لاک ڈاؤن کا سوچیں بھی نہیں، 2 خاندانوں نے ہوس زر میں ملک تباہ کر دیا

مجھے دبائو میں کھیلنا آتا ہے ، ملک کو مشکل وقت سے نکالیں گے، عمران خان

Spread the love

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ مجھے دباؤ میں کھیلنا آتا ہے،وزیراعظم نے کہا کہ کہ ہماری حکومت کو پانچ مہینے ہوگئے ہیں لیکن کرپشن کا ایک بھی اسکینڈل سامنے نہیں آیا۔دوحہ کے الوکارہ اسٹیڈیم میں پاکستانی برادری سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ بیرون ملک پاکستانیوں سے میرا تعلق بہت پرانا ہے، اوورسیز پاکستانیوں نے ہمیشہ پاکستان کیلئے دل کھول کر عطیات دیئے ہیں، اوورسیز پاکستانیوں کی دل سے عزت کرتا ہوں۔انہوں نے کہا کہ بیرون ملک پاکستانیوں کو روزگار کے سلسلے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے لیکن وہ وقت جلد آئے گا جب آپ کو ملک سے باہر نوکریاں ڈھونڈنے نہیں جانا پڑے گا۔ان کا کہنا تھا کہ منی لانڈرنگ کرنے والوں کے ساتھ میری جنگ ہے، آپ کو پتا ہے مجھے دباؤ میں کھیلنا آتا ہے اور انشاء اللہ ہم پاکستان کو مشکل وقت سے نکالیں گے۔عمران خان کا کہنا تھا کہ آج ہمارا ملک بیرون ملک پاکستانیوں کی ترسیلات زر سے چل رہا ہے، جس طرح پاکستان کو لوٹا گیا کوئی اور ملک ہوتا تو اس کا دیوالیہ نکل چکا ہوتا، ہمیں 5 ماہ ہوگئے ہیں اور ایک بھی کرپشن کا اسکینڈل نہیں آیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو کرپٹ لوگوں نے دونوں ہاتھوں سے لوٹا ہے، کوئی ملک وسائل سے مضبوط نہیں ہوتا کیوں کہ کانگو میں ہر قسم کے ہیرے جواہرات ہیں لیکن وہ ملک غریب ہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان کا خسارہ بہت زیادہ ہے، اللہ نے پاکستان کو تمام خزانوں سے نوازا ہے، بس پاکستان کو صرف اچھی طرز حکمرانی چاہیے۔ان کا کہنا تھا کہ غیر ملکی سرمایہ کار پاکستان میں سرمایہ کاری کیلئے تیار ہیں، کرپشن اور ٹیکس کا پیچیدہ نظام سرمایہ کاری میں رکاوٹ تھا۔انہوں نے کہا کہ ملائیشیا میں سیاحت کے ذریعے 20 ارب ڈالر اور ترکی میں سیاحت سے سالانہ آمدنی 40 ارب ڈالر ہے، ہم بھی سیاحت سے اتنے پیسے اکٹھے کرسکتے ہیں کہ ہمیں ڈالر کی ضرورت نہ پڑے۔، اس سے قبل د وزیراعظم عمران خان نے امیر قطر شیخ تمیم بن حمد الثانی سے ون آن ون ملاقات کی جس میں دو طرفہ تعلقات سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا گیادیوان امیری پہنچنے پر امیر قطر شیخ تمیم بن حمد الثانی نے وزیراعظم عمران خان کا شاندار استقبال کیا۔ اورگارڈ آف آنر بھی پیش کیا گیا۔امیر قطر شیخ تمیم بن حمد الثانی سے ون آن ون ملاقات کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان وفود کی سطح پر ملاقات ہوئی۔

Leave a Reply