صوبے لاک ڈاون کے بارے میں انفرادی فیصلہ نہیں کرسکتے، فواد چوہدری

Spread the love

لاک ڈاون انفرادی فیصلہ

اسلام آباد(جے ٹی این آن لائن نیوز) وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ صوبے لاک ڈاﺅن سے متعلق انفرادی

فیصلہ نہیں کرسکتے، اگراین سی او سی طریقہ کار کے مطابق نہیں چلیں گے تو وفاقی حکومت آئینی اختیارات استعمال کرے

گی۔ پیر کوفواد چوہدری نے اپنے بیان میں کہا کہ وفاق نے کئی دن سے اپنی پوزیشن واضح کر رکھی ہے، وزیراعلی سندھ

نے اسد عمر اور ڈاکٹر فیصل سے رابطہ کیا اور کہا کہ ہم صوبے میں لاک ڈان کرنے جارہے ہیں،صوبے لاک ڈان سے متعلق

انفرادی فیصلہ نہیں کرسکتے، اس حوالے سے سندھ حکومت کو اپنے طور پر فیصلے کرنے کا اختیارنہیں ہے، کورونا

وائرس کی تین لہروں کا سب نے مشترکہ طور پر مقابلہ کیا جب کورونا کی3لہروں کا سامنا کیاہے تو پھراپنا طریقہ کار کیوں

بدلیں گے؟انہوں نے کہا کہ سوچنا ہوگا کہ آخر کراچی میں کورونا کی شرح30فیصد تک پہنچی کیوں؟ وہ اس لیے کہ سندھ

حکومت کورونا ایس اوپیز پر عمل درآمد نہیں کراسکی ،انڈسٹریز کو مکمل بند نہیں کرسکتے، دیہاڑی دار طبقے کو بیروزگار

نہیں کرسکتے، این سی اوسی طریقہ کار کے مطابق آگے بڑھنا چاہیے۔وزیراطلاعات نے واضح الفاظ میں کہا کہ اگراین سی

او سی طریقہ کار کے مطابق نہیں چلیں تو وفاقی حکومت آئینی اختیارات استعمال کرے گی۔ چوہدری فواد حسین نے کہا ہے

کہ ملک بھر میں پیغام پاکستان ضابطہ اخلاق پر عملدرآمد کرنے کا اعلان خوش آئند ہے،حکومت ملک میں محرم الحرام کے

دوران قیام امن کیلئے ہرممکن اقدامات اٹھا رہی ہے،پاکستان علما کونسل ،متحدہ علما بورڈ کا ملک میں مذہبی ہم آہنگی ،بھائی چارہ

کے فروغ کیلئے کردار لائق تحسین ہے،کچھ عناصر ملک میں فرقہ واریت کو ہوا دینے کیلئے ملک دشمن قوتوں کے ہاتھوں

کھیل رہے ہیں، یہ اپنے عزائم میں کبھی کامیاب نہیں ہوں گے۔ تفصیلات کے مطابق پیر کو وفاقی وزیر اطلاعات چوہدری فواد

حسین سے وزیراعظم کے نمائندہ خصوصی برائے مذہبی ہم آہنگی و مشرق وسطی حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے ملاقات

کی ۔ ملاقات کے دوران ملک میں محرم الحرام کے دوران امن و امان کو برقرار رکھنے کیلئے اقدامات اور پیغام پاکستان

ضابطہ اخلاق پر عمل درآمد کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیر اطلاعات چوہدری فواد حسین نے کہا کہ ملک بھر میں

پیغام پاکستان ضابطہ اخلاق پر عمل درآمد کرنے کا اعلان خوش آئند ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ملک میں محرم الحرام کے

دوران امن و امان کے قیام کیلئے ہرممکن اقدامات اٹھا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس ضمن میں پاکستان علما کونسل اور متحدہ

علما بورڈ کا ملک میں مذہبی ہم آہنگی اور بھائی چارہ کے فروغ کیلئے کردار لائق تحسین ہے۔ وزیر اطلاعات نے کہا کہ اسلام

سلامتی، امن، رواداری، تحمل، برداشت اور عدم تشدد کا مذہب ہے۔انہوں نے کہا کہ فرقہ وارانہ منافرت، مسلح فرقہ وارانہ

تصادم اور طاقت کے زور پر اپنے نظریات دوسروں پر مسلط کرنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں

مذہبی ہم آہنگی کے فروغ کیلئے میڈیا کا کردار نہایت اہمیت کا حامل ہے،کچھ عناصر ملک میں فرقہ واریت کو ہوا دینے کیلئے

ملک دشمن قوتوں کے ہاتھوں کھیل رہے ہیں، یہ اپنے عزائم میں کبھی کامیاب نہیں ہوں گے۔ اس موقع پر حافظ طاہر محمود

اشرفی نے کہا کہ نفاذ شریعت کے نام پر طاقت کا استعمال، ریاست کے خلاف مسلح محاذ آرائی، تخریب کاری و فساد اور

دہشت گردی کی تمام صورتیں شریعت کی رو سے حرام ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام مسالک کے علما و مشائخ اور مفتیان

پاکستان انتہا پسندانہ سوچ اور شدت پسندی کو مسترد کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ محرم الحرام کے دوران امن و امان کو ہر

صورت برقرار رکھا جائے گا۔

لاک ڈاون انفرادی فیصلہ

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply