Imran Khan Prim minister Pakistan 120

فیصل آباد کاخصوصی اقتصادی زون پاکستان کی ترقی کی جانب پہلا قدم، وزیراعظم

فیصل آباد/اسلام آباد(سپیشل رپورٹر) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان

کا مستقبل صنعتی ترقی سے مشروط ہے لیکن سرمایہ دار کیخلاف مہم چلا کر

صنعتی ترقی کا پہیہ روک دیا گیا،صنعتی ترقی کی طرف نہ بڑھے تو نوجوانوں

کو روزگار دینا مشکل ہو جائے گا کیونکہ سرمایہ کاری نہیں ہوگی تو ملک نہیں

ترقی کر سکتا ، خصوصی اقتصادی زونر ملکی ترقی کی طرف پہلا قدم ہے۔ان

خیالات کا اظہار انہوں نے علامہ اقبال انڈسٹریل سٹی کے سنگ بنیاد کی تقریب

سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے قومی دولت میں اضافہ

کرنا اور عوام پر خرچ کرنا ہے،چین نے 70 کروڑ لوگوں کو غربت سے نکالا جو

ہمارے لئے ایک ماڈل ہے۔ تاہم دنیا چین کی ترقی سے خوفزدہ ہے۔انہوں نے کہا کہ

چین پاکستان میں بہت دلچسپی رکھتا ہے، وہاں کے سرمایہ کار یہاں آنا چاہتے ہیں

تاہم ہمیں تعلیم اور فنی تعلیم پر توجہ دینا ہے جبکہ چین ہمارے لئے ٹیکنیکل

ایجوکیشن کے ادارے بنائے گا۔انہوں نے ایک اہم موضوع پر بات کرتے ہوئے کہا

کہ دنیا بھر میں تقاریب اپنی اپنی قومی زبان میں ہوتی ہیں لیکن انگریزی زبان کا

بے موقع استعمال غلامانہ سوچ کی عکاسی کرتا ہے۔ جانتا ہوں قومی اسمبلی میں

کتنے لوگ انگریزی جانتے ہیںمگر وہاں انگریزی میں تقریریں ہو رہی ہوتی ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ ہم انگریزی بول کر کمزور طبقے کی توہین کرتے ہیں۔ ہم یہ

نہیں سمجھتے کہ جو لوگ بیٹھے ہیں ان میں سے کافی انگریزی زبان نہیں

سمجھتے۔ پاکستان کی اسمبلی میں انگریزی میں تقریر ہوتی ہے۔ کبھی سنا ہے کہ

برطانیہ کی اسمبلی میں کوئی فرنچ زبان میں تقریر کرے۔انہوں نے کہا کہ مدینہ

دنیا کی سب سے پہلی فلاحی ریاست بنی تھی ہم بھی پاکستان کو ویسی ریاست بنانا

چاہتے ہیں جہاں کمزور طبقے کو اوپر لایا جائے کیونکہ انسانی معاشرہ کمزور

طبقے کو تحفظ دیتا ہے۔انہوں نے چیف سیکرٹری پنجاب کو مخاطب کرتے ہوئے

کہا کہ امید ہے اب آپ کی بیوروکریسی تیزی سے کام کرے گی جبکہ آئی جی سے

امید کرتا ہوں 2 سے 3 ماہ میں پنجاب میں کوئی ڈاکو مافیا نظر نہ آئے۔وزیراعظم

نے کہا کہ نیب قانون میں تبدیلی اسی لئے لائے کہ بیوروکریٹ کو پراسس کرنے

پر بھی گرفتار کر لیا جاتا تھا، پہلے فائلیں بیوروکریسی میں ہی گھومتی رہتی تھیں،

امید کرتے ہیں اب کام تیز ہوگا۔انہوں نے کہا کہ ہم نے ملک میں زراعت اور

صنعت کو ترقی دینی ہے،چین پاکستان کو ٹیکنالوجی منتقل کرے گا، چین نے اپنی

صنعتیں بنائیں، تو وہ پہلے باہر سے سرمایہ کاری لے کرآئے، ان کے لوگ جب

تربیت یافتہ ہوگئے تو انہوں نے خود فروغ دیا۔چین کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں

کہ انہوں نے 70کروڑ لوگوں کو غربت سے نکالا ہے۔ یہ راستہ ہمارے سامنے

ہے، ہم نے بھی سرمایہ کاری لانی ہے، صنعتوں کو فروغ دینا ہے، آمدنی بڑھانی

ہے، پھر یہی پیسا نچلی سطح پر خرچ کرنا ہے۔سی پیک ملکی ترقی کا واحد راستہ

ہے۔سی پیک میں مزید چیزیں آئیں گی۔انہوں نے کہا کہ عثمان بزدار سادگی سے

زندگی گزار رہے ہیں جو دوسروں کیلئے مثال ہے۔قبل ازیںوزیراعظم عمران خان

نے فیصل آباد میں پہلے شیلٹر ہوم کا افتتاح کر دیا اس موقع پر وزیر اعلیٰ پنجاب

عثمان بزدار‘ گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور اورفیصل آباد کی ضلعی انتظامیہ

کے افسران کمشنر فیصل آباد عشرت علی‘ ڈپٹی کمشنر محمد علی‘ آر پی اوراجہ

رفعت مختار ‘ سی پی اوچوہدری سہیل سمیت ارکان اسمبلی کی کثیر تعداد بھی

موجود تھی۔ شیلٹر میں موجود انتظامات پر انھوں نے اطمینان کا اظہار کیا اور وہاں

پر موجود بے گھر افراد کے ساتھ بیٹھ کر کھانا بھی کھایا۔علاوہ ازیں تحریک

انصاف کی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا

ہے کہ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع وزیراعظم کی صوابدید ہے، ملکی

مفاد میں نیب ترمیمی آرڈیننس 2019 لانا پڑا۔ وزیراعظم عمران خان کے زیر

صدارت پارلیمانی پارٹی کا اجلاس ہوا جس میں شیری مزاری، نعیم الحق، عامر

کیانی، زرتاج گل سمیت دیگر رہنماؤں نے شرکت کی۔ اٹارنی جنرل انور منصور

نے شرکاء کو نیب آرڈیننس کے خدوخال اور آرمی ایکٹ میں ترمیم پر بریفنگ دی۔

پرویزخٹک اور علی محمد خان نے پارٹی رہنماؤں کو اپوزیشن جماعتوں سے

ملاقاتوں سے بھی آگاہ کیا۔اس موقع پر وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا حکومتی

کمیٹی نیب آرڈیننس پر اپوزیشن سے مشاورت کر رہی ہے، آرمی چیف کی مدت

ملازمت میں توسیع وزیراعظم کا صوابدید ہوتا ہے، سپریم کورٹ نے آرمی چیف

مدت ملازمت کیس کا فیصلہ سنایا، حکومت نے سپریم کورٹ کا فیصلہ من و عن

تسلیم کیا۔عمران خان نے مزید کہا بیوروکریٹ اور کاروباری طبقے کو نیب سے

متعلق تحفظات تھے، کاروباری طبقے کے تحفظات سے ملکی ترقی رک گئی تھی،

ملکی مفاد میں نیب ترمیمی آرڈیننس 2019 لانا پڑا۔ ذرائع کے مطابق اجلاس میں

اتفاق کیا گیا کہ آرمی ایکٹ میں ترامیم کے لئے قانون سازی کے تمام تقاضے

پورے کئے جائیں گے۔دریں اثناء سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر پیغامات

میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ فسطائی مودی سرکار ریاستی دہشتگردی

میں ملوث ہے، دنیا کب تک خاموش رہے گی۔وزیراعظم نے چند ویڈیوز شیئرز

کرنے کیساتھ ساتھ ایک بھارتی جریدے کا مضمون بھی شیئر کیا۔ایک ویڈیو کے

کیپشن میں لکھا کہ بھارتی پولیس اتر پردیش میں مسلمانوں کی نسل کشی میں

مصروف ہے۔مزید برآںوزیراعظم عمران خان سے امریکی ڈیمو کریٹ رہنما طاہر

جاوید نے ملاقات کی ،جس میں خطے سمیت پاک امریکہ تعلقات اور مقبوضہ

کشمیر کی تازہ صورت حال پر بھی بات چیت کی گئی۔وزیراعظم نے جنوبی ایشیا

کی صورت حال پر واشنگٹن میں کانفرنس کی ہدایت بھی کی۔ملاقات کے دوران

وزیراعظم نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کو دنیا بھر میں بے نقاب

کیا جائے جبکہ بھارت میں جاری انتہا پسندی اور اقلیتوں کے ساتھ نارواسلوک کو

بھی منظر عام پر لائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں