133

قاسم سلیمانی کے جنازے میں بھگدڑ، 50 افراد جاں بحق، تدفین موخر

Spread the love

تہران ،واشنگٹن،کوالالمپور(مانیٹرنگ ڈیسک) ایرانی جنرل قاسم سلیمانی شہید کی

نماز جنازہ کے دوران بھگدڑ مچنے سے 50 افراد جاں بحق جبکہ 215 شدید

زخمی ہیں۔ایران کے سرکاری ٹیلیویژن کے مطابق جنرل سلیمانی کے جنازے میں

شرکت کیلئے ایران بھر سے افراد جوق در جوق لاکھوں افرادکرمان پہنچے تھے۔

جنازے میں شریک لاکھوں افراد سیاہ لباس پہنے ہوئے آئے اور امریکہ اور

اسرائیل مخالف نعرے بازی بھی جاری رکھے ہوئے تھے۔عینی شاہدین کا کہنا تھا

کہ ہزارہا افراد ایرانی پرچم میں لپٹے جنرل سلیمانی کے تابوت کے ارد گرد جمع

تھے کہ وہاں اچانک بھگدڑ مچ گئی۔ زخمیوں کو ہسپتال منتقل کردیاگیا۔دوسری

طرف ایرانی پارلیمنٹ نے امریکی فوج کو دہشت گرد تنظیم قرار دینے کا بل

منظور کر لیا۔تفصیلات کے مطابق یہ اقدام اس امریکی بیان کے بعد سامنے آیا ہے

جس میں کہا گیا تھا کہ اگر کسی بھی ملک نے ایرانی تیل خریدنا جاری رکھا تو اس

کے خلاف پابندیاں لگا دی جائیں گی۔ایرانی پارلیمنٹ میں بل کی منظوری کے موقع

پر مردہ باد امریکہ اور انتقام انتقام کے فلک شگاف نعرے لگائے گئے۔ایران کی

پارلیمنٹ میں بل کی منظوری کے موقع پر مردہ باد امریکہ، انتقام انتقام اورنہ ذلت

قبول نہ سازش قبول کے فلک شگاف نعرے لگائے گئے۔اس موقع پر ایران کی

پارلیمنٹ کے سپیکر علی لاریجانی نے کہا کہ امریکی وزارت دفاع پنٹاگون کے

تمام حکام اس سے وابستہ افراد، ادارے، کمپنیاں اور وہ عناصرجو جنرل قاسم

سلیمانی کی شہادت میں ملوث تھے دہشتگرد ہیں۔ علی لاریجانی نے امریکی صدر

ٹرمپ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اپنے فیصلے کے خطرناک نتائج کیلئے تیار

رہو۔

اپنا تبصرہ بھیجیں