63

لاہور سفاری پارک، شیروں کے حملے میں نوجوان جاں بحق

Spread the love

رائے ونڈ (نمائندہ خصوصی)رائے ونڈ روڈ پر واقع سفاری پارک میں مقامی گائوں

اٹھووال کے18سالہ نوجوان بلال بلوچ کی مسخ شدہ نعش ملی ہے ، جس کے متعلق

ابتدائی طور پر یہی تاثر لیا جارہا ہے کہ متوفی نوجوان گھاس کاٹنے کیلئے سفاری

پارک کا جنگلا پھلانگ کر اندرداخل ہوا ہوگا اور کھلے شیروں کا نوالہ بن گیا ۔بلال

دو دن سے لاپتہ تھا، نوجوان کے لواحقین نے صبح سفاری پارک انتظامیہ سے

رابطہ کرکے پارک میں بچے کی تلاش شروع کی تو پارک سے انکے بچے کے

خون آلود کپڑے اور انسانی جسم کے کچھ ٹکڑے ملے اطلاع ملنے پر ایس ایچ او

تھانہ سٹی رائے ونڈ سید ثقلین شاہ بھاری نفری کے ہمراہ موقع پر پہنچ گیا اور

تحقیقات شروع کردی ،مرنے والا نوجوان بلال اٹھووال گاؤں کارہائشی تھا اور اس

کاچچا منیرسفاری پارک میں ملازم تھا،ذرائع کے مطابق بلال جنگلا پھلانگ کر

گھاس کاٹنے پارک میں آیا تھا جسے شیروں نے چیر پھارڈ کر ہلاک کردیا ، جائے

وقوعہ سے کٹی ہوئی گھاس،جوتے، درانتی اورانسانی باقیات ملی ہیں۔ نوجوان کے

والد محمد شریف نے پارک انتظامیہ کے خلاف کسی بھی قسم کی قانونی کارروائی

سے انکار کرتے ہوئے بیٹے کی لاش حوالے کرنے کا مطالبہ کیا اور پولیس کو

تحریر بھی دیدی ہے مگر اس کے برعکس مرنے والے نوجوان کی والدہ انوربی

بی اور خاندان بھر کے افراد نے واقعہ کو سفاری پارک انتظامیہ کی غفلت کا نتیجہ

قرار دیتے ہوئے لاہور رائے ونڈ روڈ بلاک کردیا اور شدیدمظاہرہ کرتے رہے

،والدہ انور بی بی نے کہا کہ اس کے شوہرکا صدمے کی وجہ سے ذہنی توازن

ٹھیک نہیں ،اس پر دبائو ڈال کر تحریری بیان لیا گیا ہے ،مگروہ اپنے بیٹے کے

قاتلوں کو معاف نہیں کرے گی ،اس نے مزید کہا کہ وائلڈ لائف پارک میں نعشیں

ملنا کوئی نئی بات نہیں ،ان کے ایک رشتہ دار منیر کو دس سال قبل بھی دشمنوں

نے قتل کرکرکے نعش سفاری پارک میں شیروں کے جنگلے میں پھینک دی تھی

جو کہ بعد میں ثابت ہوگیا تھا کہ مرنے والے کو قتل کرکے یہاں پھینکا گیا ہے ،اس

نے الزام لگایا کہ اس طرح کے واقعات میں سفاری پارک انتظامیہ کا ملوث ہونا

کوئی بڑی بات نہیں ،اس نے کہا کہ نوجوان بلال بلوچ کی پراسرار ہلاکت کا معاملہ

بھی کچھ ایسا ہی نظر آرہا ہے ،اس کی پوری تحقیقات کی جائے اور نعش کا پوسٹ

مارٹم کروایا جائے ،دوروز قبل اسی جگہ پر اپنے بیٹے کو تلاش کرنے کیلئے آئی

تھی مگر یہاں کچھ نہیں تھا ،اس نے کہا کہ سفاری پارک انتظامیہ کے پاس میرے

بیٹے کے سفاری پارک میں پھلانگنے کی کوئی سی سی ٹی وی ویڈیو نہیں ،یہ سب

ملی بھگت کا نتیجہ ہے ،یادرہے کہ سفاری پارک کے جنگلوں کے اوپر کسی قسم

کے سی سی ٹی وی کیمرے نہیں لگائے گئے اور نہ ہی سکیورٹی کا فول پروف

انتظام موجود ہے کہ اس طرح کے واقعات کو روکا جاسکے ،اہلیان علاقہ کی

جانب سے واقعہ سفاری پارک انتظامیہ کی ناقص سکیورٹی کا پیش خیمہ قرار دیا

جارہا ہے ۔تاہم پولیس نے موقع پر پہنچ کر جلوس و مظاہرین کو منتشر کردیا ۔

دوسری طرف وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے واقعہ کا نوٹس لے لیا ہے جبکہ

اسسٹنٹ کمشنر رائے ونڈ عدنان رشید اور اے ایس پی رائے ونڈ رضاتنویر نے

سفاری پارک کا دورہ کیا ۔فرانزک ٹیم موقع سے ہلاک ہونے والے نوجوان کی

باقیات اکٹھی کرکے لیجاچکی ہیں ۔متوفی کے والد کی جانب سے سفاری پارک

انتظامیہ کیخلاف درخواست دیدی گئی ہے ۔جس پر فوری کارروائی عمل میں لائی

جارہی ہے ۔اور تمام پہلوئوں کا جائزہ لیا جارہا ہے ،متوفی غریب گھر کا واحد کفیل

تھا ،گھر میں صف ماتم بچھ چکی ہے ۔لواحقین بدستور سراپا احتجاج ہیں۔

Leave a Reply