جوہر ٹاﺅن دھماکہ، ماسٹر مائنڈ ملزم پیٹرپال کے گھر چھاپہ، 2 رابطہ کار گرفتار

جوہر ٹاﺅن دھماکہ، ماسٹر مائنڈ ملزم پیٹرپال کے گھر چھاپہ، 2 رابطہ کار گرفتار

Spread the love

لاہور،کراچی(جے ٹی این آن لائن نیوز) ماسٹر مائنڈ ملزم پیٹرپال

لاہور جوہر ٹاؤن بم دھماکے کے ماسٹر مائنڈ پیٹر پال ڈیوڈ کے کراچی کے علاقہ

محمود آباد میں واقع گھر پر سکیورٹی اداروں نے چھاپہ مار کر دوران تلاشی اہم

دستاویزات برآمد کر لیں۔ ذرائع کے مطابق پیٹرپال ڈیوڈ بحرین میں اسکریپ اور

ہوٹل کا کاروبار کرتا ہے، ابتدائی تحقیقات میں اس بات کا انکشاف ہوا ہے کہ ڈیوڈ

نے اپنی فیملی کو 2010ء میں بحرین سے پاکستان منتقل کیا، جبکہ خود وہیں پر

کاروبار کرتا رہا، ملزم ڈیڑھ ماہ پہلے بحرین سے کراچی پہنچا اور اس دوران وہ

تین مرتبہ لاہورآیا اور مجموعی طور پر 27 دن مقیم رہا، دوران قیام اس کے

مختلف افراد سے رابطے رہے، جن کے شواہد بھی مل گئے ہیں جبکہ سکیورٹی

اداروں نے پاکستان آنے کے دوران ملزم ڈیوڈ کا امیگریشن ڈیٹا بھی حاصل کر لیا

ہے۔

=-= پاکستان سے متعلق مزید تازہ ترین خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

دوسری طرف ملزم جوہر ٹاؤن میں بم دھماکے میں استعمال ہونیوالی کار کے

ڈرائیور کا گاڑی چھوڑ کر جانے کا بھی قانون نافذ کرنے والے اداروں نے سراغ

لگا لیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ ڈرائیور گاڑی پارک کرنے کے بعد چوک یتیم خانے گیا

اور وہاں سے پشاور جانے والی بس پر سوار ہوا، دہشت گرد کی پہچان کے لئے

موٹروے پولیس کی مدد حاصل کر لی گئی ہے جبکہ قانون نافذ کرنے والے اداروں

نے بند روڈ پر موجود بس اڈوں کا ریکارڈ قبضے میں لے لیا ہے، بس اڈو ں سے

کیمروں اور ٹکٹس کا ریکارڈ اکٹھا کیا گیا ہے، موٹروے سے بسوں میں کی جانے

والی ریکارڈنگ بھی قبضے میں لے لی گئی ہے۔

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

ادھر جوہر ٹاؤن دھماکے کی تفتیش کا دائرہ کار وسیع کرتے ہوئے قانون نافذ

کرنے والے اداروں نے پیٹرپال سے گاڑی لینے والے شخص کی گرفتاری کے

لئے چھاپے مارے اور پیٹر پال سے رابطے میں رہنے والے دو افراد کو حراست

میں لے لیا ہے، جن میں سے ایک شخص کو لاہور، دوسرے کو خیبر پختونخوا

سے پکڑا گیا جبکہ حساس ادارے کی جانب سے دھماکے میں استعمال کار کو

چیک کرنے والے اے وی ایل ایس کے اہلکار کا بیان بھی ریکارڈ کیا گیا جس میں

اہلکار سے دہشتگرد کا حلیہ اور قد و قامت پوچھی گئی گئی، ذرائع کا کہنا ہے

دہشت گرد نے پولیس اہلکار سے مکالمہ کیا، اہلکار نے لیبارٹری اور سپرداری کی

فائل طلب کی اور بعد میں اہلکار نے کوائف کی پڑتال کے بعد کار سوار کو جانے

دیا۔

=-،-= جوہر ٹاؤن میں سی ٹی ڈی کی تحقیقاتی عمل جاری

جوہر ٹاﺅن بی او آر سوسائٹی دھماکے کے تیسرے روز بھی متاثرہ علاقہ سخت

سکیورٹی کے حصار میں رہا۔ تیسرے روز بھی دھماکے کی تحقیقات کرنے والی

سی ٹی ڈی کی ٹیم جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کرنے میں مصروف رہی اور

پولیس کی بھاری نفری نے علاقے کو حصار میں لئے رکھا، غیر متعلقہ افراد کا

متاثرہ علاقے میں داخلہ بند رہا، یہ بھی بتایا گیا ہے دھماکے سے متاثرہ گھروں

کے مکین کسی دوسری جگہ منتقل ہو چکے ہیں، تاہم سکیورٹی اہلکار مکینوں کی

جانچ پڑتال کرنے کے بعد انہیں گھروں میں جانے کی اجازت دیتے رہے جبکہ

خفیہ ایجنسیوں کے اہلکاروں نے دھماکے سے املاک کو پہنچنے والے نقصانات کا

تخمینہ لگانے کا کام بھی شروع کر دیا ہے۔

ماسٹر مائنڈ ملزم پیٹرپال

Leave a Reply