0

مارشل لاء کی تمام صورتیں نا قابل قبول،علامہ ڈاکٹرمفتی راغب حسین نعیمی

Spread the love

ناظم اعلیٰ جامعہ نعیمیہ علامہ ڈاکٹرمفتی راغب حسین نعیمی نے کہا ہے جبروخوف سے حق کی آواز کودبایانہیں جاسکتا۔

جمہوری ریاست میںجبر کاکوئی عمل دخل نہیں،مارشل لاء کی تمام صورتیں نا قابل قبول، بے نامی جبر حق کا راستہ نہیں روک سکتا ۔ ملک وقوم کی ترقی وخوشحالی کیلئے ریاست کو جمہوری روایت کے مطابق چلایاجائے۔

جمہوری ریاست میں ہرشہری کو آزاد ی اظہار رائے کاحق ملناچاہیے۔ آمریت کی صورت میں جمہوری مارشل لاء قوم کا کسی صورت ترجمان نہیں ہو سکتا۔

بے گناہ علما کو گرفتاریاں، اہل قلم پر بے جا پابندیاں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں ہیں۔ہر شہری کو آئین و قانون کی روشنی میںآزاد زندگی گزارنے کے تمام مواقع فراہم کئے جائیں۔

معیشت کی ڈگمگاتی غیر یقینی صورتحال نے لوگوں میں خوف پیدا کر دیا ہے۔ہر لمحہ بڑھتی مہنگائی نے شہریوں کی زندگیوں کو اجیرن بنا دیا ہے۔ ہمیں اصولوں کی بنیاد پر ذاتی مفادات کو بالاطاق رکھتے ہوئے اسلام کی سربلندی اور ملک و قوم کی ترقی کے لئے اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔

مدارس کی رجسٹریشن اور نصاب کی تشکیل کے حوالے سے حکومت سے ہر ممکن تعاون کیلئے تیار ہیں لیکن مدارس اور مساجد کی رجسٹریشن کے عمل کو آسان بنایا جائے،

ان خیالات کا اظہار انہوں نے تحفظ ناموس رسالت محاذ اور جامعہ نعیمیہ کے زیر اہتمام شہیدپاکستان ڈاکٹرسرفرازنعیمی شہید ؒ کی یادمیں تحفظ ناموس رسالت ؐ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

تحفظ ناموس رسالت سیمینار میں پیش کی گئی دو قراردادوں کو متفقہ طور پر منظور کیا گیا جس میں پہلی قرار داد کے مطابق ’’قومی ، صوبائی حکومتیں اور ملکی ایجنسیاں پر امن محب وطن اہلسنت علما و مشائخ کے خلاف نارروا اور ظالمانہ کارروائیاں فورا بند کریں اور انہیں دیوار کے ساتھ نہ لگایا جائے

دوسری قرار داد کے مطابق ختم نبوت اور نامور رسالت سے متعلق ملکی قوانین میں کسی قسم کی ترمیم یا انہیں غیر موثر بنانے کیلئے چھیڑ چھاڑ قطعا قبول نہیں کی جائے گی،اگر ایسا کیا گیا تو ہم جان و مال اور سب کچھ قربان کر کے اس کا تحفظ یقینی بنائیں گے‘‘

Leave a Reply