ماسک نہ پہننے والوں کیخلاف کارروائی شروع، درجنوں علاقوں میں سمارٹ لاک ڈاﺅن

ماسک نہ پہننے والوں کیخلاف کارروائی شروع، درجنوں علاقوں میں سمارٹ لاک ڈاﺅن

Spread the love

اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن پاکستان نیوز ) ماسک نہ پہننے والوں

کرونا کی تیسری لہر سے ملک بھر میں مزید 57 افراد جاں بحق ہونے کے بعد مہلک وائرس سے

ہونیوالی اموات کی مجموعی تعداد 14 ہزار 215 تک پہنچ گئی، این سی او سی کے اعداد و شمار کے مطابق

24 گھنٹے کے دوران 45 ہزار 656 کورونا ٹیسٹ کیے گئے جن میں سے 4 ہزار 767 افراد کا ٹیسٹ مثبت

آ گیا۔ مہلک وائرس سے 6 لا کھ 54 ہزار 591 افراد متاثر ہو چکے ہیں جن میں سے 44 ہزار 447 ایکٹو

کیسز ہیں جبکہ کرونا سے متاثر 3 ہزار 43 مریضوں کی حالت تشو یشنا ک ہے۔ کرونا سے 24 گھنٹے

کے دوران 2 ہزار 647 مریض صحت یاب ہوئے جبکہ مرض کو شکست دینے والے افراد کی مجموعی

تعداد 5 لاکھ 95 ہزار 929 ہو گئی ہے۔ کرونا کی صورتحال روز بروز خطرناک ہونے کے سبب پنجاب

حکومت نے صو بے بھرمیں لاک ڈاون کا عندیہ دےدیا، این سی او سی اجلاس میں اہم فیصلے متوقع ہیں۔

لاہور کے مزید 27 اور فیصل آباد کے انیس علاقوں میں سمارٹ لاک ڈاون نافذکر دیا گیا۔ جبکہ صوبائی

دارالحکومت لاہور میں کرونا وائرس کی شرح میں تیزی سے اضافہ کے باعث شہر میں مثبت کیسز کی شرح 23 فیصد تک پہنچ گئی ۔ سیکرٹری صحت پنجاب نے تجویز دی ہے

14دن لوگوں کا میل جول مکمل طور پر بند ،کرونا ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کروایا جائے۔

کرونا ایس او پیز کی خلاف ورزی پر ایکشن لیتے ہوئے لاہور میں ماسک نہ پہننے پر40 افراد کو حراست

میں لیکر مقدمات درج کرلئے گئے ، بغیر ماسک سواریاں بٹھانے والی پبلک ٹرانسپورٹ کی بھی پکڑ

دھکڑ جاری ہے ۔صوبائی دارالحکومت لاہور میں کرونا کیسز میں ہوشربا اضافے کے بعد محکمہ صحت و

ضلعی انتظامیہ نے مکمل لاک ڈاو¿ن کی سفارشات تیار کر لی ہیں، جو کابینہ کمیٹی انسداد کورونا کے

سامنے پیش کی جائیں گی ۔ان سفارشات میں تمام شادی ہالز، ریسٹورنٹ اور پبلک ٹرانسپورٹ ، تمام کاروباری

مقامات، مارکیٹس کو مکمل بند کرنے کی بھی تجاویز بھی شامل ہیں ۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر

(این سی او سی)نے ملک میں کرونا وبا کی تیسری لہر کے باعث وبا کے زیادہ پھیلا ﺅ والے علاقوں میں

29 مارچ سے لاک ڈاﺅن جبکہ 5اپریل سے ملک بھر میں انڈور و آﺅٹ ڈور شادی تقریبات،سماجی، ثقافتی

اور سیاسی جلوسوں سمیت تمام تقریبات پر مکمل پابندی لگادی گئی ہے۔ بین الصوبائی ٹرانسپورٹ سے

متعلق حتمی فیصلہ صوبوں کی مشاورت سے کیا جائے گا،تمام زمینی، فضائی اور ریلوے کا ڈیٹا دیکھ کر

فیصلہ کیا جائےگا۔اسلام آباد میں کرونا کے مثبت کیسز کی شرح 10 فیصد سے زائد ہوگئی ہے ،وفاقی

دارلحکومت کے 12سب سیکٹرز میں وائرس کے حملوں میں تیزی کے پیش نظر ڈی ایچ او اسلام آباد نے

ان 12 سب سیکٹرز کو ریڈ زون قراردیتے ہوئے ان سب سیکٹرز میں نقل و حمل محدود ، ایس او پیز پر

عملدرآمد یقینی بنانے کی سفارش کی گئی ہے ۔پشاور میں کورونا مثبت کیسوں کی شرح 28 اور سوات میں

26 فیصد ہوگئی۔وزیر صحت خیبر پختونخوا تیمور سلیم جھگڑا کے مطابق نوشہرہ میں کورونا مثبت کیسوں

کی شرح 19 فیصد، بونیر میں 16 فیصد، مردان اور مالاکنڈ میں 12 فیصد جبکہ باجوڑ، چارسدہ اور

صوابی میں 11 فیصد ہے۔ دوسری جانب کرونا کیس رپورٹ ہونے پر پشاور کے مزید 9علاقوں میں

سمارٹ لاک ڈاو¿ن نافذ کردیا گیا۔ نوٹیفیکیشن کے مطابق سمارٹ لاک ڈاو¿ن

اتوار کی شام چھ بجے

سے نافذ کر کے ان علاقوں سے ان آﺅٹ انٹری بند کر نے کا اعلان کیا گیاہے جبکہ گیارہ اضلاع میں مکمل

لاک ڈاﺅن کرنے پر غور شروع کردیا۔کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے پیش نظر محکمہ داخلہ بلوچستان

نے کوئٹہ میں دفعہ 144 نافذ کردی۔محکمہ داخلہ بلوچستان کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق

ضلع کوئٹہ میں دفعہ 144 کا نفاذکردیا گیا ہے۔ دفعہ 144 کے تحت شہر میں اجتماعات، دھرنوں

اور ریلیوں پر پابندی عائد کردی گئی ہے اور پانچ یا پانچ سے زائد افراد کے اکٹھا ہونے پر پابندی ہوگی۔

ماسک نہ پہننے والوں

=-= پاکستان سے متعلق مزید تازہ ترین خبریں ( =–= پڑھیں =–= )
=قارئین=ہماری کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply