Imran Khan Prim minister Pakistan 72

لاک ڈاؤن کا فائدہ تب ہوگا جب گھروں میں کھانا پہنچائیںگے،عمران خان

Spread the love

لاہور،اسلام آباد (جنرل ،سٹاف رپورٹرز) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کرونا وائرس کیخلاف جنگ لمبی ہے، مہلک وباء کسی کو نہیں چھوڑتی، لوگ سوشل میڈیا کی غلط باتو ں پر نہ جائیں۔کوئی اس غلط فہمی میںٕ نہ رہے کہ پاکستان میں کرونا وائرس نہیں پھیلے گا،گورنر ہاؤس میں کرونا وائرس سے متعلق وزیراعظم ریلیف فنڈز کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کاکہنا تھا تقریب کے انعقاد پر گورنر پنجاب چودھری محمد سرور اور مخیر حضرات کا مشکور ہوں۔ مشکل وقت قوموں کا امتحان ہوتا ہے، پاکستان کے توویسے ہی پہلے بہت برے حالات تھے۔ مشکل وقت میں صبرکرنیوالے انسان عظیم انسان اور قوم عظیم قوم بن جاتے ہیں۔

برا وقت اللہ کی طرف سے امتحان ہوتا ہے۔ پاکستان کا نظریہ اسلامی فلاحی ریاست ہے۔ بدقسمتی سے ہم اس نظریے سے بہت دورچلے گئے ۔ مدینہ کی ریاست پوری دنیا کیلئے ماڈل تھا۔ بدقسمتی سے ہم اسلام کوووٹ لینے کیلئے استعمال کرتے ہیں، اللہ نے قرآن میں کہاہے میرے رسول ؐکی زندگی سے سیکھو۔وزیراعظم کا کہنا تھا 2 ہزارارب ڈالرکا امریکہ نے ریلیف پیکیج دیا، امیرملکوں اورپاکستان کے معاشی حالات میں بڑا فرق ہے، معاشی طورپرمستحکم ملک بھی مشکل میں ہے۔ مشکل وقت میں ہم نے 8 ارب ڈالر کا پیکیج دیا ، میں قوم کو یقین دلاتا ہوں مزید پیکیج دیں گے۔ اللہ کی طرف سے کرونا وائرس عذاب ، اس سے بچنا اور نمٹنا بہت بڑا چیلنج ہے۔

قوم جب اس چیلنج سے نکلے گی تو مختلف ہو گی۔ لاک ڈاؤن سے متاثرہ طبقے کا خیال رکھنا چیلنج ہے، دس کروڑ لوگ متاثر ہوئے ہیں، اس سے سفید پوش طبقہ بھی متاثر ہو گا، ہم نے تعمیراتی انڈسٹری کو کھول دیا ہے۔ تعمیراتی انڈسٹری کھلنے سے لوگوں کو روزگار ملے گا، روزانہ کی بنیاد صورتحال کا جائزہ لیتے ہیں۔ اس وقت 6 لاکھ لوگ ٹائیگر فورس کے ممبر بن چکے ہیں۔ ہم ڈیٹا کی بنیاد پرلاک ڈاؤن کررہے ہیں، لاک ڈاؤن کا فائدہ تب ہوگا جب گھروں میں کھانا پہنچائیں گے، جو لوگ عطیہ کرنا چاہتے ہیں ہم انہیں بتائیں گے یہ لوگ متاثرہ ہیں، ان کی مدد کریں۔ عثمان بزدار پنجاب میں اچھا کام کر رہے ہیں، بڑی اچھی رپورٹس آرہی ہیں ۔انکا کہنا تھا فیس بک لانچ کررہے ہیں، حکومت کے پاس مستحق لوگوں کا ڈیٹا موجود ہے، سیاسی پارٹی سے وابستگی سے بالاتر ہو کرمستحقین کو پیسہ دیا جائے گا۔

ہمارے ایم این ایز،ایم پی ایزکا امتحان ہے، مشکل وقت میں خدمت کریں، بدقسمتی سے سیاست بدنام عوام کی بجائے ذات کیلئے کام کرنے سے ہوئی۔ قبل ازیں لاہور ایکسپو سنٹرمیںقائم فیلڈ ہسپتال کے دورے کے موقع پر وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا بہت جلد ملک میں بڑھتے ہوئے کرونا وائرس سے نمٹنے میں کامیاب ہو جائیں گے۔ دورے کے دوران وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے وزیراعظم عمران خان کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا اس ہسپتال میں تمام ضروری سہولتیں موجود ہیں، محکمہ صحت، ضلعی انتظامیہ ،ریسکیو1122اور دیگر محکموں نے ملکر کام کیا۔

اس موقع پر وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے بھی وزیراعظم کو بریفنگ دی،اور بتایا پنجاب کے مختلف اضلاع میں وزیراعلیٰ کی ہدایت پر فیلڈ ہسپتال قائم ، سیالکوٹ، گوجرانوالہ، جہلم میں بھی زبردست قرنطینہ سنٹر بنادئیے گئے۔جہاں پروفیسر، ڈاکٹرز کی ٹیم ہمہ وقت مریضوں کے علاج معالجے میں مصروف ہے۔اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا بس ہمت نہیں چھوڑنی، محنت ،لگن اورشوق سے خدمت کریں، وزیراعلیٰ صاحب آپ اور آپ کی ٹیم نے تو یہاں بہت زبرد ست کام کیا۔اس سے قبل وزیراعظم عمران خان جب لاہور پہنچے تو ان کیساتھ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر سائنس وٹیکنالوجی فواد چودھری، وزیر وفاقی تعلیم شفقت محمود، معاو نین خصوصی ڈاکٹر ثانیہ نشتر، شہزاد اکبر اور عثمان ڈار بھی ساتھ تھے ۔

اس سے قبل سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا لاک ڈاؤن کے تباہ کن اثرات سے بچنے کیلئے زرعی سیکٹر کھلا رکھا، اب تعمیراتی شعبہ بھی کھول رہے ہیں۔وزیراعظم عمران خان نے لکھا کرونا وائرس کے باعث ملک میں تعلیمی ادارے، مالز، شا د ی ہالز، ریستوران اور عوامی اجتماعات بند کر دیئے۔انہوں نے کہا خطے میں غربت کی بڑی شرح کے باعث متوازن اقدامات کرنے ہیں، ہمیں کرونا کی روک تھام کیساتھ لوگوں کو بھوک سے بچانے کے عمل کو بھی یقینی بنانا ہے، ہماری کوشش ہے معیشت کا شیرازہ بھی نہ بکھرے، حقیقت ہے ہم ایک تنی ہوئی رسی پر گامزن ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں