لاپتہ افراد کیس، سندھ ہائیکورٹ کا وفاقی سیکرٹری داخلہ کو گرفتارکرنےکا حکم

لاپتہ افراد کیس، سندھ ہائیکورٹ کا وفاقی سیکرٹری داخلہ کو گرفتارکرنےکا حکم

Spread the love

کراچی(جے ٹی این آن لائن نیوز) لاپتہ افراد کیس

سندھ ہائیکورٹ نے لاپتا افراد کی بازیابی سے متعلق درخواستوں پر بار بار طلبی

کے باوجود پیش نہ ہونے پر وفاقی سیکرٹری داخلہ کے ناقابل ضمانت وارنٹ

گرفتاری جاری کرتے ہوئے آئی جی اسلام آباد کو وفاقی سیکرٹری داخلہ یوسف

نسیم کو گرفتار کر کے پیش کرنے کا حکم دیدیا۔

=-.-= صوبہ سندھ کی مزید خبریں ( == پڑھیں == )

جسٹس کے کے آغا اور جسٹس عبد المبین لاکھو پر مشتمل دو رکنی بینچ کے

روبرو لاپتا افراد کی بازیابی سے متعلق درخواستوں پر سماعت ہوئی۔ لاپتا افراد

کی عدم بازیابی پر عدالت وفاقی سیکرٹری داخلہ پر برہم ہو گئی۔ عدالت نے بار بار

طلبی کے باوجود پیش نہ ہونے پر وفاقی سیکرٹری داخلہ کے ناقابل ضمانت وارنٹ

گرفتاری جاری کردیئے۔ عدالت نے آئی جی اسلام آباد پولیس کو وفاقی سیکرٹری

داخلہ یوسف نسیم کو گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دیدیا۔ عدالت نے حکم دیا کہ

وفاقی سیکرٹری داخلہ کو گرفتار کرکے 27 مئی کو سندھ ہائیکورٹ میں پیش کیا

جائے۔ جسٹس کے کے آغا نے ریمارکس دیئے کئی بار حکم نامہ جاری کیا کہ لاپتا

افراد کا سراغ لگایا جائے۔

=-.-= وفاقی سیکرٹری داخلہ توہین عدالت کے مرتکب ہو رہے ہیں، عدلیہ

وفاقی سیکرٹری داخلہ کی جانب سے حراستی مراکز کی رپورٹ کی پیش کی جاتی

ہے نہ وہ خود پیش ہوتے ہیں۔ ایڈیشنل سیکرٹری اور جوائنٹ سیکرٹری داخلہ کو

پیش کرنے کے بجائے ڈپٹی سیکرٹری داخلہ کو بھیج دیا گیا۔ عدالت کی جانب سے

جاری شوکاز نوٹس کا جواب بھی نہیں دیا گیا۔ وفاقی سیکرٹری داخلہ سندھ ہائی

کورٹ کے حکم کی مسلسل کھلم کھلا خلاف ورزی کر رہے ہیں۔ شہریوں کے

حقوق کا تحفظ کرنا سب پر لازم ہے۔ شہری کئی برسوں سے لاپتا ہیں اور وفاقی

سیکرٹری کو کوئی پرواہ نہیں۔ بعدازاں عدالت نے کیس کی سماعت 27 مئی تک

ملتوی کر دی-

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

یاد رہے کہ سندھ ہائی کورٹ نے لاپتا شہری شمشاد علی کی گمشدگی پر سیکرٹری

داخلہ سے رپورٹ طلب کی تھی۔ شہری شمشاد علی 2015ء سے شہر قائد کراچی

سے لاپتا ہیں۔

لاپتہ افراد کیس

Leave a Reply