لوڈ شیڈنگ 14گھنٹے تک پہنچ گئی،تربیلا کے 15 پیداواری یونٹ بند

Spread the love

این ٹی ڈی سی کے ٹرانسمیشن سسٹم اور گرڈ سٹیشنوں کیلئے دھند وبال بن گئی ہے اور مسلسل 3 روز سے بجلی ہونے کے باوجود صارفین کو چند گھنٹوں کیلئے بھی بجلی میسر نہیں ہے۔نیشنل ٹرانسمیشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی (این ٹی ڈی سی) صارفین کو بلاتعطل بجلی فراہم کرنے میں ناکام ہوگیا، ایک نہیں دو نہیں بلکہ ایک درجن سے زائد پاور پلانٹس اور 500 کے وی ٹرانسمیشن لائنز ٹرپ کرگئی ہیں۔ دھند نے این ٹی ڈی سی کے سسٹم کو اپنی لپیٹ میں لے لیا جس کی وجہ سے این ٹی ڈی سی کا سسٹم بیٹھ گیا۔این ٹی ڈی سی کے ترجمان کے مطابق این ٹی ڈی سی کا نظام 3 روز سے دھند کو برداشت نہیں کر پا رہا، پاور پلانٹس کے سوئچ یارڈ سے لیکر انسولیٹرز تک خراب ہو رہے ہیں جن کو این ٹی ڈی سی کے انجینئرز ٹھیک کرنے میں مصروف ہیں۔وفاقی وزیر پاور ڈویژن عمر ایوب خان نے کہا ہے کہ پنجاب اورشمالی سندھ میں دھند کی وجہ سے بجلی کی ترسیل میں کسی بھی قسم کی تکنیکی خرابی کو دور کرنے کیلئے ہنگامی ٹیمیں مقرر کر دی گئیں ۔دوسری طرف ترجمان تربیلا ڈیم کے مطابق تربیلا پن بجلی گھرکے 15 پیداواری یونٹ بند ہوگئے جس کے بعد تربیلا ڈیم سے پانی کے اخراج میں مزید کمی کا سامنا ہے۔ترجمان کے مطابق تربیلا ڈیم کے صرف دویونٹ بجلی پیدا کررہے ہیں، ڈیم سے 141 میگاواٹ بجلی پیدا ہورہی ہے، ڈیم میں پانی کی آمد 14600 کیوسک، اخراج 5000 کیوسک ہے، ڈیم میں پانی کی سطح 1423.65 فٹ ہے جب کہ ڈیم کا ڈیڈ لیول 1388 فٹ ہے۔ادھر ملک میں بجلی کا شارٹ فال 2800 میگا واٹ سے تجاوز کر گیا جس کے باعث شہروں میں 12 جبکہ دیہی علاقوں میں 14 گھنٹے تک کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے۔ادھر صوبائی دارلحکومت لاہور سمیت پنجاب بھر میں شدید دھند کی وجہ سے معمولات زندگی متاثر ہو رہے ہیں ، ملتان خانیوال موٹر وے کو شدید دھند کی وجہ سے بند کر دیا گیا ، لاہور ایئرپورٹ پر فضائی آپریشن بھی بری طرح متاثر ہوا ور 14پروازیں منسوخ جبکہ 16پروازیں تاخیر کا شکار رہیں ، لاہور،فیصل آباد، کراچی اور کوئٹہ سے لاہورآنے والی ٹرینیں بھی دھند کی وجہ سے تاخیر کا شکار رہیں جس کی وجہ سے مسافروں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ۔

Leave a Reply