرامن انعقاد

کے عز م کا اعادہ کیا گیا اور محرم کے دوران جلسہ و جلوس میں شرپسندی

پھیلانے والے عناصر کے بائیکاٹ اور حالات کو کنٹڑول کرنے کے لئے انتظامیہ

کے ساتھ مل کر مکمل تعاون کرنے پر اتفاق کیا گیا۔

محرم الحرام سکیورٹی پلانز ، محرم الحرام سکیورٹی پلانز ، محرم الحرام سکیورٹی پلانز

محرم الحرام سکیورٹی پلانز ، محرم الحرام سکیورٹی پلانز ، محرم الحرام سکیورٹی پلانز

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply