72

بارہ سال سے فیکٹری میں ملازم کی مالک سے نمک حرامی

Spread the love

لاہور(جتن آن لائن کرائم رپورٹر ) فیکٹری ملازم نمک حرامی

50 سالہ شکیلہ بی بی کے قتل کا ڈراپ سین ہو گیا، شوہر کی فیکٹری میں گز شتہ 12 سال سے ملازم قاتل نکلا۔

مزید پڑھیں : اداکارہ نے اپنے سابقہ بوائے فرینڈ کو مار مار کر قتل کردیا

تفصیلات کے مطابق لواحقین نے 2 بچوں کی ماں شکیلہ بی بی کی موت کو طبعی موت سمجھتے ہوئے دفنا دیا تھا، تاہم گلے پر نشانات نے موت کو مشکوک بنا دیا۔
بتایا گیا ہے کہ ملزم فرید مقتولہ کے شوہر ناصر کی فیکٹری میں گزشتہ 12 سال سے ملازم تھا۔ مالک کے کراچی، بیٹوں کے اپنے کاموں کی جگہوں پر ہونے جبکہ مقتولہ کے گھر میں اکیلے ہونے پر ملزم نے مالک کے گھرمیں چوری کا منصوبہ بنایا۔ دوران چوری مقتولہ کو پتہ چل جانے پرملزم فرید نے اپنی شناخت چھپانے کے لیے پھندا ڈال کرشکیلہ کو قتل کیا۔ ملزم قتل کی واردات کے بعد طلائی زیورات، نقدی اور دیگر قیمتی اشیاء چوری کرکے فرار ہو گیا تھا۔

قتل کی وجہ پیسوں کا لالچ

نشے کی لت میں مبتلا ملزم فرید کو پیسوں کے لالچ نے قتل جیسا بھیانک قدم اٹھانے پر مجبور کیا۔ ملزم کو سیف سٹی کیمروں، موبائل فون ریکارڈ سمیت جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے گرفتار کیا گیا۔ مقتولہ شکیلہ بی بی کی قبر کشائی کے بعد پوسٹ مارٹم رپورٹ میں مقتولہ کو گلہ دبا کر قتل کرنا ثابت ہوا۔ مزید تفتیش جاری ہے- پولیس کا کہنا ہے جلد ہی مزید حقائق بھی سامنے آ جائیں گے-

فیکٹری ملازم نمک حرامی

Leave a Reply